ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش میں کورونا ریکوری ریٹ ہوا 71 فیصد، وزیر صحت کا دعویٰ

وزیر صحت ڈاکٹر نروتم مشرا نے کہا کہ طبی اہلکاروں کی مستقل کوششوں سے ہی آج مدھیہ پردیش کورونا انفکشن کے معاملے میں ملک میں آٹھویں مقام پر ہے اور کورونا گروتھ ریٹ بڑھ کر 71 فیصد سے زیادہ ہوگیا ہے۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش میں کورونا ریکوری ریٹ ہوا 71 فیصد، وزیر صحت کا دعویٰ
مدھیہ پردیش میں کورونا ریکوری ریٹ ہوا 71 فیصد، وزیر صحت کا دعویٰ

بھوپال: مدھیہ پردیش کورونا کے قہر ہر حکومت کی گرفت مضبوط ہوتی جاری ہے۔ صوبہ میں کورونا مریضوں کی تعداد جہاں بڑھ کر جہاں بڑھ کر 10903 ہوگئی ہے۔ وہیں صوبہ میں کورونا سے اب تک 454 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ کورونا بیماری سے اب تک 7754 لوگ صحتیاب ہوکر اسپتال سے اپنے گھر جا چکے ہیں۔ مدھیہ پردیش کے وزیر صحت ڈاکٹر نروتم مشرا نے صوبہ میں کورونا ریکوری ریٹ پر ڈاکٹر، نرس اور پیرا میڈیکل اسٹاف کے ساتھ انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا ہے۔ ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کورونا مہاماری پر قابو پانے میں ہمارے جاں باز ڈاکٹر، نرس اور پیرا میڈیکل اسٹاف کا بڑا اہم کردار ہے۔


وزیر صحت ڈاکٹر نروتم مشرا نے کہا کہ طبی اہلکاروں کی مستقل کوششوں سے ہی آج مدھیہ پردیش کورونا انفکشن کے معاملے میں ملک میں آٹھویں مقام پر ہے اور کورونا گروتھ ریٹ بڑھ کر 71 فیصد سے زیادہ ہوگیا ہے۔ میں اپنے ان جانبازوں کی محنت کو سلام کرتا ہوں۔ ہمارے پاس کورونا کو کنرول کرنے کے لئے دوسرے ریاستوں سے کئی گنا زیادہ بیڈ اور آئی سی یو ہیں اور بہت جلد ہم پوری طرح سے کورونا کو مدھیہ پردیش سے ختم کر دین گے۔ وہیں مدھیہ پردیش  میں کورونا وائرس کے بڑھتے معاملے کو لے کرکانگریس نے حکومت کے دعویٰ پر انگلی اٹھائی ہے۔ مدھیہ پردیش کے سابق و زیر اور مدھیہ پردیش کانگریس کے سینئر لیڈر پی سی شرما نے حکومت کے دعوے کو مشکوک قرار دیا ہے۔ پی سی شرما کہتے ہیں کہ یہ کورونا کے معاملے کو چھپا رہے ہیں۔ حکومت کورونا کے صحیح اعدادوشمار بتاتی نہیں ہے۔ صحیح اعدادوشمار نہیں بتانے سے گروتھ ریٹ میں تبدیلی دکھائی دیتی ہے۔


ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کورونا مہاماری پر قابو پانے میں ہمارے جاں باز ڈاکٹر، نرس اور پیرا میڈیکل اسٹاف کا بڑا اہم کردار ہے۔
ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کورونا مہاماری پر قابو پانے میں ہمارے جاں باز ڈاکٹر، نرس اور پیرا میڈیکل اسٹاف کا بڑا اہم کردار ہے۔


بھوپال میں روزانہ 50 سے زیادہ کورونا کے مریض سامنے آرہے ہیں۔ آج بھی بھوپال میں 56-58 کیس سامنے آئے ہیں۔ اخبارات کے مطابق خبر ہےکہ کورونا گاؤں کے اندر تک پہنچ چکا ہے۔ یہ بھی خبر ہے کہ نومبر تک کورونا اپنے شباب پر ہوگا۔ کل ملا کر کورونا کو لے کر صورتحال کنٹرول سے باہر ہے اور دوسرا یہ کہ کورونا کو لے کر برابر ٹیسٹ نہیں ہو رہے ہیں۔ لمیٹیڈ ٹیسٹ سے کورونا پر کنٹرول نہیں پایا جا سکتا ہے، جس طرح سے راجسھتان اور دوسری ریاستیں کر رہی ہیں، جب تک اس طرح نہیں کریں گے، تب تک خوف بنا رہے گا۔

بھوپال میں روزانہ 50 سے زیادہ کورونا کے مریض سامنے آرہے ہیں۔
بھوپال میں روزانہ 50 سے زیادہ کورونا کے مریض سامنے آرہے ہیں۔


واضح رہے کہ کورونا ریکوری میں راجستھان ملک میں پہلے نمبر پر ہے۔ راجستھان میں کورونا ریکوری ریٹ 75.3 فیصد ہے جبکہ گجرات میں 68.9 فیصد، اترپردیش میں 60 فیصد اور تمل ناڈو میں 54.8 فیصد ریکوری ریٹ ہے۔ وہیں دوسری جانب صوبہ میں کورونا کے بڑھتے معاملات کی وجہ سے طلبا نے صوبہ کی یونیورسٹیوں میں ہونے والے امتحانات کے خلاف احتجاج شروع کر دیا ہے۔ بھوپال کے ساتھ صوبہ کے مختلف اضلاع میں ہونے والے احتجاج کے بعد حکومت نے صوبہ کی 7 یونیورسٹیوں میں ہونے والے یوجی اور پی جی کے امتحان کو ملتوی کردیا ہے۔
First published: Jun 15, 2020 10:36 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading