உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عازمین حج کے سامان لے جانے کے الزام میں نصیرالدین سیفی حج معاملات سے بے دخل

    دہلی حج منزل: فائل فوٹو

    دہلی حج منزل: فائل فوٹو

    دہلی حج کمیٹی کے رکن نصرالدین سیفی پر حاجیوں کا سامان اٹھانے کا الزام ہے اورایف آئی آر تک ہونے کی تیاری کی جارہی ہے جبکہ نصر الدین سیفی خود کو بے قصور بتارہے ہیں۔

    • Share this:
      عازمین حج کا سامان اٹھائے جانے کو لے کر دہلی حج کمیٹی ان دنوں تنازعات میں ہے۔ دہلی حج کمیٹی کے رکن نصرالدین سیفی پر حاجیوں کا سامان اٹھانے کا الزام ہے اورایف آئی آر تک ہونے کی تیاری کی جارہی ہے جبکہ نصر الدین سیفی خود کو بے قصور بتارہے ہیں۔

      یہ معاملہ دہلی حج کمیٹی کا  ہے جہاں سے دہلی سمیت 6 ریاستوں کے حجاج کرام کوحج کے مقدس سفر پرروانہ کیا جاتا ہے، لیکن آج کل دہلی حج کمیٹی چوری کی وجہ سے تنازعات میں ہے۔  بتایا جارہا ہے کہ حج کمیٹی کے ممبرنصر الدین سیفی نے ایئرپورٹ سے حاجیوں کا سامان اٹھا لیا ہے۔

      حالانکہ دہلی حج کمیٹی نے اس معاملے کو لے کر اپنا پلہ جھاڑنے کی کوشش کی ہے۔ دہلی حج کمیٹی کے چیئرمین حاجی اشراق خان کا کہنا ہے کہ حج کمیٹی نے نصرالدین سیفی پر کارروائی کی ہے اور انہیں حج معاملوں سے الگ کردیا گیا ہے۔

      دراصل 17 جولائی کو دہلی حج کمیٹی کے رکن نصیرالدین سیفی حج کمیپ سے حاجیوں سے ضبط کیا ہوا سامان لے کر آئے تھے، جس میں گھی اوراچار کے علاوہ کچھ زیورات بھی شامل تھے، جس کو بعد میں نصیرالدین سیفی نے یتیم خانہ بچہ گھر میں جمع کرا دیا تھا۔ نصیرالدین کا کہنا ہے کہ انہیں بغیرجانچ کئے سزا دی جارہی ہے۔ اس معاملے کی جانچ کرالی جائے تو وہ بے قصورثابت ہوں گے۔

      نصیرالدین سیفی کا یہ بھی الزام ہے کہ انہوں نے دہلی سے جانے والے حاجیوں کے لئے حج کیمپ میں سہولیات کو لے کرسوال اٹھایا تھا جس کی وجہ سے انہیں نشانہ بنایا جارہا ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ بہت سارا سامان فرید آباد کے ممبراسمبلی لے کر چلے گئے، اس کی کوئی جانچ نہیں کرائی گئی ہے۔ بہرحال نصیر الدین سیفی کے معاملے میں دہلی حکومت کو فیصلہ لینا ہے کہ وہ حج کمیٹی کے ممبر بنے رہیں گے یا انہیں ان کے عہدے سے ہٹا دیا جائے گا۔

      حج کمیٹی آف انڈیا اوردہلی حج کمیٹی کے ذریعہ نصیرالدین سیفی کے خلاف ایف آئی آر کی تیاری ہے تو اس درمیان نصیرالدین سیفی نے نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ بے قصور ہیں، انہوں نے کچھ نہیں لیا ہے۔ انہیں عازمین حج کے لئے آواز اٹھانے کی سزا دی جارہی ہے۔ سیفی نے اپنی بے گناہی کے لئے کئی طرح کے ثبوت بھی دکھائے۔
      First published: