ہوم » نیوز » عالمی منظر

India-China Faceoff: ہندوستانی فوج نے بتائی لداخ کی صورتحال، کہا- پی ایل اے نے اکسانے کے لئے چلائی گولیاں

ہندوستانی فوج کے مطابق پیپلز لبریشن آرمی (PLA) نے 7 ستمبر کو سب سے پہلے ایک ہندوستانی فارورڈ پوسٹ کے کے قریب پہنچے تھے، جسے ہندوستانی فوجیوں (Indian Army) نے روک دیا تھا۔ اس کے بعد چین (China) کے فوجیوں نے ہی کئی راونڈ فائر کئے۔

  • Share this:
India-China Faceoff: ہندوستانی فوج نے بتائی لداخ کی صورتحال، کہا- پی ایل اے نے اکسانے کے لئے چلائی گولیاں
ہندوستانی فوج نے بتائی لداخ کی صورتحال، کہا- پی ایل اے نے اکسانے کے لئے چلائی گولیاں

نئی دہلی: مشرقی لداخ (East Ladakh) کی سرحد پر ہوئی فائرنگ کے حادثہ پر چین (China) کے دعووں کو ہندوستانی فوج نے مسترد کردیا ہے۔ ہندوستانی فوج (Indian Army) کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ہندوستانی فوجیوں نے نہ تو کوئی ایل اے سی کی خلاف ورزی کی ہے نہ ہی کوئی فائرنگ کی۔ ہندوستانی فوج کے مطابق پیپلز لبریشن آرمی (PLA) نے 7 ستمبر کو سب سے پہلے ایک ہندوستانی فارورڈ پوسٹ کے کے قریب پہنچے تھے، جسے ہندوستانی فوجیوں نے روک دیا تھا۔ اس کے بعد چین کے فوجیوں نے ہندوستانی فوجیوں کو اکسانے کے لئے کئی راونڈ گولیاں چلائی گئیں۔


ہندوستانی فوج نے ایل اے سی پر فائرنگ کئے جانے کے چین کے الزامات کو پوری طرح سے مسترد کردیا ہے۔ ہندوستانی فوج نے چین کی پول کھولتے ہوئے کہا ہے کہ ’چین اپنے بیانات سے اپنے ملک اور پوری دنیا کو گمراہ کر رہا ہے۔ فوج نے کسی بھی حالت میں اصل کنٹرول لائن (ایل اے سی) کو پار نہیں کیا ہے، نہ ہی فائرنگ کی ہے، نہ ہی کوئی جارحانہ قدم اٹھایا ہے۔




واضح رہے کہ ہندوستان - چین کے درمیان لداخ واقع اصل کنٹرول لائن (ایل اے سی) پر ہندوستانی فوج کی سبقت کو لے کر چین بوکھلایا ہوا ہے۔ چین کی پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) 30-29 اگست کی شب لیک اسپانگور کے پاس دراندازی کرنے کی کوشش کی تھی، جسے ہندوستانی فوج نے ناکام کردیا تھا۔ اس کے بعد ہندوستانی فوج نے علاقے کی اونچی چوٹی پر بھی دوبارہ قبضہ جما لیا، جس کی خبر بیجنگ پہنچی تو ہنگامہ کھڑا ہوگیا۔ اب اس معاملے میں چینی صدر شی جنپنگ چینی فوج اور افسران سے کافی ناراض ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 08, 2020 12:18 PM IST