ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بلدیہ حیدرآبا د نے این جی اوزکی طرف سےکھانےکی تقسیم پرلگائی پابندی

گریٹرحیدرآباد میونسپل کارپوریشن کا ماننا ہےکہ اس طرح کھانا حاصل کرنےکیلئے سڑکوں پربھیڑ اکھٹا ہونا خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

  • Share this:
بلدیہ حیدرآبا د نے این جی اوزکی طرف سےکھانےکی تقسیم پرلگائی پابندی
بلدیہ حیدرآبا د نےاین جی اوزکی طرف سےکھانےکی تقسیم پرپابندی عائد کردی ہے۔

حیدرآباد: کورونا وائرس کی وجہ سے ایک کروڑ سے بھی زائد آبادی والےلاک ڈاؤن شہرحیدرآباد میں غریب لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا تھا۔ غرباء کیلئے اس مشکل گھڑی میں غیر سرکاری تنظیموں نے پورے شہر میں کھانےکے پیکٹس کی تقسیم کا عمل شروع کیا، لیکن لاک ڈاؤن کے دو ہفتہ گزرجانےکے بعدگریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے این جی اوزکے اس طرح کام کرنے پر اعتراض ظاہرکیا ہے۔


گریٹرحیدرآباد میونسپل کارپوریشن کا ماننا ہےکہ اس طرح کھانا حاصل کرنےکیلئے سڑکوں پربھیڑ اکھٹا ہونا خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ غیرسرکاری تنظیموں کےجڑے آئیکٹوسٹس کا ماننا ہےکہ اگر وہ جی ایچ ایم سی کےاحکامات کےتحت سڑکوں پر نکل کرکھانےکے پیکٹس تقسیم نہ کریں، تو شہرمیں ہزاروں بےگھر لوگ مشکل میں پڑ جائیں گے۔

بعض تنظمیں سڑکوں پرکھانا تقسیم کرنےکے بجائےان مقامات پرکھانا پہنچا رہے ہیں، جہاں محنت مزدوری کرنے والوں کے عارضی ٹھکانے ہیں۔ ٹولی چوکی فلائی اوور برج کےنیچےکھانےکےپیکٹس تقسیم کرنے والے ایکٹوسٹ شیخ ارشد نے مطالبہ کیاکہ کارپوریشن ان احکامات سے دستبردار ہو جائے، یا پھراین جی اوز پرنگرانی کیلئے اپنےاہل کاروں کو فیلڈ میں روانہ کرے۔

جی ایچ ایم سی شہر بھرمیں کھانےکےاسٹالس قائم کئے ہیں، جہاں مفت کھانا سپلائی کیا جاتا ہے۔ نوجوان سماجی کارکن عثمان محمد خان لاک ڈاؤن کےابتدا سےہی تقریباً 500 بھوکے لوگوں کو روزانہ کھانےکا انتظام کر رہےہیں۔ ان کا ماننا ہےکہ اس مشکل گھڑی میں جی ایچ ایم سی کےساتھ ہی ساتھ این جی اوزکو بھی اپنا کام جاری رکھنےکی ضرورت ہے۔


حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے این جی اوز کے ذریعہ اس طرح کام کرنے پر اعتراض ظاہرکیا ہے۔
حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے این جی اوز کے ذریعہ اس طرح کام کرنے پر اعتراض ظاہرکیا ہے۔


جی ایچ ایم سی نے ایک تجویزیہ پیش کی تھی کہ این جی اوز اپنےپاس جمع ضروری اشیاء کارپوریشن کےحوالہ کریں۔ کارپوریشن چاہتا ہےکہ اس طرح جمع شدہ اناج اور دوسری اشیاء وہ خود اپنی نگرانی میں ضرورت مندوں کے حوالہ کرےگا۔ این جی اوزکو جی ایچ ایم سی کی یہ تجویز قطعی منظور نہیں ہے۔ پرانے شہر حیدرآباد میں فوڈ ڈسٹربیوشن کےحوالہ سے مقبول سماجی کارکن محمد فاروق نے کہاکہ ایک کروڑ سے بھی زائد آبادی والے شہرحیدرآبادکےتمام علاقوں تک بھوکوں کیلئےکھانا پہنچانا جی ایچ ایم سی کے بس کی بات نہیں ہے۔ انہوں نےکارپوریشن  کو مشورہ دیاکہ وہ غیر سرکاری تنظیموں کےکام میں رکا وٹ نہ ڈالیں۔ جی ایچ ایم سی نےلاک ڈاؤن کے دوران غریبوں کوکھانا نہ تقسیم کرنےکے احکامات تو جاری کر دیئے، لیکن سڑکوں اوردوسرے مقامات پرکھانا تقسیم کرنے والوں پر اب تک کوئی کارروائی نہیں کی۔
First published: Apr 06, 2020 01:11 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading