ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بابری مسجد انہدام معاملے پر اوما بھارتی نےکہا- جیل جاوں گی، لیکن ضمانت نہیں لوں گی

بابری مسجد انہدام معاملے (Babri Demolition Case) میں سی بی آئی عدالت کے فیصلے سے پہلے سابق وزیر اعلیٰ اوما بھارتی (Uma Bharti) نے اپنے خط میں کہا ہے کہ میں ہمیشہ کہتی آئی ہوں کہ ایودھیا (Ayodhya) کے لئے مجھے پھانسی بھی منظور ہے۔ رام ولاس داس ویدانتی نے کہا کہ اگر عدالت اس معاملے میں انہیں عمر قید یا پھانسی کی سزا بھی دیتی ہے تو انہیں منظور ہوگا۔

  • Share this:
بابری مسجد انہدام معاملے پر اوما بھارتی نےکہا- جیل جاوں گی، لیکن ضمانت نہیں لوں گی
بابری مسجد انہدام معاملے پر اوما بھارتی نےکہا- جیل جاوں گی، لیکن ضمانت نہیں لوں گی

لکھنو: آئندہ 30 ستمبر کو ایودھیا (Ayodhya) کے بابری مسجد انہدام (Babri Demolition Case) معاملے میں سی بی آئی کی اسپیشل کورٹ (CBI Special Court) اپنا فیصلہ سنانے جا رہی ہے۔ فیصلے کو لے کر بی جے پی کے سینئر لیڈر اور مدھیہ پردیش کے سابق وزیراعلیٰ اوما بھارتی (Uma Bharti) نے بی جے پی صدر جے پرکاش نڈا (JP Nadda) کو خط لکھا ہے۔ خط جذباتی طور پر 26 ستمبر کو لکھا گیا ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ 30 ستمبر کو سی بی آئی کی خصوصی عدالت میں مجھے فیصلہ سننے کے لئے پیش ہونا ہے۔ میں قانون کو وید، عدالت کو مندر اور جج کو بھگوان مانتی ہیں۔ اس لئے عدالت کا ہر فیصلہ میرے لئے بھگوان کا آشیرواد ہوگا۔


سابق وزیر اعلیٰ اوما بھارتی نے مزید لکھا، میں نہیں جانتی ہوں کہ فیصلہ کیا ہوگا، لیکن میں ایودھیا پر ضمانت نہیں لوں گی۔ ضمانت لینے سے تحریک میں شراکت کا وقار داغدار ہوجائےگا۔ ایسے حالات میں آپ نئی ٹیم میں رکھ پاتے ہیں کہ نہیں اس پر غور کرلیجئے۔ یہ میں آپ کے شعور پر چھوڑتی ہون۔ سابق وزیر اعلیٰ اوما بھارتی نےاپنے خط میں کہا ہے کہ میں ہمیشہ کہتی آئی ہوں کہ ایودھیا کے لئے مجھے پھانسی بھی منظور ہے۔


سابق رکن پارلیمنٹ اور رام مندر تحریک کے رہنما رام ولاس داس ویدانتی نےکہا کہ اگر عدالت اس معاملے میں انہیں عمر قید یا پھانسی کی سزا بھی دیتی ہے تو انہیں منظور ہوگا۔
سابق رکن پارلیمنٹ اور رام مندر تحریک کے رہنما رام ولاس داس ویدانتی نےکہا کہ اگر عدالت اس معاملے میں انہیں عمر قید یا پھانسی کی سزا بھی دیتی ہے تو انہیں منظور ہوگا۔


پھانسی ہو یا عمر قید، یہ میری قسمت: ویدانتی

اس سے قبل سابق رکن پارلیمنٹ اور رام مندر تحریک کے رہنما رام ولاس داس ویدانتی نے بھی بڑا بیان دیا ہے۔ رام ولاس داس ویدانتی نے کہا کہ اگر عدالت اس معاملے میں انہیں عمر قید یا پھانسی کی سزا بھی دیتی ہے تو انہیں منظور ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ 30 ستمبر کو لکھنو کی سی بی آئی عدالت میں حاضر ہونے کے لئے کہا گیا ہے۔ عدالت پہنچ کر وہ خود سپردگی کرنے کے لئے تیار ہیں۔ عدالت کا جو بھی فیصلہ ہوگا وہ ہمیں منظور ہوگا۔ ویدانتی نے کہا کہ ہمیں اس کا فخر ہےکہ اس مندر کے کھنڈر کو ہم نے منہدم کروایا ہے، جس کی ذمہ داری بھی میں نے لی ہے اور 30 ستمبر کو آنے والے فیصلے کا استقبال کریں گے۔ اس فیصلے میں اگر ہمیں عمر قید یا پھانسی کی سزا بھی ہوتی ہے تو اس سے بڑی خوش قسمتی نہیں ہو سکتی۔ 30 ستمبر کو عدالت میں حاضر ہونےکا حکم دیا گیا ہے، اس لئے 30 ستمبر کو 10 بجے عدالت میں حاضر رہوں گا۔

 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 28, 2020 10:13 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading