اچانک آوازیں آنے لگیں اور بوگياں پانی میں گرتی چلی گئیں

نئی دہلی۔ مدھیہ پردیش میں ہردا کے پاس ہوا ٹرین حادثہ بعض کے لئے کبھی نہ بھولنے والی یاد بن گیا۔

Aug 05, 2015 11:09 AM IST | Updated on: Aug 05, 2015 11:09 AM IST
اچانک آوازیں آنے لگیں اور بوگياں پانی میں گرتی چلی گئیں

نئی دہلی۔ مدھیہ پردیش میں ہردا کے پاس ہوا ٹرین حادثہ بعض کے لئے کبھی نہ بھولنے والی یاد بن گیا۔ ٹرین میں سفر کر رہے ایک شخص منوج شرما نے بتایا کہ گھپ اندھیرا تھا، بارش ہو رہی تھی۔ پہلے تو لگا سب ٹھیک ہے، اچانک آواز آنے لگی۔ ایسا لگ رہا تھا کہ ٹرین پانی کے اوپر چل رہی ہے۔ اچانک زور زور سے آواز آنے لگی۔ جھٹکے لگنے شروع ہوئے۔ پانچ چھ ڈبے پانی کے پار ہو گئے۔ پھر شاید ایمرجنسی بریک لگایا ڈرائیور نے تو پیچھے کی ساری بوگياں ایک ایک  کر پانی میں گرتی چلی گئیں۔

وہیں كاميانی ایکسپریس میں سفر کر رہے ایک عینی شاہد جتیندر نے بتایا کہ ہم جاگ رہے تھے تبھی اچانک تیز آواز آئی۔ ایک مسافر ديارام نے بتایا کہ حادثہ ہوا تو ہم گھبرا گئے اور دوسری ٹرین میں بیٹھ کر یہاں آ گئے۔ بہت سے لوگ سو رہے تھے کئی جاگ رہے تھے۔ ہم بھی جاگ رہے تھے اور حادثہ ہوتے ہی ٹرین سے کود گئے۔

Loading...

ایک اور عینی شاہد اظہر نے بتایا کہ ہم لوگ ہردا جا رہے تھے۔ اچانک ڈرائیور نے ایمرجنسی بریک لگائے۔ سب جگہ پانی پانی نظر آرہا تھا۔ ڈبے ٹیڑھا ہوکر گر رہے تھے۔ ہم پیچھے جنرل ڈبے میں بیٹھے تھے۔ جب ڈبے ٹیڑھے ہونے لگے تو ہم لوگ کود کر بھاگنے لگے۔ ہم نے دیکھا کہ جنتا ٹرین کھڑی تھی، ہم اسی میں بیٹھ گئے۔ ہم 12 لوگ تھے اور ہمارے 3 لوگ ادھر ہی پھنسے ہوئے ہیں۔ میں نے دو لوگوں کو ٹرین میں کرنٹ لگتے دیکھا۔ ایک آدمی اوپر بیٹھا تھا، وہ بھاگ رہا تھا۔ تبھی اسے کرنٹ لگ گیا۔ دوسرے آدمی کے ساتھ بھی ایسا ہی ہوا۔

Loading...