پاکستان کی طرف سے دراندازی کرنے والے دہشت گردوں سے نمٹنے کےلئے ہندوستان نے ایل اوسی کے پاس اتارے فوجی

فوج کے ذریعہ دہشت گردوں کو تلاش کرنے کے لئے ایک بڑا ملٹری آپریشن گزشتہ 10 دنوں سے چلایا جارہا ہے۔ 

Oct 06, 2019 09:08 PM IST | Updated on: Oct 06, 2019 09:08 PM IST
پاکستان کی طرف سے دراندازی کرنے والے دہشت گردوں سے نمٹنے کےلئے ہندوستان نے ایل اوسی کے پاس اتارے فوجی

دہشت گردوں سے نمٹنےکے لئے فوج نے پیرا کمانڈوزکوایئر ڈراپ کیا ہے۔ علامتی تصویر

جموں: دراندازی کرنے کی کوششوں میں مصروف دہشت گردوں کی تلاش کے لئےایک بڑے ملٹری آپریشن کوگزشتہ 10 دنوں سےکشمیرکے مانگبل کے جنگلات میں میں انجام دیا جارہا ہے۔ یہ وسطی کشمیرکا علاقہ ہے۔ یہاں پردودہشت گردوں کے مارے جانے کے بعد پولیس کو شک تھا کہ یا تویہاں پربڑی تعداد میں دہشت گرد موجود ہیں یا دراندازی کی کوشش کررہے ہیں۔

اس پہاڑی علاقے میں ہندوستانی پیرا ٹوپرس کوہیلی کاپٹرکےذریعہ اتارا گیا ہے کیونکہ اس علاقےتک کوئی بھی روڈ نہیں جاتی ہے۔ ایسا اس لئے بھی کیا گیا کیونکہ پاس ہی میں موجود ایک آرمی یونٹ نے یہاں پرایک دہشت گردانہ گروہ کےدیکھے جانےکی بات کہی تھی۔

Loading...

گریزعلاقے سے گھسے ہیں دہشت گرد

ایک بڑے دہشت گردانہ گروہ کے یہاں پرہونےکےخطرے کودیکھتے ہوئے ہندوستان کے پیرا ٹوپرس اس علاقےمیں ہرطرف پھیل گئے ہیں۔ فوج کوخوف ہےکہ یہ دہشت گرد باندی پورہ ضلع کےدردرازکےعلاقےگریزسے جموں وکشمیرمیں داخل ہوگئے ہیں اوروہ اب جنوبی کشمیرکے ترال ضلع کی طرف جانا چاہتے ہیں۔ دراصل ہندوستان میں گھسنےکےلئے یہ دہشت گردوں کا پرانا راستہ رہا ہے۔

گاندربل کےایس ایس پی خلیل پوسوال نےنیوز18 کوبتایا کہ 27 ستمبرکورات 9 بجےانہیں دیکھےجانے کے بعد دو دہشت گردوں کومارا گیا تھا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ یہ اس علاقے میں 2014 کے بعد پہلا انکاؤنٹرتھا۔ انہوں نےکہا کہ ایک دہشت گرد کواسی رات مارا گیا اور دوسرے کوتیسرے دن مارگرایا گیا۔ مرکزی حکومت نے جب سے جموں وکشمیرکے خصوصی ریاست کےدرجے کوختم کیا ہے، تب سے وہاں پرلانچ کیا گیا، یہ سب سے بڑا آپریشن ہے۔ واضح رہےکہ مرکزی حکومت نے جموں وکشمیرکا خصوصی ریاست کا درجہ ختم کرکےاسے مرکزکے زیرانتظام دو حصوں میں تقسیم کردیا گیا ہے۔

Loading...