ہری دوار : 22 سال سے روزہ رکھ کرہندومسلم یکجہتی کے مثال بن گئے ہیں رتن لال

ہری دوار : ایک طرف جہاں ملک میں بہت سے لوگ مذہب اور ذات پات کے نام پر ایک دوسرے کو لڑانے کی کوشش کرتے رہتے ہیں ، وہیں کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو اصل معنوں میں ہندوستان کی گنگاجمنی تہذیب اور ہندومسلم یکجہتی کے عکا س ہیں۔

Jul 01, 2016 01:24 PM IST | Updated on: Jul 01, 2016 01:24 PM IST
ہری دوار : 22 سال سے روزہ رکھ کرہندومسلم یکجہتی کے مثال بن گئے ہیں رتن لال

ہری دوار : ایک طرف جہاں ملک میں بہت سے لوگ مذہب اور ذات پات کے نام پر ایک دوسرے کو لڑانے کی کوشش کرتے رہتے ہیں ، وہیں کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو اصل معنوں میں ہندوستان کی گنگاجمنی تہذیب  اور ہندومسلم یکجہتی کے عکا س ہیں۔ انہیں میں سے ایک ہیں ہری دوار کے رہنے والے رتن لال ، جو گزشتہ 22 برسوں سے رمضان کا مکمل روزہ رکھ کر ایک نئی مثال قائم کررہے ہیں۔

ہری دوار ضلع کے لکسر تحصیل کے بسیڑي گاؤں میں رہنے والے رتن لال ہندو مسلم بھائی چارگی کی ایک نایاب مثال ہیں۔ خیال رہے کہ رتن لال اسی لڈھورا علاقہ کے رہنے والے ہیں، جہاں پر گزشتہ دنوں سیاست نے ہندو اورمسلمانوں کو آپس میں لڑانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی تھی۔

ووٹ کی خاطر باہمی تنازع کو فرقہ وارانہ شکل دینے والے سیاستدانوں کو اسی لڈھورا علاقہ کے بسیڑي گاؤں میں رہنے والے رتن لال آئینہ دکھا رہے ہیں۔ رتن لال ہندو ہونے کے باوجود گزشتہ 22 سال سے رمضان کا پورا روزہ رکھ رہے ہیں۔ رتن لال جہاں گیتا اور قرآن میں فرق نہیں مانتے ہیں وہیں ان کی نظروں میں بھگوان اور اللہ بھی ایک ہی ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ 22 سال قبل رتن لال اچانک بیمار ہو گئے تھے، تب انہوں نے روزہ رکھنا شروع کیا تھا۔ اس کے بعد سے وہ مسلسل رمضان کے مہینے میں روزے رکھتے آ رہے ہیں۔ رتن لال کا کہنا ہے کہ وہ رمضان کے روزہ کے ساتھ ساتھ ماں درگا کے نوراتری اور کرشن جنم اشٹمي کے برت بھی مکمل عقیدت کے ساتھ رکھتے ہیں۔ روزہ رکھنے کی وجہ سے ابتدا میں کنبہ نے تھوڑا اعتراض کیا ، تاہم بعد میں سب ٹھیک ہو گیا۔

Loading...

لکسر کے سینئر صحافی جسویر سنگھ کا کہنا ہےکہ رتن لال کبیر پنتھی ہیں۔ علاقہ میں ان کو ہندو مسلم اتحاد کی علامت کے طور پر جانا جاتا ہے۔ دراصل رتن لال انسانیت کے مذہب کی نمائندگی کرتے ہیں۔ عام آدمی جس کے لئے مذہب ایمان کا موضوع ہے ، نہ کہ لڑائی جھگڑے کا ۔ رتن لال اس عام آدمی کی نمائندگی کر رہے ہیں ، جس کے لئے مذہب کے نام پر آگ لگانے سے قبل کنبہ کے ارکان کے پیٹ کی آگ بجھانے کی ذمہ داری ہوتی ہے۔

Loading...