உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    حجاب پر پابندی کیس: سپریم کورٹ کا تبصرہ: آپ اس کو غیرمنطقی انجام تک نہیں لے جاسکتے

    حجاب پر پابندی کیس: سپریم کورٹ کا تبصرہ: آپ اس کو غیرمنطقی انجام تک نہیں لے جاسکتے

    حجاب پر پابندی کیس: سپریم کورٹ کا تبصرہ: آپ اس کو غیرمنطقی انجام تک نہیں لے جاسکتے

    Karnataka Hijab Case : سپریم کورٹ میں دو ججوں کی بینچ حجاب پر پابندی سے وابستہ معاملہ میں کرناٹک ہائی کورٹ کے ایک فیصلہ کے خلاف داخل کی گئی الگ الگ عرضیوں کی سماعت کررہی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Delhi | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : سپریم کورٹ میں دو ججوں کی بینچ حجاب پر پابندی سے وابستہ معاملہ میں کرناٹک ہائی کورٹ کے ایک فیصلہ کے خلاف داخل کی گئی الگ الگ عرضیوں کی سماعت کررہی ہے ۔ یہ کیس کرناٹک میں اسکولی یونیفارم کے ساتھ سر پر پہنے جانے والے حجاب ( اسکارف) پر پابندی سے وابستہ ہے ۔ اس میں وکیل نے دلیل پیش کرتے ہوئے اس کو اظہار رائے کی آزادی کا حصہ بتایا تو جسٹس ہیمنت گپتا اور جسٹس سودھانشو دھولیا کی بینچ نے بھی سوالات پوچھے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: وزارت تعلیم کی PM SHRI اسکیم کو مودی کابینہ کی منظوری، 14500 اسکولوں کی بدلے گی صورت


      انہوں نے کہا کہ آپ اس کو غیر منطقی انجام تک نہیں لے جاسکتے ۔ ڈریس کے حقوق میں کپڑے پہننے کا حق بھی شامل ہوگا؟ جسٹس گپتا نے پوچھا کہ اگر کوئی شلوار قمیض پہننا چاہتا ہے یا لڑکے دھونی پہننا چاہتے ہیں تو کیا اس کی بھی اجازت دیدی جائے ؟

       

      یہ بھی پڑھئے: شرد پوار سے ملاقات کے بعد نتیش کمار کا بڑا بیان، کہا-سب مل کر طے کریں گے PM امیدوار


      انہوں نے مزید کہا کہ ابھی آپ رائٹ ٹو ڈریس کی بات کررہے ہیں تو بعد میں آپ رائٹ ٹو ان ڈریس کی بات بھی کریں گے ، یہ پیچیدہ سوال ہے ۔ اس معاملہ میں کل 24 عرضیوں پر سماعت ہورہی ہے ۔ کرناٹک ہائی کورٹ میں حجاب پر پابندی کو چیلنج کرنے والی چھ مسلم طالبات نے بھی عرضی داخل کی ہے ۔

      بتادیں کہ اس کیس سماعت کے دوران عدالت نے کہا تھا کہ ہم کرناٹک حجاب پابندی معاملہ کا جائزہ لینے کیلئے تیار ہیں ۔ کورٹ نے اس پر کرناٹک حکومت کو نوٹس بھی جاری کرکے جواب طلب کیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: