حج 2020 کو مزید بہتر اور سہولیات سے پُربنانے کاعزم ، ممبئی میں دوروزہ حج کانفرنس کا آغاز

سعودی عرب میں ہندوستانی سفیر ڈاکٹر اوصاف سعید نے کہا کہ امسال تاریخ میں پہلی بار ہندوستان سے دولاکھ مسلمانوں نے حج کی سعادت حاصل کی جوکہ ہمارے ملک کے لیے فخر کا مقام ہے ۔

Sep 25, 2019 09:10 PM IST | Updated on: Sep 25, 2019 09:10 PM IST
حج 2020 کو مزید بہتر اور سہولیات سے پُربنانے کاعزم ، ممبئی میں دوروزہ حج کانفرنس کا آغاز

حج کمیٹی آف انڈیا حج کا لوگو

جنوبی ممبئی میں واقع حج ہاﺅس میں دوروزہ آل انڈیا حج کانفرنس کے ساتھ ہی حج 2020 کا  آغازہوا ، جس میں حج کمیٹی کے عہدیداران اور ملک بھر سے شریک ریاستی حج کمیٹیوں کے ممبران نے اس بات کا پُرزور انداز میں عزم کیا کہ گزشتہ چند سالوں میں حج کی کارکردگی میں جوبہتری آئی ہے ، اسے حج 2020 کو مزید بنانے اور سہولیات سے پُربنانے کی حتی الامکان کوشش کی جائے گی  ۔ مرکزی وزیربرائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی کی غیر حاضری میں حج کانفرنس کی ابتدائی تقریب سعودی عرب میں ہندوستان کے سفیر ڈاکٹر اوصاف سعیداور اقلیتی امور کے جوائنٹ سکریٹری جے عالم کی سربراہی میں عمل میں آئی ۔

اس موقع پر سعودی عرب میں ہندوستانی سفیر ڈاکٹر اوصاف سعید نے اپنی تقریر میں حج کے سارے آپریشن اور اس کی اچھائی اور اس دوران ہونے والی خامیوں کو پیش کرتے ہوئے کہا کہ امسال تاریخ میں پہلی بار ہندوستان سے دولاکھ مسلمانوں نے حج کی سعادت حاصل کی جوکہ ہمارے ملک کے لیے فخر کا مقام ہے ۔ انڈونیشیا کے بعد ہندوستانی حجاج کی تعداد سب سے زیادہ تھی اور دنیا بھر میں ایک اچھا پیغام گیا ہے کہ ہندوستان سے اتنی بڑی تعداد میں مسلمان فریضیہ حج کی ادائیگی کے لیے سعودی عرب آئے ہیں اور اتنی بڑی تعداد ہونے کے باوجود الحمدللہ حج 2019 بہترین انداز میں تکمیل کو پہنچا ، جس میں ہر کسی کا تعاون رہا۔

Loading...

انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستانی وزیراعظم نریندرمودی اور سعودی عرب کے ولی عہد سلمان کے درمیان بہتر باہمی تعلقات کے سبب ہی یہ ممکن ہوسکا ہے ، جبکہ وزیربرائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے پورے حج آپریشن کی بذات خود نگرانی کی ، لیکن اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے کہ ایئرانڈیا کی وجہ سے بدمزگی پیدا ہوئی اور مدینہ منورہ سے ملک واپس آنے والے حجاج کو کافی دشواری کا سامنا کرنا پڑا ۔ مگر اس کے علاوہ ایسا کوئی واقعہ نہیں پیش آیا جس کے بارے میں کہا جاسکے کہ حج کمیٹی نے غیر ذمہ داری کا ثبوت پیش کیا اور حجاج کو مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ہو۔

ریاستی حج کمیٹیوں کے نمائندوں اور ممبران کی پیش کردہ تجاویز پر غورکیا جائے گا اور انہیں بھرپور انداز میں نافذ کرنے کی کوشش کی جائے گی ۔ لیکن ہمیں اس بات کو ذہن نشین کرلینی چاہئے کہ روز روز بدلتی دنیا کے ساتھ حج کے امور میں بھی ڈیجٹل تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں اورمستقبل کا لائحہ عمل بھی اسی مناسبت سے تیار کیا جائیگا۔

انہوں نے کہا کہ عرفات اور منی میں نئی عمارتیں تعمیر کرنے کا فیصلہ سعودی حکومت نے کیا ہے ، اس لئے اب منی میں بھی حجاج کرام کو رہائش فراہم ہوگی تاکہ حجاج کرام کا حج مزید آسان ہوجائے ۔ اس دو روزہ کانفرنس میں ائیر انڈیاکی فلائٹ میں تاخیر پر سخت نوٹس لیتے ہوئے ڈاکٹر اوصاف نے ائیر انڈیا کےلئے آئندہ حج کے لئے ٹینڈر کے دوران شرائط کا اطلاق کر نے کی تجویز کو منظوری دی اور کہا کہ آئندہ سال فلائٹ میں تاخیر نہ ہو اس بات کا خاص خیال رکھا جائےگا اور اس کے لئے ائیر انڈیا کو ذمہ داری دی جائےگی ، کیونکہ ائیر انڈیا اپنی ذمہ داری کو ٹھیک طرح سے نہیں نبھا پائی ہے اس لئے حجاج کرام کو ائیر پورٹ پر گھنٹوں فلائٹس کا انتظار کرنا پڑا ۔

Loading...