உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملیے ہماچل کی پہلی خاتون ایمبولنس ڈرائیور نینسی سے، جس نے 22 سال کی عمر میں تھامی اسٹیئرنگ

    ہماچل کی پہلی خاتون ایمبولینس ڈرائیور نینسی۔

    ہماچل کی پہلی خاتون ایمبولینس ڈرائیور نینسی۔

    ضلع انچارج ایشان رانا اور میڈسوان تنظیم کے اعلیٰ عہدیداروں نے نینسی کو اس کے بہتر مستقبل کے لئے مبارکباد اور نیک تمنائیں پیش کی ہیں اور ایمبولنس کی چابی سونپی۔

    • Share this:
      کانگڑا: آج کے دور میں خواتین کسی بھی شعبے میں مردوں سے پیچھے نہیں ہے اور اسی بات کو سچ کرتے ہوئے ہمیرپور کی 22 سالہ نینسی کٹنوریا نے نورپور میں ایمبولنس ڈرائیور (Ambulance Driver) کے طورپر اپنا کام سنبھال لیا ہے۔ نینسی ہماچل روڈ ٹرانسپورٹ (Himachal Road Transport) سے تربیت یافتہ ہے اور اب ریاست کی پہلی ایمبولنس ڈرائیور کے طور پر اپنی سروس 102 ایمبولنس نورپور میں دیں گی۔

      کانگڑا کے ایمبولنس ضلع انچارج ایشان رانا نے بتایا کہ حال ہی میں محکمہ صحت نے ریاست بھر میں جاری 108 اور 102 ایمبولنس کی انتظام بہار کے میڈسوان تنظیم کو سونپا ہے۔ تنظیم نے سابق ملازمین کے ساتھ ساتھ نئی صلاحیتوں کو بھی ایمبولنس سے جڑنے کا موقع دیا ہے۔ اسی کے تحت نینسی کی سخت محنت اور لگن کو دیکھتے ہوئے انہیں ڈرائیور کے عہدے پر جوائننگ دی گئی ہے۔

      وہیں نینسی کے مطابق اس کا بچپن سے ہی خواب تھا کہ وہ ایک بہترین ڈرائیور بن کر ریاست کے لوگوں کی خدمت کرے۔ آج وہ ایمبولنس میں منتخب ہو کر اپنے خواب کو پورا کرنے جارہی ہے اور بہت پرتجسس ہے۔ ضلع انچارج ایشان رانا اور میڈسوان تنظیم کے اعلیٰ عہدیداروں نے نینسی کو اس کے بہتر مستقبل کے لئے مبارکباد اور نیک تمنائیں پیش کی ہیں اور ایمبولنس کی چابی سونپی۔

      انہوں نے کہا کہ نینسی نے ایمبولنس ڈرائیور بن کر یہ ثابت کردیا ہے کہ ریاست کی بیٹیاں کسی بھی معاملے میں مردوں سے کم نہیں ہیں۔ اس سے پہلے ہم لوگ اکثر یہ سنتے اور دیکھتے تھے کہ ہماچل پردیش اسکول تعلیمی بورڈ کی سالانہ امتحانات میں ریاست کی بیٹیاں آگے رہیں، اس کے علاوہ دیگر مقابلہ جات میں بھی بیٹیاں آگے رہیں ہیں، لیکن اب ایمرجنسی ہیلتھ سروسس میں بھی ریاست کی بیٹیوں نے دبدبہ بنانا شروع کردیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: