உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بریکنگ نیوز: رنجیت قتل سانحہ میں ڈیرا سربراہ رام رحیم سمیت 5 قصوروار قرار

    بریکنگ نیوز: رنجیت قتل سانحہ میں ڈیرا سربراہ رام رحیم سمیت 5 قصوروار قرار

    بریکنگ نیوز: رنجیت قتل سانحہ میں ڈیرا سربراہ رام رحیم سمیت 5 قصوروار قرار

    Haryana Ranjit Murder Case: بتایا جا رہا ہے کہ سی بی آئی کی خصوصی عدالت 12 اکتوبر کو سبھی قصورواروں کو سزا سنائے گی۔

    • Share this:
      پنچکولہ: ہریانہ کے ڈیرا سچا سودا سربراہ رام رحیم کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔ رنجیت قتل معاملے میں سی بی آئی عدالت نے بڑا فیصلہ سنایا ہے۔ سناریا جیل میں بند رام رحیم سمیت پانچ ملزمین کو عدالت نے قصور وار قرار دیا ہے۔ رنجیت قتل معاملے میں سی بی آئی عدالت نے رام رحیم کو قصور وار قرار دیا ہے۔ حالانکہ، سزا کا اعلان ابھی نہیں ہوا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ سی بی آئی کی خصوصی عدالت 12 اکتوبر کو سبھی قصورواروں کو سزا سنائے گی۔ اطلاع کے مطابق، معاملے میں بابا رام رحیم، کرشنا لال، سب دل، اوتار، جسبیر کو قصور وار قرار دیا گیا ہے، جبکہ ایک دیگر ملزم اندرسین کی موت ہوچکی ہے۔

      جمعہ کو معاملے میں ملزم ڈیرا سربراہ گرمیت رام رحیم اور کرشنا کمار ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ پیش ہوئے۔ وہیں ملزم اوتار، جسویر اور سبدل براہ راست عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے اس معاملے میں پہلے 26 اگست کو فیصلہ سنایا تھا۔ 19 سال پرانے اس معاملے میں گزشتہ 12 اگست کو آخری سماعت ہوئی تھی۔ سی بی آئی جج ڈاکٹر سشیل کمار گرگ کی عدالت میں تقریباً ڈھائی گھنٹے بحث کے بعد ملزمین کو جمعہ کے روز قصور وار قرار دیا گیا۔

      کیا ہے پورا معاملہ

      رنجیت سنگھ کا سال 2002 میں قتل ہوا تھا۔ معاملے میں سرسا ڈیرا سربراہ رام رحیم کو ملزم بنایا گیا۔ عدالت میں مسلسل کئی بار سماعت ملتوی ہوئی۔ رنجیت سنگھ ڈیرا میں منیجر تھا۔ سی بی آئی نے ملزمین کے خلاف 2003 میں معاملہ درج کیا تھا اور سال 2007 میں عدالت نے چارج فریم کئے تھے۔ واضح رہے کہ گرمیت رام رحیم کو سادھویوں سے جنسی استحصال کے معاملے میں پہلے ہی 20 سال کی سزا ہوچکی ہے اور صحافی رام چندر چھترپتی قتل سانحہ میں وہ عمر قید کی سزا کاٹ رہا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: