ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Twitter Map Controversy: ٹو یٹرکی مشکلات میں اضافہ، کمپنی ایم ڈی کےخلاف ایک اور مقدمہ درج

بلند شہر میں بجرنگ دل کے مقامی لیڈر کی شکایت پر ، ٹویٹر انڈیا کے منیجنگ ڈائریکٹر منیش مہیشوری پر آئی پی سی کی دفعہ 505 (2) اور آئی ٹی (ترمیمی) ایکٹ 2008 کی دفعہ 74 کے تحت غلط نقشہ ظاہر کرنے پر مقدمہ درج کیا گیا ہے

  • Share this:
Twitter Map Controversy: ٹو یٹرکی مشکلات میں اضافہ، کمپنی ایم ڈی کےخلاف ایک اور مقدمہ درج
ٹویٹر کا دفتر

نئی دہلی : سوشل میڈیا کمپنی ٹویٹر نے سات ماہ میں دوسری بار پیر کے روز اپنی ویب سائٹ پر ہندوستان کا غلط نقشہ دکھایا (ٹویٹر انڈیا میپ تنازعہ)ہے۔اس کے بعد ، سوشل میڈیا پر ٹویٹر پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ شروع ہوگیا۔ کافی احتجاج کے بعد ، کمپنی نے ویب سائٹ سے نقشہ ہٹا دیا۔ ادھر ، اترپردیش کے بلند شہر میں ٹویٹر اور اسکے ایم ڈی منیش مہیشوری کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔


جانکاری کے مطابق ، بلند شہر میں بجرنگ دل کے مقامی لیڈر کی شکایت پر ، ٹویٹر انڈیا کے منیجنگ ڈائریکٹر منیش مہیشوری پر آئی پی سی کی دفعہ 505 (2) اور آئی ٹی (ترمیمی) ایکٹ 2008 کی دفعہ 74 کے تحت غلط نقشہ ظاہر کرنے پر مقدمہ درج کیا گیاہے۔



یادرہے کہ ٹویٹر (Twitter) نے اپنی ویب سائٹ سے ہندوستان کا ایک غلط نقشہ ہٹا دیا ہے جس میں جموں و کشمیر (Jammu and Kashmir) اور لداخ (Ladakh) کو الگ ملک کے طور پر ظاہر کیا گیا ہے۔پیر کے روز وزارت الیکٹرانکس اور انفارمیشن (Ministry of Electronics and Information) نے کہا کہ وہ ٹویٹر کے غلط نقشے دکھانے کے معاملے پر غور کرے گا۔

آئی ٹی کے نئے قوانین کی تعمیل پر ہندوستانی حکومت کے ساتھ اختلافات ہونے کے درمیان ٹویٹر ویب سائٹ نے ہندوستان کا غلط نقشہ دکھایا، جس میں جموں وکشمیر اور لداخ کو ایک علیحدہ ملک کے طور پر دکھایا گیا ہے۔ حیرت انگیز بگاڑ ٹویٹر ویب سائٹ کے کیریئر سیکشن پر ہیڈر ٹویپ لائف (Tweep Life) کے تحت شائع ہوا۔

ٹویٹر کا دفتر۔(تصویر:shutterstock)۔


یہ دوسرا موقع ہے جب ٹویٹر نے ہندوستان کے نقشہ کو غلط انداز میں پیش کیا۔ اس سے قبل اس نے لیہ (Leh) کو چین کا ایک حصہ دکھایا تھا۔ امریکی ڈیجیٹل پلیٹ فارم ہندوستانی حکومت کے ساتھ سوشل میڈیا کے نئے قواعد پر تنازعہ میں مصروف ہے۔

حکومت نے جان بوجھ کر نااتفاقی اور ملک کے نئے آئی ٹی قوانین کی تعمیل کرنے میں ناکامی پر ٹویٹر کی سرزنش کی ہے، جس کی وجہ سے مائیکروبلاگنگ پلیٹ فارم ہندوستان میں اپنی قانونی ڈھال کھو بیٹھا ہے اور کسی بھی غیر قانونی مواد کو پوسٹ کرنے والے صارفین کے لئے ذمہ دار بن گیا ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jun 29, 2021 09:54 AM IST