یہاں دلہنوں کو حکومت کا بڑا تحفہ: ایک تولہ سونا مفت، سینیٹری نیپکن کو لیکر بھی اہم فیصلہ

گوہاٹی میں خود وزیر اعلیٰ سونوال نے اس اسکیم کو ہری جھنڈی دکھائی اور ایک تولہ سونا (تقریبا11.66 گرام) دلہن کے والدین کو مفت میں دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

Nov 21, 2019 09:03 AM IST | Updated on: Nov 21, 2019 12:18 PM IST
یہاں دلہنوں کو حکومت کا بڑا تحفہ: ایک تولہ سونا مفت، سینیٹری نیپکن کو لیکر بھی اہم فیصلہ

علامتی تصویر

آسام حکومت نے حال ہی میں دلہنوں کیلئے ایک بڑا قدم اٹھایا ہے۔ اس اہم فیصلے کے تحت اروندھتی اسکیم کی شروعات کی گئی ہے۔ اس میں دلہنوں کو ایک تولہ سونا مفت دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ گوہاٹی میں خود وزیر اعلیٰ سونوال نے اس اسکیم کو ہری جھنڈی دکھائی  اور ایک تولہ سونا (تقریبا11.66  گرام) دلہن کے والدین کو مفت میں دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ حالانکہ اس اسکیم کے اندر وہی کنبہ آئے گا جو اقتصادی طور سے بیحد کمزور ہے۔ آپ کو بتا دیں کہ یہ اسکیم اس سال کے ریاستی بجٹ میں پہلے سے ہی تجویز کی گئی تھی۔

ویسے تو دی پروہبٹیشن آف چائلڈ میریج ایکٹ کے تحت اروندھتی اسکیم کا اہم مقصد ریاست میں کم عمری میں شادی کی تعداد کو کم کرنا ہے۔   دی پروہبٹیشن آف چائلڈ میریج ایکٹ  کے مطابق ہندستان میں کسی بھی لڑکی کی شادی 18 سال کی عمر سے پہلے نہیں ہو سکتی۔ وہیں لڑکے کی شادی 21 سال سے پہلے نہیں کرائی جا سکتی۔ یہ قانوناً جرم ہے۔ اس وجہ سے اروندھتی اسکیم کا فائدہ رسمی طور سے رجسٹریشن کے ذریعے آسام کی خاص شادی قانون 1954 کے تحت لیا جا سکتا ہے۔

سبھی دفتروں میں  میں سینیٹری نیپکن رکھے جانے کا فیصلہ

اس اسکیم کا فائدہ کسی بھی ذات، مسلک ، مذہب وغیرہ سے الگ وہی کنبہ جس کی سالانہ آمدنی 5 لاکھ سے کم ہے، فائدہ اٹھا سکتا ہے۔ وہیں اس اسکیم کےساتھ۔ساتھ سرکار نے سبھی دفاتر میں سینیٹری نیپکن رکھنے کا بھی فیصلہ لیا ہے۔  یہ فیصلہ کام کی جگہوں پر خواتین میں ذاتی صاف۔صفائی کو بڑھاوا دینے کیلئے لیا گیا ہے۔ خاتون ملازمین کی سہولیات اور ہائیجن کو دھیان میں رکھتے ہوئے حکومت نے یہ اصول نافذ کیا ہے۔

Loading...

Loading...