ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: سی اے اے اور این آر سی مخالف احتجاج کے دوران تشدد میں جاں بحق افراد کے اہل خانہ کو انصاف کا انتظار

گزشتہ سال 20 دسبمر کو سی اے اے اور این آر سی مخالف احتجاج کے دوران میرٹھ میں پیش آئے تشدد کے دوران پولیس فائرنگ میں 7 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ ایک سال کا وقت گزر جانے کے بعد آج بھی مہلوکین اور متاثرین کے اہل خانہ کو انصاف اور معاوضے کا انتظار ہے۔

  • Share this:
میرٹھ: سی اے اے اور این آر سی مخالف احتجاج کے دوران تشدد میں جاں بحق افراد کے اہل خانہ کو انصاف کا انتظار
میرٹھ: سی اے اے اور این آر سی مخالف احتجاج کے دوران تشدد میں جاں بحق افراد کے اہل خانہ کو انصاف کا انتظار

میرٹھ: گزشتہ سال 20 دسبمر کو سی اے اے اور این آر سی مخالف احتجاج کے دوران میرٹھ میں پیش آئے تشدد کے دوران پولیس فائرنگ میں 7 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ ایک سال کا وقت گزر جانے کے بعد آج بھی مہلوکین اور متاثرین کے اہل خانہ کو انصاف اور معاوضے کا انتظار ہے۔  سماجی اور ملّی تنظیموں کی جانب سے متاثرین کی کچھ مدد تو کی گئی، لیکن حکومت کی جانب سے ان افراد کو نا کوئی مدد حاصل ہوئی اور نہ ہی انصاف ملا۔ پیس پارٹی نے اس موقع پر مہلوکین کے اہل خانہ سے ملاقات کرکے کئی بارمتاثرین کی مدد کا بھروسہ دلایا ہے اور حکومت سے انصاف اور امداد کا مطالبہ کیا ہے۔

مہلوکین کے اہل خانہ کے مطابق، ایک سال گزر جانے کے بعد بھی آج تک نہ تو متاثرین کی کسی طرح کی سرکاری مدد حاصل ہوئی ہے اور نہ ہی انصاف، ان افراد کی ہلاکت کے معاملے میں کورٹ کیس کی رفتار بھی کافی سست ہے، پولیس کے خلاف چل رہے معاملوں میں کیس کو خود پولیس نے لٹکا رکھا ہے، سات افراد کی گولی لگنے سے ہلاکت کے معاملے میں پوسٹ مارٹم کی رپورٹ تک مہلوکین کے اہل خانہ کو نہیں دی گئی ہے۔ پولیس تشدد کے دوران ان افراد کی ہلاکت کو آپسی تشدد کا شکار بتا رہی ہے جبکہ پولیس پر گولی چلا کر سات لوگوں کو ہلاک کرنے کا الزام لگا ہے، تشدد میں ہلاکت کا یہ معاملہ کورٹ میں ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 21, 2020 11:48 PM IST