ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہاتھرس سانحہ: وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے مل سکتا ہے متاثرہ خاندان، کل ہونی ہے عدالت میں پیشی

Hathras Case: آئندہ کل 12 اکتوبر کو ہاتھرس معاملے سے منسلک ریاست کے افسران کے ساتھ ہی متاثرہ فیملی کو بھی اپنا موقف رکھنے کے لئے طلب کیا ہے۔ متاثرہ فیملی کے پانچ اراکین دوپہر تقریباً ایک بجے سرکاری گاڑی سے لکھنو کے لئے روانہ ہوں گے۔

  • Share this:
ہاتھرس سانحہ: وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے مل سکتا ہے متاثرہ خاندان، کل ہونی ہے عدالت میں پیشی
ہاتھرس سانحہ: وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے مل سکتا ہے متاثرہ خاندان، کل ہونی ہے عدالت میں پیشی

ممبئی: اترپردیش کے ہاتھرس ضلع میں واقع چندپا تھانہ علاقے کے بلگڑھی گاوں میں 19 سالہ مبینہ اجتماعی آبروریزی (Hathras Gangrape and Murder Case) کی موت کے بعد مچے سیاسی گھمسان اور جانچ کے درمیان متاثرہ کی فیملی اتوار کو وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ (CM Yogi Adityanath) سے ملاقات کرسکتی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ یہ ملاقات شام کو ہوسکتی ہے۔ دراصل، الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنو بینچ نے ہاتھرس سانحہ کا نوٹس لیتے ہوئے 12 اکتوبر کو متاثرہ فیملی کو بھی پیش ہونے کو کہا ہے۔ آج ہاتھرس کی متاثرہ فیملی بھاری سیکورٹی کے درمیان لکھنو پہنچے گی، جہاں ان کی ملاقات وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے ہوسکتی ہے۔ اس سے پہلے بھی ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ وزیر اعلیٰ متاثرہ فیملی سے بات چیت کرچکے ہیں۔

واضح رہے کہ 12 اکتوبر کو ہاتھرس معاملے سے منسلک ریاست کے افسران کے ساتھ ہی متاثرہ فیملی کو بھی اپنا موقف رکھنے کے لئے طلب کیا ہے۔ متاثرہ فیملی کے پانچ اراکین دوپہر تقریباً ایک بجے سرکاری گاڑی سے لکھنو کے لئے روانہ ہوں گے۔ پولیس نے فیملی کو لانے کے لئے سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے ہیں۔




ہاتھرس کی متاثرہ فیملی بھاری سیکورٹی کے درمیان لکھنو پہنچے گی، جہاں ان کی ملاقات وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے ہوسکتی ہے۔ اس سے پہلے بھی ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ وزیر اعلیٰ متاثرہ فیملی سے بات چیت کرچکے ہیں۔
ہاتھرس کی متاثرہ فیملی بھاری سیکورٹی کے درمیان لکھنو پہنچے گی، جہاں ان کی ملاقات وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سے ہوسکتی ہے۔ اس سے پہلے بھی ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ وزیر اعلیٰ متاثرہ فیملی سے بات چیت کرچکے ہیں۔


سی بی آئی نے معاملے کو کیا ٹیک اوور

ہاتھرس اجتماعی آبروریزی اور قتل معاملے کی جانچ اب سی بی آئی کرے گی۔ سی بی آئی کی غازی آباد یونٹ ان معاملات میں کیس کو دوبارہ رجسٹرڈ کرے گی، جنہیں یوپی پولیس نے درج کیا تھا۔ اس کے علاوہ ہاتھرس میں ہوئے مشتعل احتجاجی مظاہرہ کے بعد یوپی پولیس کے ذریعہ درج ملک سے غداری اور ریاستی حکومت کے خلاف سازش کرنے جیسے سبھی معاملات کی بھی جانچ سی بی آئی کرے گی۔ مرکزی حکومت کی ڈی او پی ٹی محکمہ نوٹیفیکیشن کے بعد سی بی آئی نے ہاتھرس معاملے کو ٹیک اوور کیا ہے۔ جلد سی بی آئی ہاتھرس کیس کی جانچ شروع کرے گی۔ اس سے قبل یوگی حکومت نے ہاتھرس سانحہ کی جانچ کے لئے سپریم کورٹ سے گزارش کی تھی کہ سی بی آئی جانچ سپریم کورٹ کی نگرانی میں ہو۔ ذرائع کے مطابق، فیملی کو سی بی آئی کی ٹیم ایس آئی ٹی، متاثرہ فیملی اور پولیس سے ملاقات کرکے جانچ عمل کو پرکھ سکتی ہے۔ ابھی تک ہاتھرس سانحہ کی جانچ ایس آئی ٹی کر رہی تھی۔ حال ہی میں اس جانچ کو پورا کرنے کے لئے یوپی حکومت نے 10 دنوں کا اور وقت دے دیا تھا، تاکہ سچ سامنے آسکے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Oct 11, 2020 10:50 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading