ریزرویشن آندولن کو بنائیں گے ملک گیر، 27 کروڑ لوگوں کا ہے ساتھ : ہاردک

نئی دہلی۔ گجرات میں پٹیل برادری کو ملازمتوں اور تعلیم میں ریزرویشن دلانے کے لئے تحریک چلا رہے ہاردک پٹیل نے اس تحریک کو ملک گیر بنانے کے لئے دوسرے فرقوں کے ساتھ ہاتھ ملانے کا عزم کیا ہے۔

Aug 31, 2015 08:14 AM IST | Updated on: Aug 31, 2015 08:14 AM IST
ریزرویشن آندولن کو بنائیں گے ملک گیر، 27 کروڑ لوگوں کا ہے ساتھ : ہاردک

نئی دہلی۔ گجرات میں پٹیل برادری کو ملازمتوں اور تعلیم میں ریزرویشن دلانے کے لئے تحریک چلا رہے ہاردک پٹیل نے اس تحریک کو ملک گیر بنانے کے لئے دوسرے فرقوں کے ساتھ ہاتھ ملانے کا عزم کیا ہے۔ انہوں نے موجودہ حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کی۔ پاٹيدار ریزرویشن آندولن کمیٹی کے کنوینر ہاردک نے کہا کہ وہ اپنے پٹیل / پاٹيدار کمیونٹی کے غریبوں کے لئے جدوجہد جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنی پٹیل برادری کے 95 فیصد غریبوں کے لئے ریزرویشن مانگ رہے ہیں۔ اس پوری کمیونٹی کو یہ مطالبہ کرنا چاہئے۔ پاٹيدار کمیونٹی کے صرف پانچ فیصد لوگ امیر ہیں، مکمل کمیونٹی نہیں۔

ہاردک نے کہا کہ میری کمیونٹی میں 95 فیصد لوگ غریب ہیں۔ گزشتہ ایک دہائی میں ہماری کمیونٹی کے 10000 کسان خودکشی کر چکے ہیں۔ میں ان کے لئے لڑ رہا ہوں۔ اگر دوسری کمیونٹی آگے آتی ہیں تو میں ان کی بھی حمایت کروں گا۔ میں سب سے بات کر رہا ہوں۔ ہاردک  نے کہا کہ ہم صرف پاٹيدار کو ہی نہیں بلکہ دیگر کمیونٹیز کو بھی متحرک کریں گے۔ ہاردک پٹیل دارالحکومت میں گوجر اور کرمی برادری کی دعوت پر آئے ہیں۔ کوٹلہ کے گوجر گھر میں ان فرقوں نے اجتماع کیا۔

Loading...

ہاردک نے کہا کہ میں گوجر اور کرمی کمیونٹی کی دعوت پر دہلی آیا ہوں۔ وہ ہمارے بھائی ہیں اور انہوں نے یہاں میٹنگ رکھی تھی۔ بہت جلد قومی دارالحکومت میں تحریک زور پکڑ لے گی۔ یہ ایک طویل جدوجہد ہے اور 1-2 سال تک چلے گی۔ وہ ہماری حمایت کریں گے۔ ضرورت پڑنے پر نیشنل ہائی وے پر دھرنا دیں گے اور آمدورفت میں خلل ڈالیں گے۔

پٹیل نے یہ بھی کہا کہ ریزرویشن پالیسی نے ملک کو 60 سال پیچھے دھکیل دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ریزرویشن دینا ہی ہے تو سب کو دو۔ ریزرویشن قابل اور اس کے مستحق طالب علموں کو ملنا چاہئے جو ریزرویشن کے حقدار ہوتے ہیں لیکن جنہیں حاصل نہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس دن ریزرویشن پالیسی کا صحیح مسودہ تیار ہو گیا اسی دن کافی لوگ ملک کی ترقی کا حصہ بن جائیں گے۔ اگر ایسا ہوا تو چین کو پیچھے چھوڑ کر ہندستان سپر پاور بن جائے گا۔

ہاردک نے صاف کر دیا کہ ان کی پیٹھ پر کسی سیاسی جماعت کا ہاتھ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے کسی پارٹی یا لیڈر کی حمایت حاصل نہیں ہے۔ کوئی لیڈر یا پارٹی ہماری تحریک کا حصہ نہیں ہے۔ میں سیاست میں نہیں آنا چاہتا۔ میرے پاس گجرات کے 70 لاکھ لوگوں کی حمایت ہے اور میں ملک کے 27 کروڑ پٹیلوں کو متحرک کرنا چاہتا ہوں۔ یہ او بی سی کوٹے میں پٹیلوں کو ریزرویشن دلانے کی لڑائی ہے۔

ہاردک نے کہا کہ اگر یہ بال ٹھاکرے کے طریقوں کی سیاست ہے تو اس میں غلط کیا ہے؟ میں اروند کیجریوال کے اصولوں کو بھی اچھا مانتا ہوں۔ مودی جی کا کرتہ پہننے کا طریقہ اور قومی سلامتی پر ان کی پالیسی پسند کرتا ہوں۔ لیکن میں کسی کی مدد نہیں لوں گا۔ پورا ملک میری مدد کرے گا۔

 

 

Loading...