ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات کا اعلان، انتخابات کے لئے نوٹیفکیشن جاری، میعاد ختم ہونے سے پہلے الیکشن کے اعلان پر کانگریس اور بی جے پی کا احتجاج

گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات کیلئے نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے۔ تلنگانہ اسٹیٹ الیکشن کمشنر سی پارتھا سارتی نے اس سلسلہ میں پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئےکہا کہ یکم دسمبر کو جی ایچ ایم سی انتخابات ہوں گے۔ 4دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔

  • Share this:
بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات کا اعلان، انتخابات کے لئے نوٹیفکیشن جاری، میعاد ختم ہونے سے پہلے الیکشن کے اعلان پر کانگریس اور بی جے پی کا احتجاج
بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات کا اعلان، انتخابات کے لئے نوٹیفکیشن جاری

حیدرآباد: گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات کیلئے نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ تلنگانہ اسٹیٹ الیکشن کمشنر سی پارتھا سارتی نے اس سلسلہ میں پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئے کہا کہ یکم دسمبر کو جی ایچ ایم سی انتخابات ہوں گے۔ 4 دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔ 18 دسمبر سے 20 دسمبر تک نامزدگیاں داخل کی جاسکتی ہیں۔ 21 نومبرکو نامزدگیوں کی جانچ ہوگی اور 22 نومبرکو 3بجے تک نامزدگیوں کی واپسی کی تاریخ طے کی گئی ہے۔ پہلے ہی یہ طے تھا کہ بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات بیلٹ باکس سےہوں گے۔ پارتھا سارتی نے یہ بھی اعلان کیا کہ میئرکا عہدہ خاتون امیدوار کیلئے مختص کیا گیا ہے۔


تلنگانہ کے وزیر میونسپل ایڈمنسٹریشن کے تارک راما راؤ نے اکتوبر میں ہی یہ اشارہ دے دیا تھا کہ نومبر کے دوسرے ہفتہ کے بعد بلدیہ حیدرآباد کے الیکشن کا اعلان متوقع ہے، لیکن  ریاست میں اپوزیشن پارٹیاں کانگریس اور بی جے پی اس اعلان سے خوش نہیں ہیں۔ چونکہ موجودہ بلدیہ کے ایوان کی میعاد فروری 2021 تک تھی، اس لئے یہ سمجھا جارہا تھا جنوری یا فروری میں ہی بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات کا اعلان ہوگا۔ جی ایچ ایم سی الکشن کے اعلان کے فوری بعد بی جے پی کے ترجمان  کرشنا ساگر راؤ نے اسے برسراقتدار ٹی آر ایس کی سہولت کے مطابق قرار دیتے ہوئے کہا کہ سنٹرل الکشن کمیشن سے اس اقدام کی شکایت کی جائے گی جبکہ تلنگانہ کانگریس کے ترجمان سید نظام الدین نے بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات کے اعلان کو ٹی آر ایس کی بوکھلاہٹ سے تعبیر کیا۔


تلنگانہ اسٹیٹ الیکشن کمشنر سی پارتھا سارتی نے اس سلسلہ میں پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئے کہا کہ یکم دسمبر کو جی ایچ ایم سی انتخابات ہوں گے۔ 4 دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔ 18 دسمبر سے 20 دسمبر تک نامزدگیاں داخل کی جاسکتی ہیں۔ 21 نومبرکو نامزدگیوں کی جانچ ہوگی اور 22 نومبرکو 3بجے تک نامزدگیوں کی واپسی کی تاریخ طے کی گئی ہے۔
تلنگانہ اسٹیٹ الیکشن کمشنر سی پارتھا سارتی نے اس سلسلہ میں پریس کانفرنس منعقد کرتے ہوئے کہا کہ یکم دسمبر کو جی ایچ ایم سی انتخابات ہوں گے۔ 4 دسمبر کو ووٹوں کی گنتی ہوگی۔ 18 دسمبر سے 20 دسمبر تک نامزدگیاں داخل کی جاسکتی ہیں۔ 21 نومبرکو نامزدگیوں کی جانچ ہوگی اور 22 نومبرکو 3بجے تک نامزدگیوں کی واپسی کی تاریخ طے کی گئی ہے۔


تلنگانہ راشٹر سمیتی کی حلیف مجلس اتحاد المسلمین کو شاید یہ اندازہ ہو گیا تھا کہ کب الکشن کی تاریخ طے ہوگی۔ مجلس اتحاد المسلمین نے 16 نومبر کو ہی پارٹی کے ٹکٹ پر انتخابات میں حصہ لینے کے خواہشمند امیدواروں سے درخواستیں  وصول کرلیں۔ سال 2016 میں منعقدہ بلدیہ حیدرآباد کے انتخابات میں تلنگانہ راشٹریہ سمیتی نے 150 نشستوں میں سے 99 پر کامیابی حاصل کی تھی جبکہ مجلس اتحاد المسلمین نے 44 نشستوں پر کامیابی حاصل کی تھی۔ جبکہ بی جے پی صرف چار اورکانگریس دو پرکامیاب رہی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 17, 2020 06:56 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading