ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

حج 2020 : ریاست بھوپال کے عازمین مدینہ رباط سے ہوئے محروم ، بتائی گئی یہ وجہ

سماجی کارکن اور سابق کونسلر شاہد علی کہتے ہیں کہ شاہی اوقاف نے ریاست بھوپال کے عازمین حج کے ساتھ دھوکہ کیا ہے ۔

  • Share this:
حج 2020 : ریاست بھوپال کے عازمین مدینہ رباط سے ہوئے محروم ، بتائی گئی یہ وجہ
حج 2020 : ریاست بھوپال کے عازمین مدینہ رباط سے ہوئے محروم ، بتائی گئی یہ وجہ

ریاست بھوپال کا شمار مدھیہ پردیش کے مالوہ خطہ کی اہم مسلم ریاست میں ہوتا تھا۔ ریاست بھوپال کا قیام سترہ سو بائیس سردار دوست محمد خان کے ہاتھوں عمل میں آیا تھا۔ سترہ سو بائیس سے جون انیس سو انچاس تک نومرد و چار بیگمات نے حکومت کی ہے۔ لیکن جب ریاست بھوپال کے عہد زریں کی بات کی جاتی ہے تو بیگمات بھوپال کا نام لیا جاتا ہے ۔ ریاست بھوپال میں نواب قدسیہ بیگم عرف گوہر محل، نواب سکندر جہاں بیگم، نواب شاہجہاں بیگم اور نواب سلطان جہاں بیگم نے حکومت کی ہے۔ ان چاروں بیگمات نے ہی بھوپال کی ہمہ جہت ترقی کے ساتھ ریاست بھوپال سے مقدس سفر کے لئے روانہ ہونے والے عازمین حج کے قیام کے لئے مکہ مکرمہ اور مدینہ منور میں رباط تعمیر کی تھیں ۔ ان رباطوں میں نوابی عہد سے پہلے اور ریاست بھوپال کے انڈین یونین میں انضمام کے بعد بھی ریاست بھوپال کے عازمین حج کے لئے قیام کا انتظام کیا جاتا تھا۔

روایت کے مطابق ہر سال کی طرح امسال بھی شاہی اوقاف کے ذریعہ رباط کے قرعہ کا اعلان کیا گیا اور اعلان  کے مطابق بھوپال کی تاریخی موتی مسجد میں شہر قاضی سید مشتاق علی ندوی اور مفتی ابوالکلام قاسمی کی نگرانی میں قرعہ اندازی کے عمل کو انجام دیا گیا ۔ تاہم عازمین حج کے پیروں سے اس وقت زمین نکل گئی جب شاہی اوقاف کے ذمہ داران نے دوران قرعہ یہ بتایا کہ اس بار صرف مکہ مکرمہ کی رباط کے لئے قرعہ اندازی کی جائے گی اور مدینہ رباط میں کسی کو جگہ نہیں ملے گی ۔ شاہی اوقاف کے اس اعلان سے عازمین حج نے مسجد کے اندر ہی شاہی اوقاف کے ذمہ داران پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور شاہی اوقاف پر عازمین حج کے ساتھ دھوکہ کرنے کا الزام بھی لگایا ۔

ممتاز سماجی کارکن اور سابق کونسلر شاہد علی کہتے ہیں کہ شاہی اوقاف نے ریاست بھوپال کے عازمین حج کے ساتھ  دھوکہ کیا ہے ۔ ابتک کی روایت کے مطابق مکہ رباط کے لئے قرعہ اندازی کی جاتی تھی اور مدینہ رباط میں سبھی عازمین کو قیام کی جگہ دی جاتی تھی ، لیکن اس بار بغیر کسی معققول وجہ کے عازمین حج کو مدینہ رباط میں جگہ نہ دیا جانا ظاہر کرتا ہے کہ شاہی اوقاف اپنے فرائض کی ادائیگی میں کوتاہی برت رہی ہے اور اسی طرح رہا تو ہم مدینہ رباط سے محروم ہو جا ئیں گے ۔

وہیں بھوپال کے عازم حج شاہد کامل کہتے ہیں کہ شاہی اوقاف نے ان کے ساتھ دھوکہ کیا ہے ۔ مکہ رباط کے لئے قرعہ اندازی میں ان کا نام تو آگیا ہے ، لیکن اب انہیں بتایا جا رہا ہے کہ مدینہ میں دوران حج ہمیں خود اپنے قیام کا انتظام کرنا ہوگا ۔ اس سے ریاست بھوپال کے عازمین حج پر نہ صرف اضافی خرچ بڑھے گا بلکہ شاہی اوقاف کی ناقص کارکردگی کے سبب انہیں مقدس سفرمیں مشکلات کا بھی سامنا کرنا ہوگا ۔ شاہی اوقاف نے ریاست بھوپال کے ساڑھے نو سو عازمین حج کے ساتھ دھوکہ کیا ہے ، جسے ریاست کے عازمین حج کبھی معاف نہیں کریں گے۔

واضخ رہے کہ بھوپال شاہی اوقاف کی ٹرسٹی نواب منصور علی خان پٹودی کی بڑی بیٹی صبا علی خان ہیں ۔ صبا علی خان بھوپال میں تو رہتی نہیں ہیں ۔ ان کی غیر موجودگی میں شاہی اوقاف کا کام شاہی اوقاف کے سکریٹری اعظم ترمذی انجام دیتے ہیں ۔ موتی مسجد میں مدینہ رباط کو لیکر شاہی اوقاف کے سکریٹری اعظم ترمذی کو عازمین حج کی سخت ناراضگی کا سامنا کرنا پڑا ۔ جب نیوز 18 اردو نے ان سے پوچھا کہ ایک سو تین سال کی تاریخ میں پہلی بار مدینہ رباط میں عازمین حج کے قیام کا انتظام کیوں نہیں کیا جا رہا ہے تو انہوں نے جواب دیا کہ مکہ رباط میں ریاست بھوپال کے دو سو عازمین حج کے قیام کا انتظام کیا جا رہا ہے لیکن مدینہ رباط میں کچھ نا گفتہ بہ وجوہات کے سبب انتظامات نہیں ہو سکے ہیں ۔ لیکن ان کی کوشش ہے کہ حج سے پہلے چھ سے سات سو عازمین حج کے قیام کا انتظام ہو جائے ۔

شہر قاضی سید مشتاق علی ندوی نے سفر حج پر جانے والے عازمین حج سے صبر و تحمل کرنے کی تلقین کی ۔ حج زندگی میں بدلاؤ لانے کا نام ہے ۔ جن لوگوں کو رباط میں جگہ ملی ہے وہ خدا کا شکر ادا کریں اور جنہیں جگہ نہیں ملی ہے وہ صبر کریں اور اللہ سے دعا کریں۔ قرعہ اندازی کے اختتام پر شہر قاضی سید مشتاق علی ندو ی نے دعا کروائی ۔ اس موقع پر ملک میں امن وامان کے ساتھ کورونا وائرس سے تحفظ کے لئے بھی دعا کی گئی ۔
First published: Mar 14, 2020 05:59 PM IST