உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فاروق عبداللہ کو آر ایس ایس لیڈر کی نصیحت- اگر یہاں گھٹن محسوس ہوتی ہے تو ہندوستان چھوڑ دو

    فاروق عبداللہ کو آر ایس ایس لیڈر کی نصیحت- اگر یہاں گھٹن محسوس ہوتی ہے تو ہندوستان چھوڑ دو

    فاروق عبداللہ کو آر ایس ایس لیڈر کی نصیحت- اگر یہاں گھٹن محسوس ہوتی ہے تو ہندوستان چھوڑ دو

    RSS Leader Slams Farooq Abdullah: آر ایس ایس لیڈر اندریش کمار نے کہا، ‘فاروق عبداللہ نے پہلے کہا تھا کہ جموں وکشمیر کی خصوصی ریاست کا درجہ بحال کرنے کے لئے چین کی مدد لی جائے گی۔ کیا ہم اسے قبول کریں گے؟ یہ بکواس ہے۔ اگر انہیں یہاں گھٹن محسوس ہوتی ہے، تو وہ جہاں چاہیں عرب یا امریکہ چلے جائیں۔ ان کی بیوی انگلینڈ میں رہتی ہیں۔ وہ اپنی بیوی کے ساتھ رہنے کے لئے وہاں جانے کے بارے میں سوچ سکتے ہیں۔ وہ خوش رہیں گے‘۔

    • Share this:
      نئی دہلی: راشٹریہ سیوم سیوک سنگھ کے سینئر لیڈر اندریش کمار (RSS Senior Leader Indresh Kumar) نے پیر کے روز نیشنل کانفرنس کے صدر اور جموں وکشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ (Farooq Abdullah) کے اس بیان سے متعلق ان پر تنقید کی، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ جموں وکشمیر کے لوگوں کو اپنا حق واپس پانے کے لئے مظاہرین کسانوں کی طرح ’قربانی‘ دینی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پتہ چلتا ہے کہ فاروق عبداللہ امن کی جگہ تشدد پسند کرتے ہیں۔ اندریش کمار نے یہ بھی کہا کہ اگر فاروق عبداللہ کو ہندوستان میں گھٹن محسوس ہوتی ہے تو انہیں اپنی پسند کی دنیا کے کسی دیگر حصے میں رہنے کے لئے ملک چھوڑ دینا چاہئے۔

      آر ایس ایس لیڈر نے مرکز کے زیر انتظام ریاست کے لوگوں کے مبینہ استحصال کے خلاف قومی دارالحکومت دہلی میں احتجاجی مظاہرہ کرنے پر پی ڈی پی سربراہ اور جموں وکشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی (PDP Chief Mehbooba Mufti) کی بھی تنقید کی اور کہا کہ ’جھوٹ بولنا ان کے لئے ایک فیشن بن گیا ہے‘۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جموں وکشمیر کے دونوں لیڈروں کو ’اکسانے کی سیاست‘ بند کردینی چاہئے اور ملک کی اتحاد اور سالمیت کو بنائے رکھنے میں رکاوٹ بننا بند کردینا چاہئے۔ اندریش کمار نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں فاروق عبداللہ کے تبصرہ سے متعلق پوچھے جانے پر کہا، ’ان کا بیان واضح طور پر دکھاتا ہے کہ انہیں تشدد سے پیار ہے، امن سے نہیں‘۔

      آر ایس ایس لیڈر نے کہا، ‘فاروق عبداللہ نے پہلے کہا تھا کہ جموں وکشمیر کی خصوصی ریاست کا درجہ بحال کرنے کے لئے چین کی مدد لی جائے گی۔ کیا ہم اسے قبول کریں گے؟ یہ بکواس ہے۔ اگر انہیں یہاں گھٹن محسوس ہوتی ہے، تو وہ جہاں چاہیں عرب یا امریکہ چلے جائیں۔ ان کی بیوی انگلینڈ میں رہتی ہیں۔ وہ اپنی بیوی کے ساتھ رہنے کے لئے وہاں جانے کے بارے میں سوچ سکتے ہیں۔ وہ خوش رہیں گے‘۔

      فاروق عبداللہ نے کہی تھی یہ بات

      فاروق عبداللہ نے اتوار کے روز کہا تھا کہ جموں وکشمیر کے لوگوں کو اپنی ریاست کا درجہ اور خصوصی درجہ واپس پانے کے لئے ویسی ہی ’قربانی‘ دینی پڑسکتی ہے، جیسا کہ نئے زرعی قوانین کی مخالفت کرنے والے کسانوں نے کیا۔ نیشنل کانفرنس کے بانی شیخ محمد عبداللہ کی 116 ویں یوم پیدائش کے موقع پر سری نگر کے نسیم باغ میں ان کے مقبرہ پر پارٹی کے یوا مورچہ کے اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے فاروق عبداللہ نے یہ بھی کہا تھا کہ ان کی پارٹی تشدد کی حمایت نہیں کرتی ہے۔ محبوبہ مفتی نے مرکز کے زیر انتظام ریاست کے لوگوں کے مبینہ استحصال کی مخالفت میں پیر کے روز یہاں جنتر منتر پر دھرنا دیا تھا اور کہا تھا کہ بے قصوروں کا قتل فوری طور پر روکا جانا چاہئے۔
      قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں.
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: