ہوم » نیوز » وطن نامہ

ہندوستانی رافیل ، پاکستان کا F-16 یا چین کا J-20 ، جانئے تینوں میں زیادہ طاقتور کون ؟

رافیل کی طرح ہی پاکستان کے ایف 16 اور ین کے چینگدو جے 20 ائیر کرافٹ ائیر ٹو ائیر کامبیٹ ، گراونڈ سپورٹ اور اینٹی شپ اسٹرائیک جیسی چیزوں سے لیس ہیں ۔ ان میں کئی طرح کے ہتھیار بھی لگے ہیں ۔ آئیے جانتے ہیں کہ رافیل کے مقابلہ میں پاکستان کا ایف 16 اور چین کا چینگدو جے 20 کہاں ٹھہرتے ہیں ؟

  • Share this:
ہندوستانی رافیل ، پاکستان کا F-16 یا چین کا J-20 ، جانئے تینوں میں زیادہ طاقتور کون ؟
ہندوستانی رافیل ، پاکستان کا F-16 یا چین کا J-20 ، جانئے تینوں میں زیادہ طاقتور کون ؟

فرانس سے پہلی کھیپ کے طور پر ہندوستان آرہے پانچ رافیل جنگی طیارے (Rafale Fighter Jet) یو اے ای پہنچ گئی ہیں ۔ متحدہ عرب امارات کے الدفرہ ائیر پورٹ پر ان طیاروں کی لینڈنگ پائلٹس کو آرام دینے کیلئے کی گئی ہے ۔ 29 جولائی کو یہ طیارے وہاں سے اڑان بھریں گے اور پھر دو پہر تک انبالہ پہنچیں گے ۔ رافیل کے جڑنے کے بعد ہندوستانی فضائیہ کی طاقت کئی گنا بڑھ جائے گی ۔ یہ جنگی جہاز جموں و کشمیر اور لداخ کے دور دراز پہاڑی علاقوں تک آل ویدر ایکسس دے گا ۔ رافیل میں ایسی کئی خصوصیات ہیں ، جس کی وجہ سے اس کو آل راونڈر مانا جارہا ہے ۔


رافیل کی طرح ہی پاکستان کے ایف 16 اور ین کے چینگدو جے 20 ائیر کرافٹ ائیر ٹو ائیر کامبیٹ ، گراونڈ سپورٹ اور اینٹی شپ اسٹرائیک جیسی چیزوں سے لیس ہیں ۔ ان میں کئی طرح کے ہتھیار بھی لگے ہیں ۔ لیکن بی وی آر ( بیانڈ ویجوئل رینج ) ہوا سے ہوا میں مار کرنے والی میزائلوں میں رافیل کے Meteor کے پاس کچھ زیادہ صلاحیتیں نظر آرہی ہیں ۔


رافیل اور چین کا جے 20  ویسے تو دونوں ہی سنگل سیٹر اور ٹوئن انجن ائیرکرافٹس ہیں ، لیکن رافیل ملٹی ٹاسکر ہے ۔ چین جے 20 کا استعمال دشمن پر نظر رکھنے کیلئے کرتا ہے ، لیکن رافیل کو نگرانی کے علاوہ سورٹیز اور اٹیک میں بھی آسانی سے استعمال میں لایا جاسکتا ہے ۔ فرانس نے رافیل کو ہندوستانی فضائیہ کی ضرورتوں کے حساب سے موڈیفائی کیا ہے ۔ ایسے میں اس کی طاقت چین کے جے 20 سے بڑھ گئی ہے ۔


رافیل ہیمر میزائل کٹ سے لیس ہے ۔ یہ ہوا سے زمین پر مار کرنے والی میزائل ہے ۔ فرانس نے اپنے ائیر فورس اور نیوی کیلئے تیار کی تھی ۔ اب اس کا استعمال رافیل میں ہوگا ۔ رافیل دشمن کے نشانوں کو صحیح ٹارگیٹ کرکے اور دور تک نشانہ لگانے میں ماہر ہے ۔ رافیل کی رینج 3700 کلو میٹر ہے ، جو جے 20 سے کہیں زیادہ ہے ۔ 60 ۔ 70 کلو میٹر کے دائرے میں آنے والے ٹھکانوں کو یہ تباہ کرسکتا ہے ۔ زیادہ سے زیادہ پانچ سو کلو تک کے بم اس سے گرائے جاسکتے ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ چین سے کشیدگی کے درمیان ہندوستان نے ہیمر میزائل کو چننے کا فیصلہ کیا ہے ۔ پاکستان کے ایف 16 میں بھی ہیمر نہیں لگی ہے ۔ ایف 16 ہوا سے زمین پر مار کرنے والی میزائل AGM 65 Maverick سے لیس ہے ۔

جے 20 ، رافیل یا ایف 16 میں کون زیادہ وزن اٹھا سکتا ہے؟

چین کا جے 20 طیارہ رافیل کے مقابلہ میں بھاری ہے ۔ ایسے میں یہ زیادہ وزن نہیں اٹھا سکتا ہے ۔ رافیل جہاں زیادہ سے زیادہ 24500 کلو وزن ( طیارہ سمیت ) اٹھا سکتا ہے وہیں جے 20 ، 34 ہزار کلو سے لے کر 37 ہزار کلو وزن لے جاسکتا ہے ۔ دونوں ہی جنگی طیارے اپنے ساتھ چار چار میزائلیں لے جاسکتے ہیں ۔ دونوں کی ٹاپ اسپیڈ بھی تقریبا ایک جیسی ہے ۔

پہاڑی علاقوں میں جے 20 اور رافیل میں کون ثابت ہوگا دمدار؟

چین کے جے ۲۰20 کی لمبائی 20.3 میٹر سے 20.5 میٹر کے درمیان ہے ۔ اس کی اونچائی 4.45  میٹر اور ونگسپین 12.88-13.50 میٹر کے درمیان ہے ۔ جبکہ رافیل کی لمبارئی 15.30  میٹر اور اونچائی 5.30  میٹر ہے ۔ اس کے ونگسپین صرف 10.90  میٹر ہے ۔ اس سے صاف ہے کہ رافیل پہاڑی علاقوں میں اڑنے کیلئے مثالی طیارہ ہے ۔ طیارہ چھوٹا ہونے سے اس کی اسپیڈ بھی تیز ہوگی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 28, 2020 02:19 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading