உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک مخالف مواد کے خلاف مرکزی حکومت کی بڑی کارروائی، 35 پاکستانی YouTube چینلز کو کیا بلاک

    ملک مخالف مواد کے خلاف مرکزی حکومت کی بڑی کارروائی، 35 پاکستانی YouTube چینلز کو کیا بلاک  (Representational image: IT Governance)

    ملک مخالف مواد کے خلاف مرکزی حکومت کی بڑی کارروائی، 35 پاکستانی YouTube چینلز کو کیا بلاک (Representational image: IT Governance)

    Govt Orders Blocking of 35 Pak-based YouTube Channels : مرکزی حکومت (Central Government) نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے 35 یوٹیوب چینلز اور کچھ سوشل میڈیا اکاؤنٹس کو بلاک کرنے کا حکم دیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی : مرکزی حکومت (Central Government) نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے 35 یوٹیوب چینلز اور کچھ سوشل میڈیا اکاؤنٹس کو بلاک کرنے کا حکم دیا ہے۔ وزارت اطلاعات و نشریات کے جوائنٹ سکریٹری وکرم سہائے نے اس سلسلہ میں جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ وزارت اطلاعات و نشریات کو 20 جنوری کو موصول ہونے والی تازہ خفیہ اطلاعات کی بنیاد پر 35 یوٹیوب چینلز، 2 ٹویٹر اکاؤنٹس، 2 انسٹاگرام اکاؤنٹس، دو ویب سائٹس اور ایک فیس بک اکاؤنٹ کو بلاک کرنے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں ۔ بتایا جا رہا ہے کہ ان چینلز اور اکاؤنٹس پر ہندوستان مخالف مواد (Anti-Indian Content) پیش کیا جا رہا تھا ۔

      وکرم سہائے نے بتایا ہے کہ ان سبھی بلاک کئے گئے اکاؤنٹس میں ایک مشترکہ فیکٹر یہ تھا کہ یہ سب پاکستان سے آپریٹ کئے رہے تھے اور ملک مخالف مواد پھیلانے کا کام کر رہے تھے ۔ وہیں وزارت کے سکریٹری اپرو چندرا نے بتایا ہے کہ بلاک کئے گئے یوٹیوب چینل کے 1.20 کروڑ سبسکرائبرس اور 130 کروڑ ویوز ہیں ۔ ایسے میں اب جب کہ انہیں بلاک کرنے کا عمل شروع ہو گیا ہے تو آگے مزید چینلز بلاک کئے جائیں گے ۔ ہماری خفیہ ایجنسیاں کام کر رہی ہیں ۔ ہمیں آپ کے تعاون کی بھی ضرورت ہوگی ۔


      اپرو چندرا نے مزید بتایا کہ پچھلی مرتبہ بلاک کئے گئے 20 یوٹیوب چینلز پاکستان سے چلائے جا رہے تھے ۔ ابھی بھی جن 35 یوٹیوب چینلز کو بلاک کیا گیا ہے وہ بھی پاکستان سے کام کر رہے تھے۔ انٹیلی جنس ایجنسی ان کی فنڈنگ ​​کے بارے میں جانکاری جمع کریں گی ۔

      اس سے قبل اطلاعات و نشریات کے وزیر انوراگ ٹھاکر نے بدھ کو خبردار کیا تھا کہ حکومت ملک کے خلاف "سازش رچنے" والوں کے خلاف ایسی کارروائیاں جاری رہیں گی۔ اس معاملہ پر سوالات کا جواب دیتے ہوئے ٹھاکر نے صحافیوں کو بتایا کہ میں نے اس کے خلاف کارروائی کا حکم دیا تھا۔ … مجھے خوشی ہے کہ دنیا بھر کے کئی بڑے ممالک نے اس کا نوٹس لیا ۔ یوٹیوب بھی آگے آیا اور انہیں بلاک کرنے کے لئے کارروائی کی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: