ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پہلے کیا دوست کا قتل پھر لاش کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے بورویل میں ڈال دیا

پولیس تفتیش میں ملزمین نے سنسنی خیز واردات کا انکشاف کرتے ہوئے بتایا کہ ایک پرانی رنجش کے معاملے کے سبب انہوں نے رُوپک کا قتل کیا اور اس واردات کو انجام دینے کے بعد ثبوت مٹانے اور لاش کو ٹھکانے لگانے کے لئےچاروں دوستوں نے روپک کی لاش کے ٹکڑے کئے اور اس کے بعد جٹولا گاؤں کے ایک بوریل میں اس کی لاش کے ٹکڑے پھینک دیئے۔

  • Share this:
پہلے کیا دوست کا قتل پھر لاش کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے بورویل میں ڈال دیا
پہلے کیا دوست کا قتل پھر لاش کے ٹکڑے ٹکڑے کر کے بورویل میں ڈال دیا

میرٹھ: اترپردیش کے میرٹھ کنکرکھیڑا تھانہ علاقے کا آئی ٹی آئی طالب علم روپک گزشتہ 4 روز سے لاپتہ تھا، رُوپک کے والد کے مطابق 4 روز پہلے رُوپک کے 4 دوست اس کو گھر سے بلا کر لےگئے تھے اور اس کے بعد سے ہی رُوپک کا کوئی پتہ نہیں چلا رُوپک کے گھر واپس نہ لوٹنے اور لاپتہ ہونے کے بعد اہل خانہ نے اس کی رپورٹ پولیس میں کرائی تھی اور اس کے4 دوست ساگر وکاس  اروند عرف گڈو اور موہن پر شک ظاہر کرتے ہوئے ان کی رپورٹ تھانے میں کرادی تھی۔ پولیس تفتیش  میں اس سنسنی خیز واردات کا انکشاف ہوا۔ ملزمین نے بتایا کہ ایک پرانی رنجش کے معاملے کے سبب انہوں نے رُوپک کا قتل کیا اور اس واردات کو انجام دینے کے بعد ثبوت مٹانے اور لاش کو ٹھکانے لگانے کے لئےچاروں دوستوں نے روپک کی لاش کے ٹکڑے کئے اور اس کے بعد جٹولا گاؤں کے ایک بوریل  میں اس کی لاش کے ٹکڑے پھینک دیئے۔

اس سنسنی خیز واردات کے انکشاف کے بعد سے پولیس بوریل میں رُوپک کی لاش کے ٹکڑوں کو تلاش کر رہی ہے۔ کنکر کھیڑا تھانہ کے پولیس انسپکٹر جیتندر کمار کا کہنا ہےکہ، جے سی بی  اور پارک لین مشین کے ذریعہ بورویل کی کھدائی کا کام کیا جا رہا ہے اور لاش کے ٹکڑے تلاش کئے جا رہے ہیں، لیکن یہ کام کافی مشکل ثابت ہو رہا ہے۔ عام طور پر لاش ندی یہ پوکھرے میں ڈالی گئی۔ لاش پھولنے کے بعد خود اوپر آجاتی ہے یہ غوطہ خوروں کے ذریعہ تلاش کر لی جاتی ہے، لیکن اس واردات میں قاتلوں نے لاش کے ٹکڑے کرکے بُورویل میں ڈال دیئے ہیں جس کو باہر نکالنا کافی مشکل ثابت ہو رہا ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 13, 2020 11:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading