ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : نظر بند لیڈروں کو رہا کرنے کی کوشش میں لگے فاروق عبداللہ ، سبھی سیاسی پارٹیوں سے کی یہ بڑی اپیل

فاروق عبداللہ نے کہا کہ میں اس بات سے بخوبی واقف ہوں کہ سینکڑوں کشمیری خاندانوں کے مقابلہ میں میں زیادہ خوش نصیب رہا ہوں کیونکہ مجھے اپنے گھر میں نظربند کردیا گیا تھا اور میرے اہل خانہ کی مجھ تک رسائی تھی۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 15, 2020 08:00 PM IST
  • Share this:
جموں و کشمیر : نظر بند لیڈروں کو رہا کرنے کی کوشش میں لگے فاروق عبداللہ ، سبھی سیاسی پارٹیوں سے کی یہ بڑی اپیل
فاروق عبداللہ نے کہا کہ میں اس بات سے بخوبی واقف ہوں کہ سینکڑوں کشمیری خاندانوں کے مقابلہ میں میں زیادہ خوش نصیب رہا ہوں کیونکہ مجھے اپنے گھر میں نظربند کردیا گیا تھا اور میرے اہل خانہ کی مجھ تک رسائی تھی۔

سات ماہ سے زیادہ مدت کے بعد خانہ نظربندی سے رہائی پانے والے نیشنل کانفرنس صدر و رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اتوار کو اپنا پہلا تحریری بیان جاری کرتے ہوئے جموں وکشمیر کے تمام سیاسی لیڈران سے اپیل کی ہے کہ وہ یک زبان ہوکر حکومت ہندوستان پر زور دیں کہ وہ ملک کی مختلف ریاستوں میں بند کشمیریوں کو فوری طور پر کشمیر منتقل کرے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک انسانی مسئلہ ہے اور مجھے امید ہے کہ دوسرے لوگ بھی اس مطالبہ کوحکومت کے سامنے رکھنے میں میرا ساتھ دیں گے۔


ساتھ ہی ساتھ فاروق عبد الہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگرچہ ہم ان سب قیدیوں کو جلد از جلد رہا ہوتے دیکھنا چاہتے ہیں ، لیکن فی الوقت انہیں فوری طور پر جموں و کشمیر منتقل کیا جانا چاہیے۔ فاروق عبداللہ نے اپنے بیان میں کہا کہ بہت سارے والدین یا اہل خانہ ایسے ہیں ، جن کے پاس اپنے لخت جگروں سے ملنے جانے کے لئے مالی وسائل بھی نہیں اور نہ ہی وہ ان جیلوں کے آس پاس قیام کرنے کی بساط رکھتے ہیں۔


انہوں نے کہا کہ مالی دشواریوں سے دوچار ان خاندانوں کے لئے اب کورونا وائرس کی صورت میں ایک نئی مصیبت ٹوٹ پڑی ہے، جس نے ان کی صحت کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔ تین بار جموں وکشمیر کے وزیر اعلیٰ رہ چکے فاروق عبداللہ جنہوں نے جمعہ کو اپنی رہائی کے بعد دیگر سیاسی لیڈران کی رہائی تک کوئی سیاسی بیان نہ دینے کی بات کہی تھی ، نے اپنے تحریری بیان میں کہا کہ میں اس بات سے بخوبی واقف ہوں کہ سینکڑوں کشمیری خاندانوں کے مقابلہ میں میں زیادہ خوش نصیب رہا ہوں کیونکہ مجھے اپنے گھر میں نظربند کردیا گیا تھا اور میرے اہل خانہ کی مجھ تک رسائی تھی۔

First published: Mar 15, 2020 08:00 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading