ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

EXCLUSIVE: بہار - بنگال سے لے کر چین سے سرحدی تنازعہ تک، دیکھیں بی جے پی صدر جے پی نڈا کا خصوصی انٹرویو

بہار اسمبلی انتخابات (Bihar Assembly Election) میں بدھ کو پہلے فیز کی ووٹنگ (First Phase Voting) ختم ہوچکی ہے۔ سیاسی طور پر ملک میں سب سے اہم مانے جانے والی ریاست میں اسمبلی انتخابات کے درمیان بی جے پی کے قومی صدر جے پرکاش نڈا (Jagat Prakash Nadda) نے نیوز 18 سے مختلف موضوعات پر کھل کر بات چیت کی ہے۔

  • Share this:
EXCLUSIVE: بہار - بنگال سے لے کر چین سے سرحدی تنازعہ تک، دیکھیں بی جے پی صدر جے پی نڈا کا خصوصی انٹرویو
EXCLUSIVE: بہار - بنگال سے لے کر چین سے سرحدی تنازعہ تک، دیکھیں بی جے پی صدر جے پی نڈا کا خصوصی انٹرویو

نئی دہلی: بہار اسمبلی انتخابات (Bihar Assembly Election) میں بدھ کو پہلے فیز کی ووٹنگ (First Phase Voting) ختم ہوچکی ہے۔ سیاسی طور پر ملک میں سب سے اہم مانے جانے والی ریاست میں اسمبلی انتخابات کے درمیان بی جے پی کے قومی صدر جے پرکاش نڈا (Jagat Prakash Nadda) نے نیوز 18 سے مختلف موضوعات پر کھل کر بات چیت کی ہے۔ بہار الیکشن میں بی جے پی - جے ڈی یو اتحاد سمیت مغربی بنگال کی سیات اور چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ کو لے کر بھی انہوں نے کھل کر اپنا ردعمل ظاہر کیا ہے۔

سرحدی تنازعہ سے متعلق کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے الزامات کو لے کر جے پی نڈا نے واضح طور پر کہا کہ نریندر مودی کی قیادت میں پانی، زمین، آسمان میں ملک پوری طرح محفوظ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو ذات پات میں تقسیم کرنے کی سیاست ہوتی رہی ہے۔ آئیے جے پی نڈا کے خصوصی انٹرویو کو دیکھیں۔





جے پی نڈا نے انٹرویو کے دوران کہا کہ بہار کی عوام بہت بیدار ہے اور وہ اپنے مستقبل کو محفوظ کرنا جانتی ہے۔ نتیش کمار نے بہار کو ترقی کی پٹری پر لانے کا کام کیا۔ نتیش کمار بہار کی ترقی کر رہے ہیں اور وہ کافی سنجیدہ لیڈر ہیں۔ وزیر اعظم مودی کی رہنمائی بے حد اہم ہے۔ ساتھی کے ساتھ ہم بڑا چھوٹا نہیں کرتے ہیں، اگر ہم الیکشن نتائج میں بڑے بھی رہے تو نتیش کمار ہی ہمارے لیڈر رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں ہر الیکشن کو الیکشن کی طرح لڑتا ہوں، امت شاہ کی قیادت میں بیشتر ریاستوں کے الیکشن کا دارومدار میرے اوپر رہتا تھا۔ میرے لئے ہر الیکشن ایک چیلنج ہے۔ میں سب کا ساتھ لے کر کام کرتا ہوں، ہمارے یہاں کام کا طریقہ بھی یہی ہے۔ ہر چھوٹی بات میں ہم غوروخوض اور تبادلہ خیال کرتے ہیں۔


Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 28, 2020 11:55 PM IST