ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

صدر جمہوریہ سے ملاقات کے بعد ایک سُر میں بولے اپوزیشن لیڈران- زرعی قانون کو واپس لے حکومت

صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند سے ملاقات کے بعد کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا کہ کسانوں نے ملک کی بنیاد رکھی ہے۔ وہ رات ودن محنت کرتے ہیں۔ مرکزی حکومت کے ذریعہ لائے گئے زرعی قانون ان کے مفاد میں نہیں ہے۔ ان بلوں کو پارلیمنٹ میں بغیر بحث کے غیرآئینی طور پر پاس کرایا گیا ہے۔

  • Share this:
صدر جمہوریہ سے ملاقات کے بعد ایک سُر میں بولے اپوزیشن لیڈران- زرعی قانون کو واپس لے حکومت
صدر جمہوریہ سے ملاقات کے بعد ایک سُر میں بولے اپوزیشن لیڈر- زرعی قانون کو واپس لے حکومت

نئی دہلی: زرعی قانون (Farm Laws) پر کسانوں کی مخالفت تیز ہوتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے۔ کسان تنظیموں نے بدھ کو حکومت کی تجاویز کو بھی مسترد کردیا ہے اور زرعی قانون کو واپس لینے کے مطالبے پر ڈٹے ہوئے ہیں۔ اس درمیان اپوزیشن جماعتوں کے ایک وفد نے آج یعنی بدھ کو صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند (President Ramnath Kovind) سے ملاقات کرکے ایک سُر میں زرعی قانون کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو کسانوں کی باتوں کو سمجھنا چاہئے۔ اس وفد میں کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی (Rahul Gandhi)، این سی پی صدر شرد پوار (Sharad Pawar) اور سیتا رام یچوری (Sitaram Yechury) کے ساتھ ہی اپوزیشن کے دیگر لیڈر بھی شامل تھے۔


صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند سے ملاقات کے بعد کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا کہ کسانوں نے ملک کی بنیاد رکھی ہے۔ وہ رات ودن محنت کرتے ہیں۔ مرکزی حکومت کے ذریعہ لائے گئے زرعی قانون ان کے مفاد میں نہیں ہے۔ ان بلوں کو پارلیمنٹ میں بغیر بحث کے غیرآئینی طور پر پاس کرایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح سے زرعی بل منظور کئے گئے، ہمیں لگتا ہے کہ یہ کسانوں کی توہین ہے۔ اس لئے وہ سردی کے موسم میں بھی احتجاج کر رہے ہیں۔ وہیں، شرد پوار نے کہا کہ زرعی قانون پر تفصیلی بحث کے لئے سبھی اپوزیشن جماعتوں نے ایک گزارش کی تھی اور کہا تھا کہ اسے سلیکٹ کمیٹی کے پاس بھیجا جائے، لیکن بدقسمتی سے اس مشورے کو قبول نہیں کیا گیا اور بلوں کو جلد بازی میں منظور کردیا گیا۔


شرد پوار نے کہا کہ اس سردی میں کسان اپنی ناراضگی ظاہر کرنے کے لئے پُرامن طریقے سے سڑکوں پر اتر رہے ہیں۔ اس موضوع کو حل کرنا حکومت کا فرض ہے۔


صدر جمہوریہ سے ملاقات کے بعد سیتا رام یچوری نے کہا کہ ہم نے صدر کو میمورنڈم دیا ہے۔ ہم زرعی قانون اور بجلی ترمیم بل کو منسوخ کرنے کے لئے کہہ رہے ہیں، جسے جمہوری طریقہ اپنائے بغیر منظور کیا گیا۔ 25 سے زیادہ اپوزیشن جماعتوں نے زرعی قانون کو واپس لینے کے مطالبہ کے تئیں اپنی حمایت دی ہے۔ یہ قانون ہندوستان کے مفاد میں نہیں ہیں اور اس سے ہمارے خوراک ورسد تحفظ کو بھی خطرہ ہے۔

 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 09, 2020 09:03 PM IST