سورت کوچنگ آتش زدگی واقعہ: ’ زندہ بچنے کے لئے میں نے چانس لیا اور تیسری منزل سے کود گیا‘۔

ویکاریا نے بتایا کہ’’ میں نے سوچا کہ اگر میں یہاں رہوں گا تو دھوئیں سے مر جاؤں گا۔ لہذا میں نے چانس لیا اور دوستوں کو چھوڑ کر تیسری منزل سے کود گیا‘‘۔

May 25, 2019 11:40 AM IST | Updated on: May 25, 2019 11:41 AM IST
سورت کوچنگ آتش زدگی واقعہ: ’ زندہ بچنے کے لئے میں نے چانس لیا اور تیسری منزل سے کود گیا‘۔

اس آگ میں کم از کم 20 طلبہ کی موت ہو گئی۔

سورت کے سرتھنا علاقے کے ایک کوچنگ سینٹر میں لگی آگ میں 16 لڑکیوں سمیت 20 طلباء کی موت ہو گئی۔ کوچنگ ایک کاروباری عمارت کی تیسری منزل پر چلائی جا رہی تھی۔ عمارت میں آگ لگنے کے بعد تقریبا درجن بھر طلبہ و طالبات تیسری اور چوتھی منزل سے کود گئے۔ کودنے والے لوگوں میں سے تین کی موت ہو گئی۔ اس حادثے سے بچنے کے لئے ایک طالب علم نیچے کود گیا اور وہ بچ گیا۔ اس زندہ بچے کا نام روشت ویکاریا ہے۔ روشت نے کہا کہ زندہ بچنے کے لئے اس کے پاس تیسری منزل سے کودنے کے علاوہ اور کوئی چارا نہیں تھا۔

روشت ویکاریا نے بتایا کہ 'کوچنگ سینٹر کے اے سی سے نکل رہی آگ سے ہم سبھی طلبہ ڈر گئے تھے۔ کوچنگ میں پڑھا رہے ٹیچر نے کہا کہ کسی نے باہر آگ جلائی ہوگی یہ دھواں اسی سے آ رہا ہو گا۔ جب دھواں مسلسل بڑھتا گیا تو تمام طالب علم آخری کمرے میں حفاظت کی خاطر چلے گئے۔ جب سانس لینے میں دشواری ہونے لگی تو ہم نے کھڑکی کھول دی۔

Loading...

ویکاریا نے بتایا کہ’’ فائر بریگیڈ کے لوگ نیچے موجود تھے اور انہوں نے کودنے کے لئے کہا۔ لیکن ہمیں پکڑنے کے لئے ان کے پاس کوئی حفاظتی جال نہیں تھا۔ میں نے سوچا کہ اگر میں یہاں رہوں گا تو دھوئیں سے مر جاؤں گا۔ لہذا میں نے چانس لیا اور دوستوں کو چھوڑ کر تیسری منزل سے کود گیا۔ اس کے بعد مجھے بہت تیز درد ہو رہا تھا۔ جب میں اٹھا تو خود کو اسپتال میں پایا۔ میں بچ گیا ہوں یہ سوچ کر خوش ہو گیا‘‘۔

ویکاریا کے ہاتھوں اور سر میں چوٹ آئی ہے۔ انہیں آٹھ ٹانکے لگائے گئے ہیں۔ حادثہ سے بچے طالب علم نے کہا ’’ میں آرکیٹیکچر کالج میں داخلہ لینا چاہتا ہوں اور اسی کے لئے تیاری کر رہا تھا۔ ہائی اسکول میں 85 فیصد نمبر آنے کے بعد میرے کنبہ کے لوگوں نے مجھے میرے پسندیدہ کام کو کرنے کی اجازت دے دی۔ میرے والد کا ہیرے کا کاروبار ہے اور میری ماں گھریلو خاتون ہیں۔ میں نے کبھی یہ نہیں سوچا تھا کہ یہ آگ کچھ ہی منٹوں میں میری زندگی کو بدل کر رکھ دے گی۔ میں نہیں جانتا کہ میرے دوست کہاں ہیں۔ وہ زندہ بچے بھی ہیں یا نہیں‘‘۔

 

Loading...