உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ویڈیو : کرناٹک میں ایک بھکاری کی آخری رسوم میں جمع ہوئے ہزاروں لوگ، جانئے کیا تھی وجہ

    ویڈیو : کرناٹک میں ایک بھکاری کی آخری رسوم میں جمع ہوئے ہزاروں لوگ، جانئے کیا تھی وجہ ۔ تصویر ؛ ویڈیو گریب ٹویٹر ۔

    ویڈیو : کرناٹک میں ایک بھکاری کی آخری رسوم میں جمع ہوئے ہزاروں لوگ، جانئے کیا تھی وجہ ۔ تصویر ؛ ویڈیو گریب ٹویٹر ۔

    Thousands gather for last rites of beggar: کرناٹک کے وجے نگر ضلع میں ایک ذہنی طور پر معذور بھکاری کی آخری رسوم میں ہزاروں لوگ شامل ہوئے ۔ اس واقعہ کا ویڈیو سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہورہا ہے ۔

    • Share this:
      بنگلورو : کرناٹک کے وجے نگر ضلع میں ایک ذہنی طور پر معذور بھکاری کی آخری رسوم میں ہزاروں لوگ شامل ہوئے ۔ اس واقعہ کا ویڈیو سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہورہا ہے ۔ سوشل میڈیا پر وجے نگر کے لوگوں کے جذبات کی تعریف کی جارہی ہے ۔ ایک میڈیا رپوٹ کے مطابق اس بھکاری کا نام بسو تھا ۔ اس کو لوگ ہچچا بسیا کہہ کر بھی پکارتے تھے ۔ ہچچا کسی بھی شخص سے ایک روپے سے زیادہ بھیک نہیں لیتا تھا ، بھلے ہی اس کو زیادہ پیسے دئے جارہے ہوں ۔

      ہچچا کی موت گزشتہ ہفتہ کو ایک سڑک حادثہ میں ہوگئی تھی ۔ 12 نومبر کو ہچچا کو ایک بس نے ٹکر ماردی تھی ۔ زخمی حالت میں اس کو اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ، جہاں اس کی موت ہوگئی ۔ ایک مقامی شخص کے مطابق ہچچا کی موت کے بعد کئی تنظیموں ، دکاندار اور لوگوں نے آگے آکر آخری رسوم کیلئے پیسے جمع کئے اور پھر ہچچا کی آخری رسوم میں ہزاروں کی بھیڑ امڈ پڑی ۔


      ایک مقامی شخص کے مطابق شہر کے لوگوں کا ہچچا کے ساتھ ایک خاص لگاو تھا اور لوگ مانتے تھے کہ وہ دوسروں کیلئے خوش قسمت ہے ۔ ہچچا لوگوں کو اپپاجی کہہ پکارتا تھا ، جس کا کنڑ میں مطلب ہوتا ہے باپ ۔ لوگ اس سے روحانی جذبہ کے ساتھ ملتے تھے اور پیسے بھی دیتے تھے ۔ اگر کوئی اس کو زیادہ پیسہ دیتا تھا تو وہ واپس کردیتا تھا اور صرف ایک روپے اپنے پاس رکھتا تھا ۔

      ہچچا کو نہ صرف شہر کے لوگ اچھے سے جانتے تھے بلکہ بڑے سیاسی لوگ بھی اس کو پہچانتے تھے ۔ اس کو پہچاننے والے لوگوں میں ریاست کے سابق نائب وزیر اعلی ایم پی پرکاش اور سابق وزیر پرمیشور نائیک کا بھی نام شامل ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: