ہوم » نیوز » وطن نامہ

پھر آندولن کے موڈ میں جاٹ ، راستہ روکیں گے جیل بھریں گے، مگر حکومت سے بات نہیں کریں گے

جاٹوں نے اعلان کیا کہ اب حکومت سے کوئی بات چیت نہیں کی جائے گی ۔ 13 ستمبر کو تاریخی ریلی کر کے حکومت کے خلاف تحریک کا بگل بجا دیا جائے گا

  • Pradesh18
  • Last Updated: Jul 30, 2016 08:17 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پھر آندولن  کے موڈ میں جاٹ ، راستہ روکیں گے جیل بھریں گے، مگر حکومت سے بات نہیں کریں گے
جاٹوں نے اعلان کیا کہ اب حکومت سے کوئی بات چیت نہیں کی جائے گی ۔ 13 ستمبر کو تاریخی ریلی کر کے حکومت کے خلاف تحریک کا بگل بجا دیا جائے گا

چندی گڑھ : جاٹوں نے پھر سے حکومت کے خلاف آندولن کا اعلان کیا ہے ۔ جیند میں ہریانہ اور آس پاس کی ریاستوں سے آئے جاٹ اور کھاپ لیڈروں کی آج مہا پنچایت ہوئی ۔ اس میں جاٹوں نے اعلان کیا کہ اب حکومت سے کوئی بات چیت نہیں کی جائے گی ۔ 13 ستمبر کو تاریخی ریلی کر کے حکومت کے خلاف تحریک کا بگل بجا دیا جائے گا ۔


مہا پنچایت میں فیصلہ لیا گیا کہ حکومت سے بات چیت کے تمام دروازے بند ہوں گے ۔ اب براہ راست اعلانجنگ ہوگا ۔ اب جاٹ جیل بھریں گے اور راستے بلاک کریں گے ۔ اگر حکومت نے کوئی کارروائی کی ، تو وہ خود ذمہ دار ہوگی ۔ مہا پنچایت میں سینکڑوں جاٹ نمائندوں نے حصہ لیا ۔


جاٹوں نے کہا کہ 13 ستمبر کو ریلی کہاں ہوگی ، اس کا فیصلہ 14 اگست کو سونی پت ضلع کے کول گاؤں میں مہا پنچایت کا انعقاد کر کے کیا جائے گا ۔ اس سے پہلے جاٹوں نے جون میں بھی آندولن کیا تھا ۔ واضح رہے کہ پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے جاٹ اور دیگر کمیونٹی کے لئے ریزرویشن کوٹہ کے نوٹیفکیشن پر روک لگا دی ہے ۔ اس سے شمالی ریاستوں جن میں پنجاب ، ہریانہ ، ہماچل پردیش ، جموں و کشمیر اور مرکز کے زیر انتظام ریاست چندی گڑھ کے لوگ اس بات سے فکر مند ہیں کہ آندولن سے ہریانہ میں پھر سڑک اور ریل راستے جام ہو سکتے ہیں  ۔

First published: Jul 30, 2016 08:06 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading