உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained: نوٹ بندی کے پانچ سال بعد نقد لین دین میں زبردست کمی، آن لائن ادائیگیوں کے رحجان میں اضافہ

    مذکورہ سروے سے معلوم ہوا ہے کہ ہر 3 میں سے 2 ہندوستانیوں کے لیے نقد لین دین اب ان کے کل لین دین کے 25 فیصد سے بھی کم ہوگیا ہے

    مذکورہ سروے سے معلوم ہوا ہے کہ ہر 3 میں سے 2 ہندوستانیوں کے لیے نقد لین دین اب ان کے کل لین دین کے 25 فیصد سے بھی کم ہوگیا ہے

    مذکورہ سروے سے معلوم ہوا ہے کہ ہر 3 میں سے 2 ہندوستانیوں کے لیے نقد لین دین اب ان کے کل لین دین کے 25 فیصد سے بھی کم ہوگیا ہے، اس کے بجائے وہ آن لائن ادائیگی کو ترجیح دے رہے ہیں۔ اس کے علاوہ اگر پچھلے سال کے اعداد و شمار کا موازنہ کیا جائے تو یہ واضح ہے کہ پچھلے 12 مہینوں میں صرف 20 فیصد ہندوستانیوں نے ہی اپنے نقد لین دین کو کم کیا ہے۔

    • Share this:
      ہندوستان میں 8 نومبر 2016 کو نوٹ بندی (demonetization ) کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس کے بعد سے اب تک پانچ سال مکمل ہوچکے ہیں۔ عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کی وجہ سے ڈیجیٹل لین دین کے استعمال میں تیزی آئی ہے۔ ایک سروے سے معلوم ہوا ہے کہ جائیداد کے لین دین، اشیا ضروریہ خریدنے اور خدمات کی ادائیگی میں نقدی کا استعمال اب بھی رائج ہے۔

      ۔ 8 نومبر 2016 کو وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) نے اپنی حکومت کے نوٹ بندی کے اقدام کا اعلان کیا تھا۔ انھوں نے راتوں رات اعلان میں کہا تھا کہ اب سے ہندوستان میں 1000 اور 500 روپے کے نوٹوں کو ختم کر دیا جائے گا۔ اس کے بعد سے ان نوٹوں کا استعمال موقوف ہوگیا ہے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      سروے میں شامل 70 فیصد شہریوں نے کہا انہوں نے یا ان کے خاندان نے گزشتہ 7 سال میں کوئی پراپرٹی خریدی تو قیمتوں کا ایک حصہ نقد ادا کرنا پڑا جبکہ 16 فیصد نے نصف سے زائد رقم نقد ادا کی۔ جن لوگوں نے پچھلے 12 مہینوں میں مصنوعات کی خریداری کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا ہے، ان میں سے 95 فیصد نے اشیا ضروریہ، باہر کھانے اور کھانے کی ترسیل کے لیے ادائیگی کی ہے۔

      اسی طرح جن لوگوں نے اس مدت کے دوران خدمات کی خریداری کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا ہے، ان میں 4 میں سے 3 نے اسے گھر کی مرمت یا خوبصورتی/بال کٹوانے وغیرہ جیسی خدمات کی ادائیگی کے لیے استعمال کیا ہے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      کمیونٹی سوشل میڈیا پلیٹ فارم لوکل سرکلز (LocalCircles) کے ذریعہ کئے گئے سروے کو ہندوستان کے 388 سے زیادہ اضلاع سے 36,000 سے زیادہ جوابات ملے۔ جن میں سے 44 فیصد جواب دہندگان ٹائر 1 سے تھے۔ ان میں سے 33 فیصد ٹائر 2 سے اور 23 فیصد ٹائر 3، 4 اور دیہی اضلاع سے تھے۔

      مذکورہ سروے سے معلوم ہوا ہے کہ ہر 3 میں سے 2 ہندوستانیوں کے لیے نقد لین دین اب ان کے کل لین دین کے 25 فیصد سے بھی کم ہوگیا ہے، اس کے بجائے وہ آن لائن ادائیگی کو ترجیح دے رہے ہیں۔ اس کے علاوہ اگر پچھلے سال کے اعداد و شمار کا موازنہ کیا جائے تو یہ واضح ہے کہ پچھلے 12 مہینوں میں صرف 20 فیصد ہندوستانیوں نے ہی اپنے نقد لین دین کو کم کیا ہے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      جائیداد کے لین دین میں کالا دھن:

      لوکل سرکلز پر شہری یہ اطلاع دیتے رہتے ہیں کہ جائیداد کی خرید و فروخت میں نقدی کا اب بھی بڑے پیمانے پر استعمال ہوتا ہے۔ لوگوں نے اس بات پر بھی روشنی ڈالی ہے کہ بہت سے ایم ایس ایم ایز، رئیل اسٹیٹ کی فروخت اور زرعی اراضی کی خرید و فروخت اور جائیداد کے رجسٹریشن کے ساتھ لین دین جاری رہتا ہے جس کی قیمت ادا کی جاتی ہے جس سے ٹیکس سے بچ جاتا ہے۔

      مجموعی طور پر پچھلے 7 سال میں جائیداد خریدنے والوں میں سے 70 فیصد کو قیمتوں کا ایک حصہ نقد ادا کرنا پڑا، جبکہ 16 فیصد نے نصف سے زیادہ رقم نقد ادا کی۔ سروے میں اس سوال کے 8,920 جوابات موصول ہوئے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      نقد لین دین اب 25 فیصد سے کم:

      سروے کے سوال میں شہریوں سے پوچھا گیا کہ پچھلے 12 مہینوں میں بغیر رسید کے اوسطاً ان کی ماہانہ خریداری کا فیصد کیا رہا؟ اس کے جواب میں 56 فیصد شہریوں نے کہا کہ 5 تا 25 فیصد ان کی ماہانہ خریداریاں بغیر رسید کے ہوتی ہیں۔ وہیں 15 فیصد شہریوں نے کہا کہ یہ 25 تا 50 فیصد ہے اور دوسرے 15 فیصد شہریوں نے کہا کہ وہ 50 تا 100 فیصد بھی بغیر رسید کے خریداری کرتے ہیں، ان میں سے بیشتر کا تعلق دیہات سے ہے۔

      صرف 11 فیصد شہریوں نے کوئی نہیں کہا ہے۔ جبکہ 3 فیصد نے نہیں کہا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ مجموعی طور پر 3 میں سے 2 ہندوستانیوں کے لیے نقد لین دین اب ان کے کل لین دین کے 25 فیصد سے بھی کم ہے۔ سروے میں اس سوال کے 9,082 جوابات موصول ہوئے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      ڈیجیٹل ادائیگیوں میں اضافہ:

      ۔2019 اور 2020 کے سروے کے اسی طرح کے سروے کے نتائج کے ساتھ تلاش کا موازنہ کرنے کے بعد 2019 میں 27 فیصد اور 2020 میں 14فیصد شہریوں نے بتایا کہ اوسطاً ان کی ماہانہ خریداریوں کا 50 تا 100فیصد بغیر رسید کے تھے، اور فی الحال اس سال 15 فیصد ہی ہے۔

      اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ گزشتہ 12 مہینوں میں ان شہریوں کی تعداد میں تقریباً 20 فیصد کمی آئی ہے جنہوں نے اپنی زیادہ تر ماہانہ خریداری بغیر رسید کے کی۔ ان میں پانچ فیصد نے گروسری، باہر کھانے اور کھانے کی ترسیل کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا ہے۔

      سروے میں اس سوال نے یہ بھی سمجھنے کی کوشش کی کہ گزشتہ 12 مہینوں میں شہریوں نے کن کیٹیگریز پروڈکٹس کے لیے خرچ کیا یا ایک بڑا حصہ نقد ادا کیا۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      مجموعی طور پر ان لوگوں میں سے جنہوں نے گزشتہ 12 مہینوں میں خریداری کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا ہے۔ وہ 95 فیصد نے اس کا استعمال گروسری، باہر کھانے اور کھانے کی ترسیل کے لیے کیا ہے۔ سروے میں اس سوال کے 9,180 جوابات موصول ہوئے۔

      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)
      گرافکس: لوکل سرکلز (Image: LocalCircles)


      -13 فیصد نے گیجٹ خریدنے کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا

      اگر شہریوں کی طرف سے دی گئی وجوہات کا ترجیحی ترتیب سے جائزہ لیا جائے تو نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ پچھلے 12 مہینوں میں 95 فیصد نے گروسری، باہر کھانے اور کھانے کی ڈیلیوری خریدنے کے لیے نقد رقم کا استعمال کیا ہے۔ وہیں 13 فیصد نے اسے گیجٹس، سمارٹ فون، لیپ ٹاپ، وغیرہ کی خریداری میں استعمال کیا ہے اور 11 فیصد نے اسے قیمتی سامان جیسے کہ جائیداد کے زیورات، استعمال شدہ گاڑی کے لیے استعمال کیا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: