உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Fire Fighters Robot: اب نہیں جائے گی فائر فائٹرس کی جان، آگ بجھانے کا کام کرے گا یہ خاص روبوٹ

    آگ لگنے کی علامتی تصویر ۔

    آگ لگنے کی علامتی تصویر ۔

    ان روبوٹس کا کام خاص طور پر یہ ان واقعات سے لیا جائے گا، جو میجر فائر کے زمرے میں آتے ہیں، جیسے گودام میں آگ لگنا، کسی بڑی فیکٹری میں آگ لگنا، اس دوران سلینڈر بلاسٹ وغیرہ بھی ہوتے ہیں۔

    • Share this:
      Fire Fighters Robot: دہلی فائر سروس نے اپنے بیڑے میں دو روبوٹ شامل کیے ہیں جن کی مدد سے اب انتہائی پیچیدہ مرحلے میں آگ پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔ اچھی بات یہ ہوگی کہ ان روبوٹس کی وجہ سے آگ بجھانے کے لیے کسی بھی انسانی جان کو خطرے میں ڈالنے سے بچایا جائے گا۔

      درحقیقت دہلی فائر سروس میں روبوٹس کی ضرورت ایسے وقت میں محسوس کی گئی تھی جب کچھ واقعات میں آگ پر قابو پاتے ہوئے دہلی فائر سروس کے اہلکاروں کی موت ہوگئی تھی۔ اس وقت دہلی فائر سروس میں ایسے دو روبوٹ شامل کیے گئے ہیں، جنہیں مشرقی اور مغربی دہلی میں تعینات کیا گیا ہے۔ فائر سروس کا دعویٰ ہے کہ روبوٹ کی مدد سے تقریباً 100 میٹر کے دائرے کو کور کیا جا سکتا ہے اور بڑی آگ کے مقام پر انسانی جان کو خطرے میں ڈالے بغیر آگ پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ہند-پاک سرحد کے 10 کلومیٹر دائرے سے رہیں دور! ایڈوائزری امریکی شہریوں کو دی گئی صلاح

      ’اہم مقصد محکمہ فائر کے جوانوں کی حفاظت ہے‘
      دہلی فائر سروس کے ڈائریکٹر اتل گرگ کا کہنا ہے کہ ’ان دونوں روبوٹس کو فی الحال ایک پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔ فائر ڈپارٹمنٹ میں روبوٹ کو شامل کرنے کا بنیادی مقصد فائر ڈیپارٹمنٹ کے اہلکاروں کی حفاظت ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      80پیسے والا جھٹکا Petrol Diesel کی قیمتوں میں جاری، جانئے آپ کے شہر میں کتنے روپئے لیٹرہوا

      ان روبوٹس کا کام خاص طور پر یہ ان واقعات سے لیا جائے گا، جو میجر فائر کے زمرے میں آتے ہیں، جیسے گودام میں آگ لگنا، کسی بڑی فیکٹری میں آگ لگنا، اس دوران سلینڈر بلاسٹ وغیرہ بھی ہوتے ہیں اور ایسے دھماکوں کی وجہ سے ہمارے محکمہ فائر بریگیڈ کی جانیں خطرے میں پڑجاتی ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: