ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

گمشدہ آئی ای ایس افسرکی تلاش کے لئے سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ سے لگائی مدد کی گہار

بلرام پور کے سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر خصوصی توجہ دینے کی اپیل کرتے ہوئے ضلع کے نوجوان آئی ای ایس افسرسبحان علی کی تلاش کرنے کی گزارش کی ہے۔

  • Share this:
گمشدہ آئی ای ایس افسرکی تلاش کے لئے سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ سے لگائی مدد کی گہار
گمشدہ آئی اے ایس افسرکی تلاش کے لئے سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ سے لگائی گہار

لکھنو: لداخ کی دراس ندی میں جپسی گرنے کے بعد لیہہ میں تعینات لاپتہ ہندوستانی انجینئرنگ سروس (آئی ای ایس) کے افسر سبحان علی کی گمشدگی کو تقریباً 20 دن ہوچکے ہیں، لیکن ابھی تک ان کی تلاش نہیں کی جاسکی ہے۔ اس سلسلے میں سابق رکن پارلیمنٹ اور مشرقی اترپردیش کے سینئر لیڈر رضوان ظہیر خان نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ سے مدد کی گہار لگائی ہے۔ رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر اترپردیش کے بلرام پور ضلع کے نوجوان آئی اے ایس افسر سبحان علی کی تلاش کو یقینی بنانے کی اپیل کی ہے۔


سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظہیر نے کہا کہ سبحان علی غریبی کو ہرا کر بی آر او میں آئی ای ایس کے عہدے تک پہنچے تھے، وہ کارگل - لیہہ میں کوارنٹائن کیمپ کی مانیٹرنگ کر رہے تھے، ان کی گاڑی دراس ندی میں گرنےکی خبر آئی اور وہ تبھی سے غائب ہیں، لہٰذا میری ہندوستانی حکومت سے اپیل ہے کہ بلرام پور کی شان اور نوجوان ہونہار آئی ای ایس سبحان علی کو تلاش کیا جائے تاکہ ان کے اہل خانہ کی زخموں پر مرہم لگایا جاسکے۔ انہوں نے راجناتھ سے اپیل کی ہے کہ آپ اس معاملے میں ذاتی طور پر دخل دے کر قابل افسران اور ماڈرن آلات کا استعمال کرتے ہوئے سبحان علی کو تلاش کرنے میں اہم کردار ادا کریں۔




سابق رکن پارلیمنٹ رضوان ظیہر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کو لکھے گئےخط میں پورے معاملے سے واقف کراتے ہوئےکہا ہے کہ مرکزی حکومت کو سبحان علی گمشدگی پر خصوصی توجہ دینی چاہئے۔ اس سے قبل رضوان ظہیر کی بیٹی اور بی ایس پی کی لیڈر زیبا رضوان نے سبحان علی کے بھائی شعبان علی کی قیادت میں ڈی ایم کو میمورنڈم دیا تھا اور پورے سانحہ کی سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کیا تھا۔ قابل ذکر ہے کہ سبحان علی کی گمشدگی سے پورے ضلع میں رنج وغم کا ماحول دیکھنے کو مل رہا ہے۔ سبحان علی جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سابق طالب علم تھے، اس لئے جامعہ برادری میں بھی ان کی گمشدگی کا رنج دیکھنے کو مل رہا ہے۔

رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر اترپردیش کے بلرام پور ضلع کے نوجوان آئی اے ایس افسر سبحان علی کی تلاش کو یقینی بنانے کی اپیل کی ہے۔
رضوان ظہیر نے وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر اترپردیش کے بلرام پور ضلع کے نوجوان آئی اے ایس افسر سبحان علی کی تلاش کو یقینی بنانے کی اپیل کی ہے۔


اس سے قبل بہوجن سماج پارٹی کے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے آئی ای ایس کے افسر سبحان علی کی تلاش کے لئے مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ سے مدد کی اپیل کرتے ہوئےخط لکھا تھا۔ کنور دانش علی نےٹوئٹرکے ذریعہ سبحان علی کو تلاش کرنےکی مرکزی حکومت سے اپیل کی ہے۔ انہوں نےکہا تھا کہ ایک درزی کا بیٹا سبحان علی جو غریبی کو شکست دے کر بارڈر روڈز آرگنائزیشن ( بی آر او) میں بطور آئی ای ایس افسر تعینات تھا۔ وہ کارگل ۔ لیہہ میں کوارنٹائن کیمپ کی نگرانی کررہا تھا۔ ان کی گاڑی دراس ندی میں گرنےکی خبر آئی اور وہ تب سے غائب ہیں۔ میری حکومت ہند سے اپیل ہے کہ سبحان علی کو تلاش کیا جائے۔

بی ایس پے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے آئی ای ایس کے افسر سبحان علی کی تلاش کے لئے مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ سے مدد کی اپیل کرتے ہوئےخط لکھا تھا۔ فائل فوٹو
بی ایس پے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے آئی ای ایس کے افسر سبحان علی کی تلاش کے لئے مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ سے مدد کی اپیل کرتے ہوئےخط لکھا تھا۔ فائل فوٹو


وہیں دوسری جانب گمشدہ آئی ای ایس آفیسر سبحان علی کے ڈرائیور کی لاش نکال لی گئی ہے۔ دراس سے لداخ پولیس نے ڈرائیور کی لاش نکالی ہے جبکہ آئی ای ایس آفیسر سبحان علی کی تلاش ابھی بھی جاری ہے۔ واضح رہےکہ لداخ میں تعینات افسر سبحان علی 22 جون سے لاپتہ ہیں۔ بتایا جارہا ہے کہ یہ افسر ہند ۔ چین سرحد پر بن رہی سڑک کا معائنہ کرنے گئے تھے اور ان کی جپسی بے قابو ہوکر تقریباً 50  فٹ گہری کھائی میں گرگئی تھی۔ جپسی کا پتہ چل گیا تھا، لیکن سبحان کا پتہ ابھی تک نہیں چل پایا ہے۔ رپورٹ کے مطابق کچھ روز پہلے سبحان کے بھائی شعبان علی اور ان کے قریبی دوست اور جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ریسرچ اسکالر حبیب الرحمن ان کا پتہ لگانے لیہہ گیے تھے، لیکن وہاں سے وہ ناکام لوٹے ہیں۔ اس کےکچھ روز بعد ہی آج سبحان علی کے ڈرائیور کی لاش نکال لی گئی ہے، جبکہ آفیسر سبحان علی کی تلاش ابھی بھی جاری ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 12, 2020 11:45 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading