உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Exclusive : پی ایف آئی پر بہت جلد پابندی لگانے والی ہے سرکار، سبھی تیاری پوری : ذرائع

    Exclusive : پی ایف آئی پر بہت جلد پابندی لگانے والی ہے سرکار، سبھی تیاری پوری : ذرائع

    Exclusive : پی ایف آئی پر بہت جلد پابندی لگانے والی ہے سرکار، سبھی تیاری پوری : ذرائع

    PFI News: مرکزی سرکار جلد ہی پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی) پر پابندی عائد کرنے کی تیاری کررہی ہے اور اس کیلئے سبھی تیاریاں پوری کرلی گئی ہیں ۔ سرکار سے وابستہ اعلی سطحی ذرائع نے منگل کو سی این این نیوز18 کو یہ جانکاری دی ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : مرکزی سرکار جلد ہی پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی) پر پابندی عائد کرنے کی تیاری کررہی ہے اور اس کیلئے سبھی تیاریاں پوری کرلی گئی ہیں ۔ سرکار سے وابستہ اعلی سطحی ذرائع نے منگل کو سی این این نیوز18 کو یہ جانکاری دی ۔ ذرائع نے بتایا کہ سرکار کا ماننا ہے کہ پی ایف آئی کے خلاف ملک بھر میں مارے گئے چھاپے کے بعد جس طرح کا ہنگامہ اور تشدد ہوا ہے، اس سے پتہ چلتا ہے کہ پی ایف آئی ایک خطرناک تنظیم ہے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ یہ کسی بھی طرح کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کو انجام دینے کے قابل ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: گہلوت کو کانگریس آبزرورس نے دی کلین چٹ، کیا اب بھی بن سکتے ہیں صدر؟


      ذرائع نے کہا کہ پکڑے گئے لوگوں کی پوچھ گچھ رپورٹ بتاتی ہے کہ وہ ہندوستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے کئی بین الاقوامی تنظیموں کے رابطے میں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس سب کو دیکھتے ہوئے تنظیم پر بہت جلد پابندی عائد کی جانے والی ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: سپریم کورٹ سے ادھو گروپ کو بڑا جھٹکا، اصلی شیوسینا کون؟ اب الیکشن کمیشن کر سکے گا فیصلہ


      پی ایف آئی کے خلاف ملک گیر کارروائی کے پانچ دن بعد منگل کو ایک مرتبہ پھر اترپردیش، کرناٹک، گجرات، دہلی، مہاراشٹر، آسام اور مدھیہ پردیش میں ریاستی پولیس کی ٹیموں کی قیادت میں چھاپہ ماری میں مبینہ طور پر پی ایف آئی سے وابستہ 150 سے زیادہ لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے ۔

      پی ایف آئی سے وابستہ 19 معاملات کی اے این آئی جانچ کررہی ہے ۔ اس سے پہلے 22 ستمبر کو بھی این آئی اے کی قیادت میں مختلف ایجنسیوں نے ملک میں دہشت گردانہ سرگرمیوں کی حمایت کرنے کے الزام میں 15 ریاستوں میں تنظیم کے 106 لیڈروں اور کارکنوں کو گرفتار کیا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: