ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

زرعی اصلاحات قوانین سے کسانوں کو نئے حقوق ملے ، ترنگا اور یوم جمہوریہ کی توہین افسوسناک : صدرجمہوریہ

صدر جمہوریہ نے کہا کہ ملک کی سپریم کورٹ نے ابھی ان قوانین کو مؤخر کیا ہے اور حکومت سپریم کورٹ کے فیصلے کی مکمل پاسداری کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ قوانین وسیع تر غور و فکر کے بعد پارلیمنٹ میں منظور کئے گئے تھے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 29, 2021 02:21 PM IST
  • Share this:
زرعی اصلاحات قوانین سے کسانوں کو نئے حقوق ملے ، ترنگا اور یوم جمہوریہ کی توہین افسوسناک : صدرجمہوریہ
زرعی قوانین سے کسانوں کو نئے حقوق ملے، ترنگا اور یوم جمہوریہ کی توہین افسوسناک: صدرجمہوریہ

صدر رام ناتھ کووند نے یوم جمہوریہ کے موقع پر کسانوں کی ٹریکٹر ریلی کے دوران تاریخی لال قلعے میں توڑ پھوڑاور قومی پرچم کی توہین کو بدبختانہ قراردیا ہے۔ صدر کووند نے جمعہ کے روز پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن سے پہلے دونوں ایوانوں کی مشترکہ نشست سے خطاب کے دوران کہا ، ’’ گزشتہ دنوں ترنگا اوریوم جمہوریہ کی توہین انتہائی افسوس ناک ہے ۔ جو آئین ہمیں اظہار رائے کی آزادی کا حق دیتا ہے ، وہی آئین ہمیں سکھاتا ہے کہ قانون اور اصول و ضوابط پر اتنی ہی سنجیدگی سے عمل کرنا چاہئے‘‘۔


انہوں نے کہا کہ ملک کی سپریم کورٹ نے ابھی ان قوانین کو مؤخر کیا ہے اور حکومت سپریم کورٹ کے فیصلے کی مکمل پاسداری کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ قوانین وسیع تر غور و فکر کے بعد پارلیمنٹ میں منظور کئے گئے تھے۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ یوم جمہوریہ پر مشتعل کسانوں کی ٹریکٹر ریلی کے دوران کچھ سماج دشمن عناصرلال قلعہ پہنچے اور وہاں انہوں نے ترنگا کی توہین کی اور وہاں ایک مخصوص جھنڈا لگادیا۔ اس دوران شرپسندوں اور پولیس کے مابین جھڑپیں ہوئیں ، جس میں پولیس اہلکاروں کی ایک بڑی تعداد زخمی ہوگئی۔


صدر رام ناتھ کووند نے مزید کہا کہ تین زرعی اصلاحات کے قوانین کو متعارف کرانے کے ساتھ ہی کسانوں کو نئے حقوق بھی تفویض کئے گئے ہیں اور ان قوانین سے پہلے جو حقوق اور سہولیات موجود تھیں ان میں کوئی کمی نہیں کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سات ماہ قبل پارلیمنٹ نے تین اہم زرعی اصلاحات ، زرعی پیداواری کاروبار اور تجارت (پروموموشن اینڈ فیسی لی ایشن ) ایکٹ ، زرعی (امپاورمنٹ اینڈ پروٹیکشن)، قیمتوں کی یقین دہانی و زرعی اگریمنٹ بل اور ضروری اشیا ترمیمی بل منظور کئے۔


انہوں نے کہا ’’ان زرعی اصلاحات کا سب سے بڑا فائدہ 10 کروڑ سے زیادہ چھوٹے کسانوں کو بھی فوری طور پر ملنا شروع ہوا۔ چھوٹے کاشتکاروں کو ہونے والے ان فوائد کا ادراک کرنے کے بعد ہی بہت ساری سیاسی پارٹیوں نے وقتا فوقتا ان اصلاحات کی مکمل حمایت کی تھی۔ اس وقت ملک کی اعلی عدالت نے ان قوانین کے نفاذ کو ملتوی کردیا ہے۔ میری حکومت سپریم کورٹ کے فیصلے کا احترام کرتے ہوئے اس پر عمل کرے گی۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 29, 2021 02:21 PM IST