ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اگلے مہینے سے مہنگا ہو جائے گا گاڑی چلانا اور کھانا پکانا ! دہلی این سی آر میں دام بڑھانے کی تیاری میں آئی جی ایل

کمپنی کا کہنا ہے کہ سی این جی اور پی این جی کی ڈیمانڈ 50 فیصدی تک پہنچی ہے ۔ حالات معمول پر آنے میں ابھی وقت لگے گا ۔

  • Share this:
اگلے مہینے سے مہنگا ہو جائے گا گاڑی چلانا اور کھانا پکانا ! دہلی این سی آر میں دام بڑھانے کی تیاری میں آئی جی ایل
کمپنی کا کہنا ہے کہ سی این جی اور پی این جی کی ڈیمانڈ 50 فیصدی تک پہنچی ہے ۔ حالات معمول پر آنے میں ابھی وقت لگے گا ۔

دہلی این سی آر کو مہنگائی کا جھٹکا لگنے والا ہے ۔ اگلے مہینے سے دہلی این سی آر میں رہنے والوں کو سی این جی اور پی این جی کیلئے زیادہ جیب ڈھیلی کرنی پڑے گی ۔ سی این بی سی آواز کو ذرائع سے خبر مل رہی ہے کہ لاک ڈاون سے معاشی دباو جھیل رہی آئی جی ایل نے سی این جی اور پی این جی کی قیمتیں بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ وہیں لاک ڈاون ختم ہونے کے بعد مانگ کو بڑھانے کیلئے بھی خاص حکمت عملی بنائی جارہی ہے ۔ ذرائع کے مطابق معاشی دباو کا حوالہ دے کر دام بڑھانے کی تیاری ہے ۔


آئی جی ایل کا کہنا ہے کہ ابھی سی این جی اور پی این کی ڈیمانڈ 50 فیصدی تک پہنچ ہے ۔ ڈیمانڈ پٹری پر آنے میں تین مہینے کا وقت لگے گا ۔ لاک ڈاون کے بعد آئی جی ایل نئی مارکیٹنگ حکمت عملی اپنائے گی ۔ ذرائع کے حوالے سے ملی خبر کے مطابق سکینڈ ہینڈ کار بازار کے حساب سے حکمت عملی تیار ہورہی ہے ۔ سیکورٹی کے اعتبار سے سی این جی ریٹروفٹ میں تیزی کا اندازہ ہے ۔ اس میں رواں مالی سال میں 1200 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری ہوگی ۔




غور طلب ہے کہ کورونا وائرس وبا کے خطرے کو دیکھتے ہوئے دہلی آنے جانے پر پابندی کا اعلان ہونے کے بعد اندرپرستھ گیس لمیٹڈ کے دہلی ، نوئیڈا اور غازی آباد میں واقع سی این جی اسٹیشنوں کے کاروبار کو بھاری مار پڑی ہے ۔ لاک ڈاون میں ڈھیل کے ساتھ ہی حالات میں کچھ بہتری تو ہوئی ہے ، لیکن ابھی بھی یہ عام حالات سے بہت دور ہے ۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ سی این جی اور پی این جی کی ڈیمانڈ 50 فیصدی تک پہنچی ہے ۔ حالات معمول پر آنے میں ابھی وقت لگے گا ۔ ایسے میں معاشی دباو سے باہر نکلنے کیلئے قیمتوں میں اضافہ کرنا ہوگا ۔ بتا دیں کہ اندر پرستھ گیس لمیٹڈ کمپنی دہلی اور اس کے آس پاس کے علاقوں میں سی این جی اور پائپ والی قدرتی گیس کی سپلائی کرتی ہے ۔
First published: May 29, 2020 08:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading