உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کیوں ہوتا ہے پرائیویٹ پارٹ میں Fungal infection، ماہرین نے بتائی چونکا دینے والی وجہ: جانیں اس کا علاج

    Causes of Fungal infection in Private Parts: خاص طور پر گرمیوں کے موسم میں پرائیویٹ پارٹ Private Parts میں فنگل انفیکشن کا بہت زیادہ امکان ہوتا ہے۔ اگر آپ کو بار بار خارش، جلن یا کوئی اور پریشانی محسوس ہوتی ہے تو اسے نظر انداز نہ کریں۔

    Causes of Fungal infection in Private Parts: خاص طور پر گرمیوں کے موسم میں پرائیویٹ پارٹ Private Parts میں فنگل انفیکشن کا بہت زیادہ امکان ہوتا ہے۔ اگر آپ کو بار بار خارش، جلن یا کوئی اور پریشانی محسوس ہوتی ہے تو اسے نظر انداز نہ کریں۔

    Causes of Fungal infection in Private Parts: خاص طور پر گرمیوں کے موسم میں پرائیویٹ پارٹ Private Parts میں فنگل انفیکشن کا بہت زیادہ امکان ہوتا ہے۔ اگر آپ کو بار بار خارش، جلن یا کوئی اور پریشانی محسوس ہوتی ہے تو اسے نظر انداز نہ کریں۔

    • Share this:
      Causes of Fungal infection in Private Parts: اکثر خواتین کو ان کے پرائیویٹ پارٹ میں کھجلی، جلن، انفیکشن کے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ خواتین کے ساتھ ساتھ مردوں کو بھی یہ مسائل درپیش ہوتے ہیں۔ خاص طور پر گرمیوں کے موسم میں پرائیویٹ پارٹ Private Parts میں فنگل انفیکشن کا بہت زیادہ امکان ہوتا ہے۔ اگر آپ کو بار بار خارش، جلن یا کوئی اور پریشانی محسوس ہوتی ہے تو اسے نظر انداز نہ کریں۔ میڈ لنکس (نئی دہلی) ایم ڈی ڈائریکٹر اور ڈرمیٹولوجسٹ، ڈاکٹر پنکج چترویدی کہتے ہیں کہ پرائیویٹ پارٹ حصے میں سب سے زیادہ عام فنگس انفیکشن Candida ہے۔ یہ فنگل انفیکشن خواتین میں سب سے زیادہ عام ہے۔ اسے وولوو کینڈیڈیسیس (vulvo vaginal candidiasis) کہا جاتا ہے۔ یہ خواتین میں عام ہے لیکن مردوں میں بھی پایا جاتا ہے۔ خواتین میں جو علامات نظر آتی ہیں وہ ہیں دہی جیسا پانی پرائیویٹ پارٹ سے نکلنا، خارش، وجائینا vagina کے ہونٹوں میں سرخی، جلن وغیرہ(The symptoms that are seen in women are curd discharge, itching, redness in the lips of the vagina, irritation etc)۔ مردوں میں، کینڈیڈا ان لوگوں میں زیادہ عام ہے جو پری ذیابیطس یا ذیابیطس pre-diabetic or diabetic کے مریض ہوتے ہیں۔ اس میں عضو تناسل کی اگلی جلد پر دہی جیسا پانی اور سرخی ہوتی ہے۔

      کینڈیڈا انفیکشن Candida infection کیوں ہوتا ہے؟
      ڈاکٹر چترویدی مزید بتاتے ہیں، کینڈیڈا ہمارے جسم میں عام طور پر رہتا ہے اور جب بھی پرائیویٹ پارٹ کے حصے کی پی ایچ ویلیو میں تبدیلی آتی ہے یا پرائیویٹ پارٹ کو صاف نہیں کرتے ہیں، جن کی قوت مدافعت کمزور ہوتی ہے، ذیابیطس یا ایچ آئی وی کی وجہ سے یہ مسئلہ ہوتا ہے۔ ایسے مریضوں میں کینڈیڈا انفیکشن زیادہ عام ہے۔ یہ سب سے عام فنگل انفیکشن ہے۔

      ٹینیا کرورس tinea cruris کو نظر انداز نہ کریں۔
      پرائیویٹ پارٹ میں دوسرا سب سے عام فنگس انفیکشن ٹینیا کرورس tinea cruris ہے۔ یہ ایک فنگل انفیکشن ہے، جسے عام طور پر داد یا رِنگ وارم بھی کہا جاتا ہے۔ اس میں، تھائی والے حصے (groin area) میں انگوٹھی کی شکل میں سرخ رنگ کے دانے ہوتے ہیں۔ پچھلے پانچ سالوں میں اس کے کیسز میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور اس کی وجہ اینٹی فنگل ریجسٹینس ہے۔ جو دوائیں دس سال پہلے اس پر کام کرتی تھیں، آج وہ دوائیں اتنی کارآمد نہیں ہیں۔ ہندوستان میں اس مسئلے کے بڑھنے کی وجوہات سے متعلق بھی کئی مظالعے کئے گئے ہیں۔ اس کے بڑھنے کی سب سے بڑی وجہ ٹینیا کرورس کا مریضوں کا خود سے علاج کرنا ہے۔ اپنی ادویات، کریمیں کسی بھی میڈیکل اسٹور سے لے کر استعمال کرنا۔ ایسی حالت میں بہت سے معاملات میں یہ اتنا بڑھ جاتا ہے کہ strong دوائیں دینے سے ہی یہ کم ہو تا لیکن جڑ سے ختم نہیں ہوتا۔

      پرائیویٹ پارٹ میں فنگل انفیکشن کا علاج
      کسی کوائلیفائیڈ ڈرمیٹولوجسٹ کے ذریعہ اسے دکھایا جانا چاہئے۔ مکمل طور پر ڈائگنوسس کر کے ہی اسے جڑ سے ختم کیا جا سکتا ہے۔ مناسب علاج صرف اس صورت میں کام کرے گا جب مکمل طور پر ڈائگنوسس ہو۔ اس کا علاج کریم، اوورل میڈیسن کے ذریعے کیا جاتا ہے۔ دواؤں کا صحیح کورس مکمل کرنا بہت ضروری ہے۔ درمیان میں کوئی کورس نہ چھوڑیں۔ بار بار فنگل انفیکشن ہونے کی صورت میں ڈاکٹر اس کی وجوہات بھی تلاش کرتے ہیں، جن کی وجہ سے جسم کی قوت مدافعت کمزور ہوجاتی ہے، جیسے ذیابیطس، ایچ آئی وی انفیکشن، جسم میں زنک کی کمی وغیرہ۔ اگر آپ کو ذیابیطس ہے اور بار بار صرف فنگل انفیکشن، Candida کے لیے علاج کیا جا رہا ہے، تو یہ کام نہیں کرے گا۔ اس کے لیے ضروری ہے کہ ذیابیطس کا علاج بھی کیا جائے ورنہ فنگل انفیکشن کا ہر علاج ناکام ہو جائے گا۔ اگر مناسب علاج کیا جائے تو Candida کے مسئلے پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

      ان باتوں کا رکھنا ہوگا خاص دھیان
      بار بار خارش نہ کریں ورنہ پرائیویٹ پارٹ کی جلد میں ایگزیما، سرخ دانے ہو سکتے ہیں۔
      پرائیویٹ پارٹ کے حصے کی صفائی کا پورا خیال رکھیں۔
      اس حصے کو جتنا ہو سکے خشک رکھیں۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: