ہوم » نیوز » عالمی منظر

چین سے سرحدی تنازعہ کے درمیان نئے Spice-2000 بم خریدنےکی تیاری میں ہندوستان

چین (China) سے چل رہے سرحدی تنازعہ (Border Dispute) کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) نے ہندوستانی فوجیوں کو ایمر جنسی پاور کے تحت 500 کروڑ روپئے دیئے ہیں۔ اس رقم سے فوجیوں کو ہتھیار خرید کی چھوٹ ہے۔

  • Share this:
چین سے سرحدی تنازعہ کے درمیان نئے Spice-2000 بم خریدنےکی تیاری میں ہندوستان
چین سے سرحدی تنازعہ کے درمیان نئے Spice-2000 بم خریدنےکی تیاری میں ہندوستان

نئی دہلی: زمینی اہداف (Ground Targets) پر اپنی فائر پاور مضبوط بنانے کے لئے ہندوستان اور زیادہ تعداد میں اسپائس 2000 (Spice-2000) بم خریدنے کا منصوبہ بنا رہا ہے۔ اسپائس 2000 بم کا استعمال ہندوستانی فضائیہ (Indian Airforce) نے پاکستان میں پلوامہ حملے (Pulwama Attack) کے بعد بالا کوٹ (Balakot Air Strike) ایئر اسٹرائیک کے بعد کیا تھا۔ ہندوستان ہوا سے زمین میں نشانہ لگانے میں ماہر ان بموں کا ایڈوانسڈ ورزن خریدنے کی تیاری کر رہا ہے۔ مانا جا رہا ہے کہ چین کے ساتھ بڑھتے سرحدی تنازعہ کے درمیان ہندوستان زمینی ٹارگیٹس کو نشانہ بنانے کی اپنی طاقت مزید مضبوط کرنا چاہتا ہے۔


ایمرجنسی پاور کے تحت وزیر اعظم مودی نے دیا فنڈ


چین سے چل رہے سرحدی تنازعہ کے درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے ہندوستانی فوجیوں کو ایمر جنسی پاور کے تحت 500 کروڑ روپئے دیئے ہیں۔ اس رقم سے فوجیوں کو ہتھیار خرید کی چھوٹ ہے۔ ایک سرکاری ذرائع نے نیوز ایجنسی این این آئی کو بتایا ہے کہ انڈین ایئرفورس کے پاس پہلے 2000 بم موجود ہیں۔ اب فوج اسی تہہ کے اور ایڈوانسڈ بم پانے کی تیاری کر رہی ہے۔


70 کلو میٹر دور تک ہدف کو کرسکتا ہے تباہ

اسپائس 2000 بم تقریباً 70 کلو میٹر کی دوری تک ہدف کو نشانہ بنا سکتا ہے۔ نئے ورزن کے بعد یہ بم مضبوط سے مضبوط بنکروں کو بھی اڑانے کا اہل ہوگا۔ واضح رہے کہ ہندوستانی فوجیوں کو 2016 میں ہوئے اری حملے کے بعد بھی اسی طرح ایمرجنسی پاور کے تحت فنڈ دیا گیا تھا۔

بالا کوٹ ایئر اسٹرائیک میں کیا گیا تھا استعمال

جیش محمد کے دہشت گردوں نے 14 فروری کو پلوامہ میں سی آرپی ایف کے قافلے پر حملہ کیا تھا۔ اس حملے میں 40 جوان شہید ہوگئے تھے۔ اس حادثہ کے بعد سے ملک میں پاکستان کو لے کر کافی غصہ تھا۔ حملے کے 13 دن بعد ہندوستانی فضائیہ نے پاکستان کے بالا کوٹ میں گھس کر ایئر اسٹرائیک کی تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ اس حملے میں کافی تعداد میں دہشت گرد مارے گئے تھے۔
First published: Jun 30, 2020 10:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading