ہوم » نیوز » وطن نامہ

ملک کی آزادی میں خواتین نے بھی بڑھ چڑھ کر لیا تھا حصہ ، بیگم حضرت محل کا نام بھی سنہرے حرفوں میں لکھا گیا

بیگم حضرت محل جنہیں اودھ کی آن بان شان مانا جاتا یے ۔ نواب واجد علی شاہ کی اہلیہ بیگم حضرت محل نے انگریزوں کے خلاف اپنی جنگ میں انگرزوں کو بھی حیران کردیا ۔

  • Share this:
ملک کی آزادی میں خواتین نے بھی بڑھ چڑھ کر لیا تھا حصہ ، بیگم حضرت محل کا نام بھی سنہرے حرفوں میں لکھا گیا
ملک کی آزادی میں خواتین نے بھی بڑھ چڑھ کر لیا تھا حصہ ، بیگم حضرت محل کا نام بھی سنہرے حرفوں میں لکھا گیا

ہندوستان آزاد ہے اور آج ہم آزاد ہندوستان میں سانس لے رہے ہیں ۔ لیکن اس ہندوستان کو آزادی دلانے میں ہزاروں لوگوں نے اپنی جان و مال کی قربانیاں ہیش کیں ۔ آزادی کی طویل جد وجہد کے بعد مجاہدین آزادی کے سامنے انگریز بے بس ہوٸے اور یہاں سے رخت سفر باندھا ۔ ملک کی آزادی کے لٸے کیا ہندو کیا مسلمان ، سماج کے ہر طبقہ کے لوگوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور وطن کی خاطر آزادی کی لڑاٸی لڑی اور اپنی جانیں قربان کیں ۔ ملک کی آزادی میں خواتین نے بھی اہم کردار ادا کیا ہے ۔ تاریخ کے اوراق خاتون مجاہدین آزادی کے کارناموں سے بھی  بھرے پڑے ہیں ۔ رانی لکشمی باٸی ، سروجنی نایٸڈو ، ارونا آصف علی سمیت بیگم حضرت محل کا نام بھی تاریخ کے اوراق میں سنہرے حرفوں میں لکھا گیا ہے ۔


بیگم حضرت محل جنہیں اودھ کی آن بان شان مانا جاتا یے ۔ نواب واجد علی شاہ کی اہلیہ بیگم حضرت محل نے انگریزوں کے خلاف اپنی جنگ میں انگرزوں کو بھی حیران کردیا ۔ 1857 میں ہوٸی آزادی کی پہلی جنگ میں بیگم حضرت محل نے بھی حصہ لیا اور انگریزوں کے چھکے چھڑا دٸے اور انگریز اودھ پر پر قبضہ کرنے کا خواب پوراکرنے میں ناکام رہے ۔ بیگم حضرت محل آخری لمحے تک اودھ کو بچانے کے لٸے پیش پیش رہیں ۔ اپنی طاقت سے انگریزوں کو سوچنے پر مجبور کردیا کہ اودھ پر قدم جمانا ان کے کٸے آسان نہیں ہوگا ۔


بیگم حضرت محل میدان جنگ میں بھی شریک ہوتی تھیں ۔ اپنے سپاہیوں کا حوصلہ بڑھاتی تھیں ۔ انگریزوں نے جب نواب واجد علی شاہ کو قید کرکے کولکاتہ  لے آئے تو اس وقت بیگم حضرت محل نے اودھ کی کمان سنبھالی ۔ بعد میں وہ نیپال چلی گٸی اور آخری دم تک اودھ کو ازاد کرانے کی جدوجہد میں لگی رہیں ۔ ان کی موت 1879 میں نیپال میں ہوٸی ۔


حکومت کی جانب سے بیگم حضرت محل پر ڈاک ٹکٹ جاری کیا گیا ۔ کولکاتہ میں مقیم ان کاخاندان فخر محسوس کرتا ہے ۔ کولکاتہ کے واجد علی شاہ امام باڑے میں بیگم حضرت محل کی یادگاری تصاویر لوگوں کو متوجہ تو کرتی ہیں ، تاہم ان کے خاندان والوں نے بیگم حضرت محل کے نام سے یادگار بنانے پر مطالبہ کیا ہے ۔ ان کے پوتے کامران علی مرزا نے حکومت سے بیگم حضرت محل کے نام سے تعلیمی ادارہ بنانے کا مطالبہ کیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 15, 2020 05:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading