ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وحشی باپ نے کی نابالغ بیٹی کی آبروریزی ، پھر جرم چھپانے کیلئے کیا یہ گندہ کام ، جان کر رہ جائیں گے حیران

ہریانہ میں نابالغ بیٹی کی آبروریزی کرنے اور جرم کو چھپانے کیلئے اس کو زہر دے کر مارنے کے سنسنی خیز معاملہ میں پولیس نے ملزم باپ کو گرفتار کیا ہے ۔

  • Share this:
وحشی باپ نے کی نابالغ بیٹی کی آبروریزی ، پھر جرم چھپانے کیلئے کیا یہ گندہ کام ، جان کر رہ جائیں گے حیران
علامتی تصویر

ہریانہ میں نابالغ بیٹی کی آبروریزی کرنے اور جرم کو چھپانے کیلئے اس کو زہر دے کر مارنے کے سنسنی خیز معاملہ میں پولیس نے ملزم باپ کو گرفتار کیا ہے ۔ روہتک میں ہفتہ کو صحافیوں سے بات چیت میں ڈی ایس پی ( صدر دفتر ) گورکھپال نے بتایا کہ ملزم کو جمعہ کو اندور سے گرفتار کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملزم فیکٹری میں کام کرتا ہے اور بیوی کے ساتھ اس کے تلخ رشتے ہیں ۔ میاں – بیوی گزشتہ چھ ماہ سے روہتک شہر میں الگ الگ رہ رہے تھے ۔ ملزم کے چار بچوں میں ایک نو سال کی بیٹی بھی تھی ، جس کے ساتھ اس واردات کو انجام دیا گیا ۔


ڈی ایس پی نے بتایا کہ بچے رات میں اپنے باپ کے گھر پر ہی سوتے تھے اور وہ صبح کام پر جانے سے پہلے بچوں کو بیوی کی رہائش گاہ پر چھوڑ دیتا تھا ۔ 27 اور 28 نومبر کی درمیانی شب میں ملزم نے اپنی بیٹی کی مبینہ طور پر آبروریزی کی اور پھر اس کو سنگین نتیجہ بھگتنے کی دھمکی دی ۔ اس درمیان کہیں وہ اپنی ماں کو اس واقعہ کے بارے میں نہ بتا دے ، اس لئے اس نے اس کو جان سے مارنے کی سازش بھی رچ ڈالی ۔


ڈی ایس پی نے کہا کہ دو دسمبر کو وہ بازار سے چوہے مارنے کا زہر خرید کر لایا اور اس کو آٹے میں ملا کر اپنی بیٹی کو دیدیا ۔ تین دسمبر کو بچی کی حالت کافی زیادہ بگڑ گئی اور اسپتال میں علاج کے دوران اس نے دم توڑ دیا ۔ ملزم باپ ٹھیک اسی دن وہاں سے فرار ہوگیا ، جس کے بعد متاثرہ لڑکی کی ماں کی شکایت پر ملزم باپ کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 302 اور پوکسو ایکٹ کے تحت معاملہ درج کیا گیا ۔


اطلاعات کے مطابق بہار کا رہنے والا ملزم پہلے پانی پت بھاگ گیا ، اس کے دہلی اور پھر اندور چلا گیا ، جہاں سے پولیس نے اس کو اپنی گرفت میں لیا ۔ ملزم کو ہفتہ کو روہتک میں ایک عدالت کے سامنے پیش کیا گیا ، جہاں سے اس کو دو دن کی پولیس تحویل میں بھیج دیا گیا ہے ۔
First published: Dec 08, 2019 12:19 PM IST