کے سی آر حکومت اردو اساتذہ کی خالی اسامیوں کو ڈی ریزرو کرنے کے لیے کررہی ہے اقدامات

تلنگانہ میں کے سی آر حکومت نے اردو اساتذہ کی خالی اسامیوں کوڈی ریزروکرتے ہوئے بھرتیاں کرنے کے عمل میں تیزی لانے کا اشارہ دیاہے

Sep 16, 2019 11:48 PM IST | Updated on: Sep 17, 2019 12:54 AM IST
کے سی آر حکومت اردو اساتذہ کی خالی اسامیوں کو ڈی ریزرو کرنے کے لیے کررہی ہے اقدامات

تلنگانہ کے وزیراعلیٰ چندر شیکھر راو: فائل فوٹو

تلنگانہ میں کے سی آر حکومت نے اردو اساتذہ کی خالی اسامیوں کوڈی ریزروکرتے ہوئے بھرتیاں کرنے کے عمل میں تیزی لانے کا اشارہ دیاہے۔ حال ہی میں اس سلسلہ میں تلنگانہ اسمبلی کے بجٹ سیسشن میں مجلس اتحادالمسلمین کے ارکان اسمبلی معظم خان اور جعفرحسین معراج کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے حکومت نے کہا کہ اس سلسلہ میں تلنگانہ کی وزیر تعلیم سبیتا اندراریڈی کی جانب سے ایک جائزہ میٹنگ طلب کی جائیگی۔ معظم خان کی جانب سے اس مسئلہ پرسوال کیے جانے پراتوار کے روز وزیراعلیٰ کے چندراشیکھرراؤ نے کہا کہ تلنگانہ حکومت اردو میڈیم اسکولوں میں اساتذہ کی تقرری کے متعلق مسائل کا جائزہ لینے کے بعد کوئی فیصلہ کریگی۔ کے سی آر نے ایوان کو بتایا کہ اس سلسلہ میں جلدہی وزیرتعلیم کی جانب سے اجلاس طلب کیاجائیگا۔وزیراعلیٰ نے اس اجلاس میں مجلس اتحادالمسلمین کے ارکان کومدعو کرنے کا یقین دلایاہے۔ ایوان اسمبلی میں وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤ کے اس اعلان کے بعد ریاست بھر میں اُردوٹرینڈ ٹیچرس میں خوشی کی لہر دیکھی جارہی ہے۔ٹرینڈ ٹیچرس کا کہناہے کہ تلنگانہ حکومت کی جانب سے اس سلسلہ میں جلدہی کوئی پیشرفت کی جانی چاہیے تاکہ آئندہ تعلیم سال کے آغاز سے پہلے ہی اردو میڈیم اسکولوں میں خالی اسامیوں ڈی ریزرو کرکے بھرتیاں کی جاسکیں۔امیدواروں کا کہناہے کہ انہیں امید ہے کہ اردوزبان میں بات کرنے والے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤ اُردوٹرینڈ ٹیچرس کے مسائل کو حل کرتے ہوئے اساتذہ کی بھرتیاں کرینگے۔ تلنگانہ اسٹیٹ اُردوٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن کے نمائندوں نے کے سی آر حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ٹیچرس ریکروٹمنٹ ٹیسٹ2017میں اردو میڈیم کی خالی 558اسامیوں کو ڈی ریزرو کرتے ہوئے فی الفورتقررات عمل میں لائے جو کہ ایس سی، ایس ٹی و بی سی طبقات کے طلبہ کی عدم موجودگی کے سبب روسٹر سسٹم کی نذر ہوتے ہوئےاب بھی خالی ہیں ۔ اسوسی ایشن کے صدرمحمد معیزالدین، جنرل سکریٹری محمد قمر حسین و رکن محمد عابد علی و دیگر نے اس خصوص میں ایک بیان جاری کرتے ہوئے بتایاکہ ریاستی حکومت نے سال 2017کے دوران جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے ذریعہ اردومیڈیم کی جملہ 900اسامیوں کو خالی قراردیا تھا اوربعد امتحان ونتائج ان میں سے صرف342خالی پر تقررات عمل میں لائے گئے ہیں۔ تلنگانہ میں خالی اساتذہ کی اسامیوں کی تفصیل تلنگانہ میں خالی اساتذہ کی اسامیوں کی تفصیل مابقی 558اردومیڈیم اساتذہ کی اسامیوں پرتلنگانہ پبلک سروس کمیشن نے اہل امیدواران کے دستیاب نہ ہونے کے سبب تقررات عمل میں نہیں لائے جبکہ یہ حقیقت ہے کہ اردومیڈیم سے ایس سی،ایس ٹی وبی سی طبقات کے طلباء تعلیم حاصل نہیں کرتے لہذا حکومت کوچاہئے کہ وہ ان مخلوعہ جائیدادوں پر دستیاب اردو میڈیم امیدواروں کے ذریعہ میرٹ اساس پر تقررات عمل میں لائے۔ انھوں نے بتایا کہ ماضی میں سال 1996,1998,2001,2002,2006کے ڈی ایس سی کے موقع پر روسٹرسسٹم کو برخواست کرتے ہوئے میرٹ اساس پر دستیاب امیدواروں کے ذریعہ تقررات عمل میں لائے گئے تھے۔ تلنگانہ حکومت کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اردو میڈیم مدارس کے معیار میں مزید اضافہ و اردو اساتذہ کی قلت کو دور کرنے کی غرض سے فی الفور رتلنگانہ اسٹیٹ سب آرڈنیٹ سرویس رولس 1996میں درج شدہ رول22(2) (ایچ )کے ذریعہ روسٹرسسٹم کو برخواست کرے اور میرٹ اساس پردستیاب امیدواران کے ذریعہ تقررات عمل میں لائے۔ ذمہ داران نے یہ بھی بتایا کہ اس خصوص میں مختلف سطحوں پر بارہا نمائندگیاں کی گئی ہیں۔ 9نومبر2017کواسمبلی میں اس مسئلہ کو اٹھائے جانے کے بعد وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراؤنے اسی دن اسمبلی میں یہ اعلان کیا تھا کہ وہ اردو میڈیم کی تمام 900جائیدادوں پر بھرتی کو یقینی بنائیں گے۔ تلنگانہ اسٹیٹ اُردوٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن کی جانب سے پیش کردہ یادداشت تلنگانہ اسٹیٹ اُردوٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن کی جانب سے پیش کردہ یادداشت اب جبکہ اردو میڈیم اساتذہ کی جائیدادوں پر تقررات عمل میں آچکے ہیں لہذا حکومت کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ مابقی خالی 558اسامیوں کو ڈی ریزرو کرتے ہوئے تقررات عمل میں لائیں۔ اس موقع پراردو ٹرینڈ ٹیچرس اسوسی ایشن کے قائدین نے اردودوست احباب، قائدین، ملی و سماجی تنظیموں، انجمنوں، اساتذہ تنظیموں کے ذمہ داران سے پر زور اپیل کی ہے کہ وہ اردو جائیدادوں پر تھوپے جارہے روسٹر سسٹم کو برخواست کرنے کے لئے اپنی جانب سے حتی المقدورکوشش کریں تاکہ جاریہ اسمبلی سیشن کے دوران اس مسئلہ کو حل نکل آئے اور اردو میڈیم مدارس میں اساتذہ کی قلت دور ہوسکے اور اس کے ذریعہ اردو کی آبیاری واردو کے چلن کو عام کر نے میں مدد مل سکے نیز ان تقررات کے ذریعہ558بیروزگار نوجوانوں کو روزگار میسر ہوسکے۔

Loading...

Loading...