ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بنگلورو کے لال باغ میں انگوروں اور تربوزوں کی نمائش جاری

گرمی کی شدت سے راحت دینے والے موسمی پھل انگور، تربوزے، خربوزے بازاروں میں در آئے ہیں۔ بنگلورو کے لال باغ میں ہر سال کی طرح اس بار بھی انگور اور تربوزے کا میلہ لگا ہوا۔ ریشم اور ہارٹی کلچر کے ریاستی وزیر آر شنکر نے2021 کے میلے کا افتتاح کیا۔ لال باغ کے اس میلے میں طرح طرح کے انگور اور تربوزے عوام کو راغب کررہے ہیں۔

  • Share this:
بنگلورو کے لال باغ میں انگوروں اور تربوزوں کی نمائش جاری
بنگلورو کے لال باغ میں انگوروں اور تربوزوں کی نمائش جاری

بنگلورو: گرمی کی شدت سے راحت دینے والے موسمی پھل انگور، تربوزے، خربوزے بازاروں میں در آئے ہیں۔ بنگلورو کے لال باغ میں ہر سال کی طرح اس بار بھی انگور اور تربوزے کا میلہ لگا ہوا۔ ریشم اور ہارٹی کلچر کے ریاستی وزیر آر شنکر نے2021 کے میلے کا افتتاح کیا۔ لال باغ کے اس میلے میں طرح طرح کے انگور اور تربوزے عوام کو راغب کررہے ہیں۔ محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت منعقدہ اس میلہ میں 14 اقسام کے انگور اور 3 نمونے کے تربوزے موجود ہیں۔ 10 فیصد کی رعایت کے ساتھ ان پھلوں کو فروخت کیا جارہا ہے۔


میلے میں ملک اور بیرونی ممالک کے انگوروں کی قسمیں موجود ہیں۔ مصر اور آسٹریلیا کے ریڈ گلوب نامی انگور یہاں فروخت کئے جارہے ہیں۔
میلے میں ملک اور بیرونی ممالک کے انگوروں کی قسمیں موجود ہیں۔ مصر اور آسٹریلیا کے ریڈ گلوب نامی انگور یہاں فروخت کئے جارہے ہیں۔


میلے میں ملک اور بیرونی ممالک کے انگوروں کی قسمیں موجود ہیں۔ مصر اور آسٹریلیا کے ریڈ گلوب نامی انگور یہاں فروخت کئے جارہے ہیں۔ہندوستان کی پیداوار میں شامل دل خوش، شرد، سوناکا، گنیش، بنگلور نیلی اس طرح 12 اقسام کے انگور میلے میں دستیاب ہیں۔ فی کیلو انگور کی قیمت 38 روپئے سے لے کر 400 روپئے ہے۔ مصر کے ریڈ گلوب انگور کی قیمت فی کلو 315 اور آسٹریلیا کے ریڈ گلوب انگور کی قیمت فی کلو 400 روپئے ہے۔ میلے میں موجود تین اقسام کے تربوزوں میں پیلے رنگ کا تربوزہ توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے۔


کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت موجود ہاپ کامس کے اسٹال بنگلورو کے مختلف علاقوں میں موجود ہیں۔ مرکزی اسٹال لال باغ میں موجود ہے۔
کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت موجود ہاپ کامس کے اسٹال بنگلورو کے مختلف علاقوں میں موجود ہیں۔ مرکزی اسٹال لال باغ میں موجود ہے۔


کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت موجود ہاپ کامس کے اسٹال بنگلورو کے مختلف علاقوں میں موجود ہیں۔ مرکزی اسٹال لال باغ میں موجود ہے۔  لال باغ سمیت ہاپ کامس کے 22 اسٹالوں میں دیگر پھلوں کے ساتھ مختلف اقسام کے انگور اور تربوزے خصوصی طور پر ان دنوں فروخت کئے جارہے ہیں۔ سال 2021 کے میلے میں ہاپ کامس نے بنگلورو میں 500 ٹن انگور اور 1500 ٹن تربوزے فروخت کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔

 کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت موجود ہاپ کامس کے اسٹال بنگلورو کے مختلف علاقوں میں موجود ہیں۔

کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے تحت موجود ہاپ کامس کے اسٹال بنگلورو کے مختلف علاقوں میں موجود ہیں۔


کرناٹک کے وزیر ریشم اور ہارٹیکلچر آرشنکر نے کہا کہ ہاپ کامس کسانوں کو مارکیٹ فراہم کرتا ہے۔ یہاں کسان راست طور پر اپنی پیداوار فروخت کرتے ہیں۔ انگور، آم، انار اور دیگر پھلوں کے کسانوں کو مختلف سہولیات بھی ہاپ کامس کے ذریعہ دی جاتی ہیں۔ کرناٹک کے محکمہ ہارٹیکلچر کے مطابق ریاست میں 29108 ہیکٹر اراضی پر انگور کی پیداوار ہوتی ہے جبکہ 6671 ہیکٹر اراضی پر تربوزے کی فصل اگائی جاتی ہے۔ ریاست کے وجئے پور (بیجا پور)، بلگام، باگل کوٹ، چکبالاپور اور بنگلورو دیہی اضلاع میں سب سے زیادہ انگور کی پیداوار ہوتی ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 01, 2021 11:51 PM IST