ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Exclusive Interview: وزیر خزانہ سیتارمن نے بتایا، بینکوں میں پھنسے قرض کو ریکور کرنے کے لئےکیا ہے حکومت کا پلان

Exclusive Interview: بجٹ میں اس اعلان کے بعد وزیر مالیات نے نیوز 18 نیٹ ورک گروپ کے ایڈیٹر ان چیف راہل جوشی سے خاص بات چیت میں کئی ضروری جانکاریاں دیں۔ وزیر مالیات نے بتایا کہ یہ ہولڈنگ کمپنی مختلف بینکوں سے پھنسی جائیداد کو خرید کر پروفیشنل طریقے سے اسے ریکور کرے گی۔

  • Share this:
Exclusive Interview: وزیر خزانہ سیتارمن نے بتایا، بینکوں میں پھنسے قرض کو ریکور کرنے کے لئےکیا ہے حکومت کا پلان
وزیر خزانہ سیتارمن نے بتایا، بینکوں میں پھنسے قرض کو ریکور کرنے کے لئے کیا ہے حکومت کا پلان

نئی دہلی: ملک کی بینکنگ سسٹم میں پھنسے قرض کی پریشانی گزشتہ کئی سال سے مسلسل بنی ہوئی ہے۔ حال میں ریزرو بینک آف انڈیا نے اس بارے میں ایک رپورٹ بھی جاری کی تھی۔ اب مودی حکومت (Modi Government) نے این پی اے کا نپٹارہ کرکے بینکوں کا بوجھ کم کرنے کی تیاری کرلی ہے۔ وزیر مالیات نرملا سیتا رمن نے پیر کو بجٹ میں پرائیویٹ Asset Reconstruction Company (ARC) بنانے کا اعلان کیا ہے۔ بجٹ میں اس اعلان کے بعد وزیر مالیات نے نیوز 18 نیٹ ورک گروپ کے ایڈیٹر ان چیف راہل جوشی سے خاص بات چیت میں کئی ضروری جانکاریاں دیں۔ وزیر مالیات نے بتایا کہ یہ ہولڈنگ کمپنی مختلف بینکوں سے پھنسی جائیداد کو خرید کر پروفیشنل طریقے سے اسے ریکور کرے گی۔ اس میں حکومت بھی حصہ لے گی اور خاص طور پر بینک ہی اس کی قیادت کریں گے۔


وزیر مالیات نے کہا، ’بینکوں نے پہلے ہی ان اسیٹس کا ایک قطعی خالص ویلیو کھو دیا ہے اور یہ حقیقی ویلیو نہیں ہے۔ ان پھنسے لون کو اے آئی ایف، پرائیویٹ اے آر سی کو بیچا جاسکے گا’۔ انہوں مزید کہام بینکوں کو اس طرح کے پھنسے لون پر جو ملنا ہوگا، وہ انہیں مل جائے گا۔ اس بارے میں بینکوں اور آر بی آئی کے ساتھ تفصیلی چرچا ہوئی ہے۔ بینک اس آئیڈیا پر متفق ہیں۔


ستمبر 2021 تک 13.5 فیصدی بڑھ جائے گی این پی اے


آر بی آئی نے اپنی فائنانشیل اسٹیبلٹی رپورٹ میں بڑھتے ہوئے این پی اے کو لے کر وارننگ دی تھی۔ آر بی آئی کی اس رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ ستمبر 2021 تک بینکوں کا این پی اے ستمبر 2020 کے 7.5 فیصد سے بڑھ کر 13.5 فیصدی تک پہنچ جائے گا۔ بے حد خراب حالت میں یہ ستمبر 2021 تک 14.8 فیصدی تک بھی جاسکتا ہے، جو گزشتہ دو دہائی کی سب سے اونچی سطح رہے گی۔

 

سرکاری بینکوں کی حالت اور بھی خراب

آر بی آئی کی اس رپورٹ سے پتہ چلتا ہے کہ ستمبر 2021 تک پبلک سیکٹر بینکوں کا این پی اے بڑھ کر 16.2 فیصدی تک پہنچ سکتا ہے۔ ستمبر 2020 تک یہ 9.7 فیصد پر رہا تھا۔ واضح رہے کہ بینکنگ سیکٹر کے کل اسیٹس کا 60 فیصدی پبلک سیکٹر بینکوں کا ہی ہے۔ اس ایکسکلوزیو انٹرویو میں نرملا سیتا رمن نے کہا، ’امید ہے کہ لوگ حکومت کی منشا کو سمجھیں گے۔ اگر حکومت کے پاس اور ریسورس ہوتا تو لوگوں کے لئے مزید اعلانات ہوتے’۔ ٹیکس نہیں بڑھانے کے فیصلے پر انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت ٹیکس کے ذریعہ ہی سبھی اخراجات کو فنڈ نہیں کرنا چاہتی ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 01, 2021 09:55 PM IST