ہوم » نیوز » عالمی منظر

Humanity First:پاکستانی عوام کی جانب سے ہندوستان کے ساتھ اظہاریکجہتی، کووڈ۔19بحران کے خلاف لڑائی میں مددکی پیشکش!

کورونا سے متاثرہ مریضوں کے لیے ادویات، آکسیجن اور اسپتال میں بستروں کی دستیابی سے متعلق ان کے اہل خانہ کی مدد کرے۔ یہ اور اس طرح کے جذبات ہندوستانی عوام کے ساتھ ساتھ پاکستان کے عام شہریوں میں بھی نظر آرہے ہیں اور وہ ٹوئٹر پر ہندوستان سے یکجہتی، ہمدردی اور مدد سے متعلق ٹوئٹس بھی کررہے ہیں۔

  • Share this:
Humanity First:پاکستانی عوام کی جانب سے ہندوستان کے ساتھ اظہاریکجہتی، کووڈ۔19بحران کے خلاف لڑائی میں مددکی پیشکش!
ہندوستان اور پاکستان

ہندوستان میں عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) کی دوسری لہر کے ساتھ ہی کورونا کے کیسوں میں شدت سے اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ وہیں پورے ملک میں آکسیجن کی قلت اور اسپتال میں بستروں کی عدم دستیابی کی وجہ سے اموات کی بھی خبریں آرہی ہیں۔


اس وقت ہندوستان ایک غیر متوقع طبی ہنگامی صورتحال (unprecedented medical emergency) کا مقابلہ کررہا ہے، جس سے صحت کے بحران کی بدترین تصویر ابھر کر سامنے آرہی ہے۔


اس سب کے باوجود انسانیت کی بنیاد پر ایک دوسرے کی مدد اور ضروری اشیا کی فراہمی کا جذبہ بھی پورے عروج پر نظر آرہا ہے۔ تاکہ ایک دوسرے کے ساتھ مل کر کام کیا جائے اور زیادہ سے زیادہ مریضوں کی مدد کی جاسکے اور کورونا بحران کا جلد سے جلد خاتمہ ہوجائے۔


کورونا سے متاثرہ مریضوں کے لیے ادویات، آکسیجن اور اسپتال میں بستروں کی دستیابی سے متعلق ان کے اہل خانہ کی مدد کح جائے۔ یہ اور اس طرح کے جذبات ہندوستانی عوام کے ساتھ ساتھ پاکستان کے عام شہریوں میں بھی نظر آرہے ہیں اور وہ ٹوئٹر پر ہندوستان سے یکجہتی، ہمدردی اور مدد سے متعلق ٹوئٹس بھی کررہے ہیں۔

پاکستانی وزیراعظم عمران خان (Imran Khan) نے ٹوئٹ کیا ہے کہ ’’میں ہندوستانی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنا چاہتا ہوں کیونکہ وہ کورونا کی ایک خطرناک لہر سے لڑ رہے ہیں۔ ہماری طرف سے جلد صحت یابی کی دعا ہمارے پڑوس اور دنیا کے وبائی امراض میں مبتلا تمام لوگوں کے لئے ہے۔ ہمیں مل کر انسانیت کا سامنا کرنے والے اس عالمی چیلنج کا مقابلہ کرنا چاہئے‘‘۔


سرحدی تفریق اور دو الگ الگ ملک ہونے کے باوجود بھی پاکستان کے عوام نے ہندوستان میں کورونا سے لڑرہے مریضوں، ان کے افراد خاندان اور کوونا سے وفات شدہ افراد کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا اور انھیں تعزیت بھی پیش کررہے ہیں۔ انھوں نے کووڈ۔19 کی دوسری لہر کی شدت سے نکلنے کے لئے دعاووں اور نیک تمناؤں کی پیش کش کی ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان کی سب سے بڑی فلاحی و رفاہی تنظیم ایدھی فاؤنڈیشن (Edhi Foundation) نے وزیراعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کو خط لکھ کر مدد کی پیش کش کی ہے۔

پاکستان میں ایدھی فاؤنڈیشن کا آغاز رفاہی کاموں کے لیے مشہور اور فلینتراپسٹ عبد الستار ایدھی مرحوم نے کیا تھا۔ ایدھی فاؤنڈیشن نے جمعہ کو وزیراعظم مودی کو خط لکھا اور اس بحران پر قابو پانے کے لئے ہندوستان کو 50 ایمبولینسوں کی پیش کش کی۔

اس کے علاوہ پڑوسی ملک سے تعلق رکھنے والے ٹوئٹر صارفین نے پاکستان اسٹانڈ ویتھ انڈیا (#PakistanstandswithIndia) بھی ٹرینڈ کر رہا ہے۔ انھوں نے کورونا وائرس میں مبتلا ہندوستانیوں کی صحت و عافیت کے لیے ایک ساتھ ریلی نکالی۔ انہوں نے اپنے حکام سے بھی اپیل کی کہ وہ ہر طرح سے مدد فراہم کریں۔








ہندوستانیوں نے بھی ٹویٹس کا نوٹ لیا اور ان کے خوبصورت اشاروں پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ ہفتے کے روز پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے ہندوستان میں عوام سے یکجہتی کا اظہار کیا اور کہا کہ دونوں ملکوں کو مل کر انسانیت کا سامنا کرنے والے عالمی چیلینج کا مقابلہ کرنا ہوگا۔

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھی متاثرہ خاندانوں سے دلی ہمدردی کا اظہار کیا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 25, 2021 09:52 AM IST