ہوم » نیوز » وطن نامہ

جموں وکشمیر: 2ماہ بعد نیشنل کانفرنس کے وفد کی ڈاکٹرفاروق عبداللہ اورعمرعبداللہ سے ملاقاتیں

فاروق عبداللہ اور عمرعبداللہ سے ملاقات کے بعد دیویندررانا نے میڈیا سے بات چیت کرتےہوئے کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ فاروق عبداللہ اورعمرعبداللہ اچھے ہیں۔ دیویندررانا نے بتایا کہ ریاست میں ہوئیں تبدیلیوں سے انہیں (فاروق اورعمرعبداللہ کو) تکلیف ہوئی۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: 2ماہ بعد نیشنل کانفرنس کے وفد کی ڈاکٹرفاروق عبداللہ اورعمرعبداللہ سے ملاقاتیں
نیشنل کانفرنس کا وفد پارٹی کے صدر داکٹر فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ پہنچا اوران سے ملاقات کی۔(تصویر:نیوز18)۔

جموں کشمیرسےدفعہ370 کی منسوخی کےبعد جموں سے نیشنل کانفرنس کا ایک وفد آج پہلی بار سرینگر پہنچا۔وفد نے سابق وزیراعلیٰ عمرعبداللہ سے ہری نواس گیسٹ ہاؤس میں ملاقات کرنے کے بعد وفد نیشنل کانفرنس کے صدر داکٹر فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ پہنچا اورفاروق عبداللہ سے ملاقات کی۔اس وفد کی قیادت جموں میں نیشنل کانفرنس کےصوبائی صدردیوندرسنگھ رانا کررہے ہیں۔جموں کشمیر انتظامیہ نے اس وفد کوسرینگرآنے اوردونوں لیڈران سے ملاقات کی اجازت دی تھی ۔

اس ملاقات کے بعد، پارٹی کے ترجمان نے بتایاکہ، "اجلاس میں متفقہ طورپرمنظور کی گئی ایک قرارداد میں، نیشنل کانفرنس کے رہنماؤں نے فرقہ وارانہ اتحاد اورہم آہنگی کومستحکم کرنے کے شیر کشمیرشیخ محمدعبداللہ کے خواب کو مستحکم کرنے کا وعدہ کیا۔" ہم آپ کوبتادیں کہ ریاست سے آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد ، تقریبا دو ماہ سے ، 81 سالہ فاروق عبد اللہ سری نگر میں واقع اپنی رہائش گاہ پر نظربند تھے ، جبکہ عمر عبد اللہ کو سرکاری گیسٹ ہاؤس میں نظربند کیا گیا ہے۔ ایسی صورتحال میں جموں صوبہ کے پارٹی صدر دیویندر سنگھ رانا کی قیادت میں پارٹی رہنماؤں کا 15 رکنی وفد فاروق اور عمر سے ملنے سری نگر پہنچا۔ اس ملاقات کے بعد کی تصاویر میں ، فاروق عبداللہ مسکراتے ہوئے نظر آئے ہیں۔

 

  حسنین مسعودی اوراکبرلون نےفاروق عبداللہ سے ملاقات کی ۔ اس موقع پرفاروق عبداللہ لیڈروں کے ہمراہ میڈیا کے سامنے آئے اورمیڈیا نمائندوں کو اشارے کرکے اپنی جانب راغب کیا۔ فاروق عبداللہ اور عمرعبداللہ سے ملاقات کے بعد دیویندررانا نے میڈیا سے بات چیت کرتےہوئے کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ فاروق عبداللہ اورعمرعبداللہ اچھے ہیں۔ دیویندررانا نے بتایا کہ ریاست میں ہوئیں تبدیلیوں سے انہیں (فاروق اورعمرعبداللہ کو) تکلیف ہوئی۔اس موقع پر دیویندررانا نے کہا کہ سیاسی عمل کےآغاز کےلیے قومی دھارےکےلیڈروں کورہا کرناچاہئے۔ انتظامیہ نے دی تھی اجازت جموں وکشمیر انتظامیہ نے اتوار کے روز جموں سے نیشنل کانفرنس کے وفد کودونوں سابق وزراء اعلیٰ سے ملاقات کی اجازت دی تھی۔ نیشنل کانفرنس کے ترجمان مدن منٹو نے کہا ، "صوبائی صدر دیویندر سنگھ رانا اور پارٹی کے سابق ممبران اسمبلی کی قیادت میں ایک وفد اتوار کی صبح جموں سے سرینگرروانہ ہوا۔" نیشنل کانفرنس کے رہنما رانا نے اس سلسلے میں گورنر ستیہ پال ملک سے اجازت طلب کی تھی۔ وادی کے بڑے لیڈر اب بھی ہیں نظربند حکومت نے کشمیر کی بیشتر سیاسی قیادت کونظربندرکھاہے، جن میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کی سربراہ محبوبہ مفتی اور جموں و کشمیر پیپلز کانفرنس کے چیئرمین سجاد لون بھی شامل ہیں،تاکہ آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے خلاف پرتشدد احتجاجی مظاہروں پرقابوپایاجاسکیں۔نیشنل کانفرنس کے ترجمان منٹو نے بتایا کہ پارٹی کے دونوں اعلی رہنماؤں سے ملاقات کا فیصلہ 2 دن قبل صوبہ جموں کے سینئر عہدیداروں اور ضلعی صدور کی ایک میٹنگ میں لیا گیا تھا۔
First published: Oct 06, 2019 02:10 PM IST