உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بھوپال میں بڑا حادثہ: کملا نہرو اسپتال میں آگ لگنے سے تین بچوں کی موت، کئی معصوم جھلسے

    بھوپال میں بڑا حادثہ: کملا نہرو اسپتال میں آگ لگنے سے تین بچوں کی موت، کئی معصوم جھلسے

    بھوپال میں بڑا حادثہ: کملا نہرو اسپتال میں آگ لگنے سے تین بچوں کی موت، کئی معصوم جھلسے

    Fire Broke in Kamla Nehru Hospital: اسپتال احاطے میں ہی بچوں کے لئے بنائے گئے کملا نہرو اسپتال (Kamla Nehru Hospital) کی تیسری منزل پر لگی۔ یہاں پر بڑی تعداد میں بچے داخل تھے۔ آگ کی اطلاع ملنے کے ساتھ ہی فائر بریگیڈ کی کئی گاڑیاں بھی موقع پر پہنچ گئی ہیں اور بڑی تعداد میں فائر بریگیڈ کے ملازمین آگ بجھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

    • Share this:
      بھوپال: مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال کے حمیدیہ اسپتال میں پیر کو خطرناک آتشزدگی کا حادثہ سامنے آیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ یہ آگ اسپتال احاطے میں ہی بچوں کے لئے بنائے گئے کملا نہرو اسپتال (Kamla Nehru Hospital) کی تیسری منزل پر لگی۔ یہاں پر بڑی تعداد میں بچے داخل تھے۔ اسپتال کے ذرائع کے مطابق، آگ کے سبب تین بچوں کی موت بھی ہوگئی ہے۔ حالانکہ ابھی اس بات کی باضابطہ تصدیق نہیں کی گئی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ اس حادثے میں بڑی تعداد میں معصوم جھلس بھی گئے ہیں۔ اطلاع کے مطابق، تیسری منزل کے جس وارڈ میں آگ لگی وہاں پر نوزائیدہ بچوں کے ساتھ ہی کئی ڈاکٹر بھی پھنسے ہوئے ہیں۔ انہیں نکالنے کی کوشش اس مسلسل کی جارہی ہے۔

      آگ کی اطلاع ملنے کے ساتھ ہی فائر بریگیڈ کی کئی گاڑیاں بھی موقع پر پہنچ گئی ہیں اور بڑی تعداد میں فائر بریگیڈ کے ملازمین آگ بجھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ فائربریگیڈ ملازمین کے ساتھ ہی انتظامیہ اور اسپتال کے ملازمین بھی آگ بجھانے میں مصروف ہیں۔ آگ لگنے کی اطلاع کے ساتھ ہی وزیر صحت وشواس سارنگ موقع پر پہنچ گئے ہیں اور حالات کا مسلسل جائزہ لے رہے ہیں۔



      آگ لگنے کی وجہ کا فی الحال انکشاف نہیں ہوسکا ہے۔ حالانکہ بتایا جا رہا ہے کہ اسپتال میں یہ آگ شارٹ سرکٹ کے سبب لگی۔ تیسری منزل پر آگ لگنے کے سبب اسپتال کے دوسرے فلور پر بھی دھواں بھر گیا ہے، جس سے وہاں پر موجود مریضوں کو بھی دیگر مقامات پر شفٹ کرکے اسپتال کی عمارت کو تیزی سے خالی کرایا جا رہا ہے۔

      اہل خانہ پریشان، اسپتال کے باہر لگی بھیڑ

      آگ لگنے کی اطلاع کے ساتھ ہی اسپتال میں داخل معصوم بچوں کے اہل خانہ بھی پریشان ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ اسپتال کے باہر 4-3 گھنٹے سے کھڑے ہوئے ہیں، لیکن انہیں کوئی جواب نہیں مل رہا ہے۔ ان کے بچوں کا کیا حال ہے اور آگ لگنے کے بعد انہیں کہاں پر شفٹ کیا گیا ہے، اس سے متعلق کوئی بھی انہیں واضح جواب نہیں دیا جا رہا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: