உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان میں طالبان پر امراللہ صالح کا بڑا الزام- شادی تقریب میں میوزک سننے پر 13 افراد کا قتل کردیا گیا

    افغانستان میں طالبان پر امراللہ صالح کا بڑا الزام- شادی تقریب میں میوزک سننے پر 13 افراد کا قتل کردیا گیا

    افغانستان میں طالبان پر امراللہ صالح کا بڑا الزام- شادی تقریب میں میوزک سننے پر 13 افراد کا قتل کردیا گیا

    Afghanistan Taliban: افغانستان (Afghanistan) میں قبضہ کرنے کے بعد طالبان (Taliban) نے عالمی سطح پر تمام ممالک کے سامنے بہترین مثال پیش کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔ تاہم سابق نائب صدر امراللہ صالح (Amrullah Saleh) نے الزام لگایا ہے کہ طالبان نے ان 13 بے گناہ افراد کو صرف اس بات کے لئے موت کے گھاٹ اتار دیا ہے کہ وہ شادی تقریب میں گانے بجا رہے تھے اور طالبان گانے بند کروانا چاہتا تھا۔

    • Share this:
      کابل: افغانستان (Afghanistan) سے امریکی فوجیوں کی واپسی کے بعد طالبان (Taliban) کے خوف سے ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے اپنا ملک چھوڑ دیا۔ یہ سبھی لوگ طالبان کے خوف میں مبتلا ہوکر حقوق انسانی کی خلاف ورزی کرنے کے خطرات کے پیش نظر خوفزدہ تھے اور ملک سے باہر چلے گئے۔ حالانکہ درمیان میں طالبان سے متعلق کوئی بربریت والی خبر سامنے نہیں آئی۔ تاہم سابق نائب صدر امراللہ صالح (Amrullah Saleh) نے ٹوئٹ کرکے الزام لگایا ہے کہ طالبان نے ان 13 بے گناہ افراد کو صرف اس بات کے لئے موت کے گھاٹ اتار دیا ہے کہ وہ شادی تقریب میں گانے بجا رہے تھے اور طالبان گانے بند کروانا چاہتا تھا۔

      امراللہ صالح نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ ‘طالبان نے ننگرہار میں ایک شادی تقریب میں میوزک کو بند کرانے کے لئے 13 لوگوں کا قتل کردیا‘۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں مزید لکھا کہ مزاحمت ایک قومی ضرورت ہے اور ہم صرف مذمت کرکے اپنا غصہ ظاہر نہیں کرسکتے۔

      امراللہ صالح نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ ‘طالبان نے ننگرہار میں ایک شادی تقریب میں میوزک کو بند کرانے کے لئے 13 لوگوں کا قتل کردیا‘۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں مزید لکھا کہ مزاحمت ایک قومی ضرورت ہے اور ہم صرف مذمت کرکے اپنا غصہ ظاہر نہیں کرسکتے۔
      امراللہ صالح نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ ‘طالبان نے ننگرہار میں ایک شادی تقریب میں میوزک کو بند کرانے کے لئے 13 لوگوں کا قتل کردیا‘۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں مزید لکھا کہ مزاحمت ایک قومی ضرورت ہے اور ہم صرف مذمت کرکے اپنا غصہ ظاہر نہیں کرسکتے۔


      پاکستان کو ٹھہرایا ذمہ دار

      سابق نائب صدر امراللہ صالح نے طالبان کی اس بربریت کے لئے پاکستان کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے 25 سال تک انہیں افغان ثقافت کو ختم کرنے اور ہماری زمین پر کنٹرول کرنے کے لئے انٹر سروسیز-انٹلی جنس کے مطابق، شدت پسندی کے ساتھ بدلنے کے لئے ٹریننگ دی اور اب یہ ایسا کام کر رہا ہے۔

      واضح رہے کہ طالبان نے 15 اگست کو افغانستان کی راجدھانی کابل پر قبضہ کرلیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی اس نے پورے ملک پر اپنا کنٹرول حاصل کرلیا تھا۔ ساتھ ہی وہاں عبوری حکومت بھی قائم کرلی گئی ہے۔ میڈیا کی خبروں کے مطابق طالبان نے قبضے کے بعد کئی وعدے کئے تھے، لیکن ایک بار پھر افغانستان میں شہریوں کا قتل کرنے سے متعلق خبریں دوبارہ شروع ہوگئی ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ افغانستان کے عوام طالبان کے ضوابط سے خوفزدہ ہیں۔ طالبان نے ٹی وی پر میوزک سننے اور خواتین کی آواز آنے پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: