لوک سبھا: جموں وکشمیرمیں پاکستان کی جانب سے کی جارہی یہ سازش، کشن ریڈی کا بیان

وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ 5 اگست کے بعد جموں کشمیر میں دہشت گرد انہ حملوں میں کمی آئی ہے ۔

Dec 03, 2019 05:35 PM IST | Updated on: Dec 03, 2019 05:35 PM IST
لوک سبھا: جموں وکشمیرمیں پاکستان کی جانب سے کی جارہی یہ سازش، کشن ریڈی کا بیان

فائل فوٹو

لوک سبھا میں وزارت داخلہ نے جموں کشمیرمیں دہشت گردی واقعات کے حوالے سے بیان دیا ہے۔وزیر مملکت داخلہ جی کشن ریڈی نے کہا کہ 5 اگست کے بعد جموں کشمیر میں دہشت گردی کے مختلف واقعات میں 19 افراد مارے گئے ہیں۔ وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ 5 اگست کے بعد جموں کشمیر میں دہشت گرد انہ حملوں میں کمی آئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 5 اگست سے27 نومبر کے درمیان دہشت گردی کے 28 واقعات پیش آئے ہیں۔دوسری جانب سرحد پار سے دراندازی کےمعاملوں میں کافی اضافہ ہواہے۔

Loading...

جی کشن ریڈی نے کہا کہ رواں سال 114 مرتبہ دراندازی کی کوشش کی گئی ۔ وزارت داخلہ نے یہ بھی کہا کہ 2019 میں اب تک 157 دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ جموں کشمیرمیں حالیہ پابندیوں کے تناظرمیں وہاں کی معیشت کوہوئے نقصانات کےتعلق سے سوال پر وزارت داخلہ نے کہا کہ حکومت کواس معاملے میں جموں کشمیراورلداخ انتظامیہ سے کوئی رپورٹ موصول نہیں ہوئی ہے۔  

وہیں لداخ کو آئین ہند کےچھٹویں شیڈول میں شامل کرنے کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے حکومت نے کہا کہ نیشنل کمیشن برائے شیڈول ٹرائبس نے لداخ کو چھٹویں شیڈول میں شامل کرنے کی سفارش کی ہے تاہم جموں کشمیر تنظیم جدید قانون کے تحت نئی یونین ٹریٹری میں خودمختاری پہاڑی کونسل کا نفاذ برقرار رہے گا اوراس کونسل کو بھی چھٹویں شیڈول کے مماثل اختیارات حاصل ہیں۔

Loading...