ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Kisaan Aandolan: حکومت زرعی قوانین میں ترمیم پر راضی، کسان تنظیمیں بل واپس لینے کے مطالبے پر قائم: ذرائع

Kisaan Aandolan: کسانوں کو ترمیم کرتے ہوئے نریندر سنگھ تومر نے کہا کہ حکومت کی طرف سے واضح کیا گیا ہے کہ تینوں قوانین کو پوری طرح واپس نہیں لیا جا سکتا۔ حالانکہ حکومت کسانوں کے مشوروں پر غور کرنے اور ترمیم کرنے کو تیار ہے۔

  • Share this:
Kisaan Aandolan: حکومت زرعی قوانین میں ترمیم پر راضی، کسان تنظیمیں بل واپس لینے کے مطالبے پر قائم: ذرائع
حکومت زروعی قوانین میں ترمیم پر راضی، کسان تنظیم بل واپس لینے کے مطالبے پر قائم: ذرائع

نئی دہلی: زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج 10 ویں دن بھی جاری ہے۔ کسان تنظیموں اور حکومت کے درمیان آج پانچویں دور کی بات چل رہی ہے۔ مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر، مرکزی وزیر تجارت پیوش گوئل کے ساتھ حکومت کے دیگر نمائندے میٹنگ میں موجود ہیں۔ اس درمیان، کسانوں کو خطاب کرتے ہوئے نریندر سنگھ تومر نے کہا کہ حکومت کی طرف سے واضح کیا گیا ہے کہ تینوں قوانین کو پوری طرح واپس نہیں لیا جاسکتا۔ حالانکہ حکومت کسانوں کے مشورے پر غور کرنے، بات چیت کرنے اور ترمیم کرنے کو تیار ہے۔


ذرائع کے مطابق، مرکزی وزیر زراعت نے میٹنگ کے دوران کہا کہ حکومت ترمیم کے لئے راضی ہے۔ اس پر کسان لیڈروں نے کہا کہ وہ کسی بھی ترمیم کو قبول کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ کسانوں نے واضح کیا، تینوں قوانین واپس ہوں۔ اس کے بعد سبھی کسان لیڈر کھڑے ہوگئے تھے، واک آوٹ کی حالت بن گئی تھی، لیکن انہیں منایا گیا اور بٹھایا گیا۔ دونوں وزیر میٹنگ روم سے باہر چلے گئے ہیں، کسان لیڈروں کو وقت دیا گیا ہے کہ حکومت کی تجویز آپ کو بتادیا گیا ہے۔ آپ اس پر آگے بڑھنے کے لئے تیار ہیں یا نہیں اس پر چرچا کرلیں۔ فی الحال بریک چل رہا ہے، جس میں کسان چرچا کر رہے ہیں کہ حکومت کی تجویز پر کیا کیا جائے۔


زرعی وزیر نے کسان تنظیموں سے کہا کہ حکومت بات چیت کو پابند عہد ہے: ذرائع


مرکزی زرعی وزیر نریندر سنگھ تومر نے مرکز کے تین نئے زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے کسان تنظیموں سے ہفتہ کو کہا کہ حکومت خوشگوار بات چیت کے لئے پابند عہد ہے۔ ذرائع نے یہ جانکاری دی۔ ذرائع نے کہا کہ 40 کسان تنظیموں کے نمائندوں کے ساتھ پانچویں دور کی بات چیت میں اپنے ابتدائی بیان میں نریندر تومر نے نئے زروعی قوانین پر ردعمل کا استقبال بھی کیا۔ حکومت اور مظاہرین کسان تنظیموں کے درمیان بات چیت یہاں وگیان بھون میں آج دوپہر 2:30 بجے شروع ہوئی۔ مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر اس وقت کسان لیڈروں کے ساتھ بات چیت کر رہے ہیں۔ ریل،تجارت اور خوراک ورسد وزیر پیوش گوئل اور وزیر مملکت برائے تجارت سوم پرکاش بھی میٹنگ میں موجود ہیں۔ سوم پرکاش پنجاب سے رکن پارلیمنٹ ہیں۔ ذرائع کے مطابق، مرکز کی طرف سے بات چیت کی قیادت کر رہے نریندر تومر نے اپنے ابتدائی بیان میں کہا کہ حکومت کسان لیڈروں کے ساتھ خوشگوار بات چیت کے لئے پابند عہد ہے اور کسانوں کے جذبات کو مجروح نہیں کرنا چاہتی۔ وزیر زراعت نے تینوں نئے زرعی قوانین پر ردعمل کا استقبال کیا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 05, 2020 06:40 PM IST