ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ماسک نہ پہنے پراترپردیش پولیس نے دی یہ سخت سزا، آپ جان کرہو جائیں گےحیران

سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس روہت سنگھ سجوان (Rohit Singh Sajwan) نے نیوز 18 کو بتایا کہ الزام لگانے شخص کو پولیس نے ماسک نہیں پہننے کے الزام میں حراست میں لیا تھا ، لیکن کیلیں ٹھوکنے کا الزام بے بنیاد ہے۔

  • Share this:
ماسک نہ پہنے پراترپردیش پولیس نے دی یہ سخت سزا، آپ جان کرہو جائیں گےحیران
اترپردیش پولیس

ایک خاتون نے بریلی پولیس پر ماسک نہ پہننے کی وجہ سے پکڑے جانے کے بعد اس کے بیٹے کے ہاتھ اور پاؤں میں کیلیں ٹھوکنے کا الزام عائد کیا ہے۔ اگرچہ پولیس نے ان الزامات کی تردید کی ہے ، لیکن خاتون کی شکایت کی بنیاد پر تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس روہت سنگھ سجوان (Rohit Singh Sajwan) نے نیوز 18 کو بتایاکہ الزام لگانے والے شخص کو پولیس نے ماسک نہیں پہننے کے الزام میں حراست میں لیا تھا ، لیکن کیلیں ٹھوکنے کا الزام بے بنیاد ہے۔



بارادری کے جوگی نوڈا کی رہائشی شیلا دیوی کی درج کردہ شکایت کے مطابق اس کا بیٹا رنجیت 24 مئی کی رات دس بجے کے لگ بھگ اپنے گھر کے باہر گھوم رہا تھا جب تین پولیس اہلکاروں نے اسے نقاب پوش ہونے کی وجہ سے روکا تو شیلا دیوی نے الزام لگایا کہ جوگی نوڈا پولیس نے رنجیت کو گھسیٹ کر قریبی پولیس چوکی پر پہنچا دیا۔

شیلا دیوی پولیس چوکی پہنچ گئیں ، لیکن کسی نے بھی اسے کچھ نہیں بتایا ، انہوں نے اپنی شکایت میں کہا۔ دو دن تک وہ مبینہ طور پر بیٹے کو ڈھونڈتی رہی۔ بدھ کے روز کچھ مقامی لوگوں نے زخمی رنجیت کو سڑک کے کنارے پایا۔ کیل اس کے دونوں بازوؤں اور پیروں میں گھس گئے تھے۔


ساجوان نے کہا کہ رنجیت کے خلاف سن 2019 میں پہلے ہی بت توڑنے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ دو دن قبل اس کے خلاف براداری پولیس اسٹیشن میں ماسک نہیں پہننے کے الزام میں ایک اور مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ منگل کو پولیس نے گرفتاری کی کوشش کی تھی۔ گرفتاری سے بچنے کے لیے اب وہ یہ دعویٰ کررہا ہے کہ اس کے ہاتھوں اور پیروں میں کیلیں کھینچ دی گئیں۔ یہ الزامات بے بنیاد اور غلط ہیں۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 29, 2021 08:37 AM IST