உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Presidential Elections 2022: شرد پوار کے گھر پر متحدہ اپوزیشن کا بڑا فیصلہ، یشونت سنہا ہوں گے اپوزیشن کے صدارتی امیدوار

    صدر جمہوریہ الیکشن 2022 (Presidential Elections 2022) سے متعلق آج اپوزیشن جماعتوں (Opposition Meeting) کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ کے بعد اپوزیشن نے امیدوار کے طور پر یشونت سنہا (Yashwant Sinha) کے نام کا اعلان کیا۔

    صدر جمہوریہ الیکشن 2022 (Presidential Elections 2022) سے متعلق آج اپوزیشن جماعتوں (Opposition Meeting) کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ کے بعد اپوزیشن نے امیدوار کے طور پر یشونت سنہا (Yashwant Sinha) کے نام کا اعلان کیا۔

    صدر جمہوریہ الیکشن 2022 (Presidential Elections 2022) سے متعلق آج اپوزیشن جماعتوں (Opposition Meeting) کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ کے بعد اپوزیشن نے امیدوار کے طور پر یشونت سنہا (Yashwant Sinha) کے نام کا اعلان کیا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: صدر جمہوریہ الیکشن 2022 (Presidential Elections 2022) سے متعلق آج اپوزیشن جماعتوں (Opposition Meeting) کی میٹنگ ہوئی۔ میٹنگ کے بعد اپوزیشن نے امیدوار کے طور پر یشونت سنہا (Yashwant Sinha) کے نام کا اعلان کیا۔ اس میٹنگ میں جے رام رمیش (Jairam Ramesh)، شرد پوار (Sharad Pawar)، ڈی راجہ، پرفل پٹیل، سیتا رام یچوری، ملیکا ارجن کھڑگے، رندیپ سرجے والا، حسنین مسعودی (نیشنل کانفرنس)، رام گوپال یادو، اسدالدین اویسی کی اے آئی ایم آئی ایم کے رکن پارلیمنٹ امتیاز جلیل سمیت کئی لیڈران نے شرکت کی۔ عام آدمی پارٹی اور شیو سینا میٹنگ میں نہیں تھیں، لیکن دونوں جماعتیں یشونت سنہا کی حمایت کریں گی۔

      میٹنگ کے بعد کانگریس لیڈر جے رام رمیش نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے اتفاق رائے سے فیصلہ کیا ہے کہ یشونت سنہا صدر جمہوریہ الیکشن کے لئے اپوزیشن کے امیدوار ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ صدر جمہوریہ عہدے کے لئے پرچہ نامزدگی یشونت سنہا 27 جون کو 11.30 بجے داخل کریں گے۔ اپوزیشن نے کہا کہ ہم بی جے پی، اس کے اتحادیوں سے صدر عہدہ کے طور پریشونت سنہا کی حمایت کرنے کی اپیل کرتے ہیں تاکہ ہم ایک اہل ‘صدرجمہوریہ‘ کو بلامقابلہ منتخب کرسکیں۔

      یشونت سنہا دو بار مرکزی وزیر رہ چکے ہیں۔ پہلی بار وہ 1990 میں چندر شیکھر کی حکومت میں اور پھر اٹل بہاری واجپئی کی قیادت والی حوکمت میں وزیر خزانہ کی ذمہ داری نبھا چکے ہیں۔
      یشونت سنہا دو بار مرکزی وزیر رہ چکے ہیں۔ پہلی بار وہ 1990 میں چندر شیکھر کی حکومت میں اور پھر اٹل بہاری واجپئی کی قیادت والی حوکمت میں وزیر خزانہ کی ذمہ داری نبھا چکے ہیں۔


      واضح رہے کہ یشونت سنہا دو بار مرکزی وزیر رہ چکے ہیں۔ پہلی بار وہ 1990 میں چندر شیکھر کی حکومت میں اور پھر اٹل بہاری واجپئی کی قیادت والی حوکمت میں وزیر خزانہ کی ذمہ داری نبھا چکے ہیں۔ وہ اٹل بہاری واجپئی حکومت میں وزیر خارجہ بھی تھے۔ ابھی وہ ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) کے نائب صدر تھے۔

      اس سے قبل ترنمول کانگریس کے لیڈر یشونت سنہا نے منگل کو پارٹی چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ اپوزیشن کے وسیع اتحاد کے لئے کام کریں گے۔ کئی دنوں سے ایسی قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں کہ ترنمول کانگریس کی سربراہ اور مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا کا نام آئندہ صدر جمہوریہ الیکشن میں مشترکہ اپوزیشن امیدوار کے طور پر پیش کریں گی۔

      یشونت سنہا نے آج صبح ٹوئٹ کیا، ’ممتا جی نے جو احترام مجھے ترنمول کانگریس میں دیا، میں اس کے لئے ان کا شکر گزار ہوں۔ اب وقت آگیا ہے کہ جب  اپوزیشن کے وسیع تراتحاد کے قومی مقاصد کے لئے مجھے پارٹی سے الگ ہونا پڑے گا۔ مجھے یقین ہے کہ وہ (ممتا) اس کی اجازت دیں گی‘۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: